ہوم » نیوز » وطن نامہ

World Sleep Day: آج منایا جارہا ہے کہ ورلڈ سلیپ ڈے ، جانئے روزانہ کتنی دیر سوتے ہیں ہندوستان کے لوگ

World Sleep Day: نیند ہماری زندگی کا اہم حصہ ہے ۔ اس کے بغیر زندگی سونی ہوجاتی ہے ، لیکن اس مرتبہ ہندوستانیوں کیلئے ورلڈ سلیپ ڈے سے پہلے ہی ان کی سلیپ ہیلتھ میں بہتری کو لے کر ایک خوشخبری ہے ۔

  • Share this:
World Sleep Day: آج منایا جارہا ہے کہ ورلڈ سلیپ ڈے ، جانئے روزانہ کتنی دیر سوتے ہیں ہندوستان کے لوگ
World Sleep Day: آج منایا جارہا ہے کہ ورلڈ سلیپ ڈے ، جانئے روزانہ کتنی دیر سوتے ہیں ہندوستان کے لوگ . Image/shutterstock

انسان کو زندہ رہنے کیلئے جتنا سانس لینا ضروری ہے اتنا ہی ضروری صحیح نیند بھی ہے ۔ اکثر ہم نیند کی صحت کو لے کر کم ہی فکرمند ہوتے ہیں ۔ لیکن جسم کی صحت کے ساتھ ساتھ نیند کی صحت بھی صحیح رہنی ضروری ہے ۔ اس کی اہمیت کو اجاگر کرنے کیلئے ہی ورلڈ سلیپ ڈے بھی منایا جاتا ہے ۔ حالانکہ سلیپ ہیلتھ کو لے کر اس سال ہندوستانیوں کیلئے خوشخبری ہے کہ ان کی اس ہیلتھ میں بہتری کے اشارے ملے ہیں ۔


معلوم پڑتا ہے کہ ہندوستان کے لوگوں نے بستر پر جانے کے مشورہ کو سنجیدگی سے لینا شروع کردیا ہے کیونکہ انہوں نے 2019 کے آخر سے لے کر اب تک کورونا وبا کی وجہ سے گھر سے ہی کام کرنے کا ایک سال پور کرلیا ہے اور اس نے ہماری زندگی اور کام کرنے کے طریقوں کو بدل دیا ہے ۔ دی گریٹ انڈین سلیپ اسکورکارڈ 2021 نیند کی صحت میں بہتری کے اشارے دیتا ہے ۔ حالانکہ جی آئی ایس ایس یہ بھی بتاتا ہے کہ 92 فیصد ہندوستانی ابھی بھی سونے سے پہلے اپنے فون کو دیکھتے ہیں ۔


ورلڈ سلیپ ڈے ( 19 مارچ ) سے پہلے سلیپ اینڈ ہوم سالیوشنس کمپنی ویک فٹ کے ذریعہ شائع سالانہ گریٹ انڈین سلیپ اسکورکارڈ 2021 کے مطابق رات 10 بجے سے پہلے بستر پر جانے والے لوگوں کی تعداد میں 100 فیصد تک کا اضافہ دیکھا گیا ہے جبکہ سونے کی یہ تبدیلی 18 سال کے بچوں کے درمیان سب سے زیادہ ہے ، جن میں سے 50 فیصدی اب رات 10 بجے سے پہلے سونے جارہے ہیں جبکہ پہلے 2020 میں یہ صرف 22 فیصدی ہی تھے ۔ یہی نہیں آدھی رات کے بعد کی نیند لینے والوں کی تعداد میں بھی گراوٹ آئی ہے ۔ یہ  تعداد 28 فیصد سے اب 26 فیصد پر آگئی ہے ۔


سلیپ ہیلتھ کو لے کر اس سال ہندوستانیوں کیلئے خوشخبری ہے کہ ان کی اس ہیلتھ میں بہتری کے اشارے ملے ہیں ۔
سلیپ ہیلتھ کو لے کر اس سال ہندوستانیوں کیلئے خوشخبری ہے کہ ان کی اس ہیلتھ میں بہتری کے اشارے ملے ہیں ۔


دلچسپ بات یہ بھی ہے کہ اس سال 24 فیصد لوگوں نے کہا کہ وہ نیند نہ آنے سے ڈرتے ہیں جبکہ گزشتہ سال ان کی تعداد  19 فیصد ہی تھی ۔ یہ نتائج 16000 جواب دہندگان کے ڈیٹا پر مبنی ہیں ، جو ہندوستان کے 18 شہروں میں رہ رہے ہیں اور جن کی عمر 18 سال سے 45 سال تک ہے ۔ ان کا مارچ 2020 سے لے کر فروری 2021 تک سروے کیا گیا ۔

جب سے کورونا وائرس وبا ہے تب سے ہندوستانی لوگ اپنی نیند پر زیادہ دھیان دے رہے ہیں کیونکہ سروے میں 42 فیصد لوگوں نے کہا کہ گدے کی بہتر کوالیٹی سے ان کی نیند کی کوالیٹی میں اضافہ ہوگا جبکہ گزشتہ سال ایسا ماننے والے لوگوں کی تعداد صرف 22 فیصد تھی ۔ حالانکہ ابھی بھی اسکرین کی لت ایک بھیانک پریشانی ہے ، جس میں 92 فیصد لوگ کہتے ہیں کہ وہ بستر پر جانے سے پہلے اپنے ڈیوائس کو دیکھتے ہیں ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 19, 2021 09:37 AM IST