ہوم » نیوز » تعلیم و روزگار

انٹرنیٹ کےدورمیں کشمیرمیں ریڈیوکےذریعہ تعلیم،5سے8ویں جماعت کےطلبہ کےلئےکلاسیس کاآغاز

اسکول بند رہنے اور فزیکل کلاسیس کے نہ ہونے کی وجہ سے بدھ (26 ؍ مئی 2021) سے ہی کمشمیر میں پانچویں تا آٹھویں جماعت کے طلبہ کے لئے ریڈیو (radio) کے ذریعے اسباق کا آغاز کیا جارہا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ریڈیو پچھلے زمانے کی بات ہے۔ آج کا دور تو انٹرنٹ کے ذریعہ کلاسیس کا ہے۔ ایسے میں انٹرنٹ کے ذریعہ بھی کلاس ہونا چاہیے۔

  • Share this:
انٹرنیٹ کےدورمیں کشمیرمیں ریڈیوکےذریعہ تعلیم،5سے8ویں جماعت کےطلبہ کےلئےکلاسیس کاآغاز
اسکول بند رہنے اور فزیکل کلاسیس کے نہ ہونے کی وجہ سے بدھ (26 ؍ مئی 2021) سے ہی کمشمیر میں پانچویں تا آٹھویں جماعت کے طلبہ کے لئے ریڈیو (radio) کے ذریعے اسباق کا آغاز کیا جارہا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ریڈیو پچھلے زمانے کی بات ہے۔ آج کا دور تو انٹرنٹ کے ذریعہ کلاسیس کا ہے۔ ایسے میں انٹرنٹ کے ذریعہ بھی کلاس ہونا چاہیے۔

کورونا بحران کے دوران تعلیمی نظام بہت زیادہ متاثر ہواہے۔ آئن لائن کلاسیس کے ذریعہ طلبا کو تربیت دی جارہی ہے تو وہیں جموں وکمشیر میں طلبا کے کلاسیس کے لیے ریڈیوکا استعمال کیاجارہاہے۔کشمیر کے ایک سرکاری ترجمان نے بتایا کہ عالمی وبا کورونا وائرس (COVID-19) کی وجہ سے کشمیر میں محکمہ اسکول ایجوکیشن (Department of School Education) کی جانب سے اسکول بند ہے۔ جس کی وجہ سے اسکولوں میں فزیکل کلاس نہیں ہو پارہی ہے۔اسکول بند رہنے اور فزیکل کلاسیس کے نہ ہونے کی وجہ سے بدھ (26 ؍ مئی 2021) سے ہی کمشمیر میں پانچویں تا آٹھویں جماعت کے طلبہ کے لئے ریڈیو (radio) کے ذریعے اسباق کا آغازہوگیاہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ریڈیو تو پچھلے زمانے کی بات ہے۔ آج کا دور تو انٹرنٹ کے ذریعہ کلاسیس کا ہے۔ ایسے میں انٹرنیٹ کے ذریعہ بھی کلاس منعقد کی جانی چاہیے۔


ڈائریکٹوریٹ آف اسکول ایجوکیشن، کشمیر (Directorate of School Education, Kashmir) کے جاری کردہ بیان کے مطابق ریڈیو کلاسز 26 مئی سے شروع ہورہی ہے۔ترجمان کا کہنا ہے کہ آٹھویں جماعت کا شیڈول صبح 10 بجے سے صبح 10.30 بجے ، ساتویں جماعت کے لئے صبح 11.30 بجے سے رات 12 بجے تک ، چھٹویں جماعت کے لئے دوپہر12 بجے سے 12.30 بجے اور پانچویں جماعت کے لئے  03.30 سے ​​ 4 بجے شام تک مقررکیاگیاہے


مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ریڈیو کا استعمال تو آج سے دس سال پہلے ہی ختم ہوگیا تھا۔ آج کا دور انٹرنٹ کا دور ہے۔ پورے ہندوستان میں انٹرنٹ کی سہولیات دستیاب ہے اور ہر جگہ انٹرنیٹ کی مدد سے ’’آن لائن‘‘ کلاسیس ہورہی ہیں تو کشمیر میں انٹرنٹ سے آن لائن کلاسیس کا انتظام کیوں نہیں کیا گیا؟ یہاں ریڈیو چند ہی لوگ استعمال کرتے ہیں۔ جب کہ اکثر لوگوں کے پاس ریڈیو دستیاب ہی نہیں ہے۔


ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن ، کشمیر نے کہا ہے کہ طلبہ کے بہتر مفادات میں پروگرام کے کامیاب نفاذ کے لئے تمام اسٹیک ہولڈرز سے تعاون کی کوشش کی گئی ہے۔ترجمان نے کہا کہ یکم جون سے ڈی ڈی کشمیر (DD Kashir) اور ڈی ڈی گیان (DD Gyan) کے توسط سے نویں تا بارہویں جماعت کے لئے ٹیلی کلاسز شروع کرنے کی تجویز ہے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: May 26, 2021 06:38 PM IST