ہریانہ: صحافت کےطلباء کےساتھ دھوکہ، گرو جامبیشور ٹیکنیکل اینڈ سائنس یونیورسٹی کی منمانی سے طلباء پریشان

متاثرہ طلباء کا کہنا ہےکہ وہ لوگ دہلی اوراین سی آرمیں رہتے ہیں اورداخلہ کے وقت امتحان مرکزگروگرام کےلئےفارم بھرا تھا۔ آج امتحان کی تاریخ تین دسمبرکے12 روزپہلے امتحانی مراکزتبدیل کر کے گروگرام سے 200 کلو میٹردورحصارمیں کردیا ہے۔

Nov 22, 2019 09:18 PM IST | Updated on: Nov 22, 2019 10:36 PM IST
ہریانہ: صحافت کےطلباء کےساتھ دھوکہ، گرو جامبیشور ٹیکنیکل اینڈ سائنس یونیورسٹی کی منمانی سے طلباء پریشان

ہریانہ کےگروجامیشورٹیکنیکل اینڈ سائنس یونیورسٹی، حصارکی منمانی سےطلباء سے پریشان۔

ہریانہ کےگروجامبیشوریونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹکنا لوجی حصارکی منمانی سے فاصلاتی تعلیم (ڈسٹینس ایجوکیشن) کےذریعہ تعلیم حاصل کرنے والے طلباء کا مستقبل بیچ میں ہی لٹکتا ہوا نظرآرہا ہے۔ یہ صحافت میں ماس کام سےایم اے اورایم سی سیشن 21-2019 کے طلباء ہیں۔ متاثرہ طلباء نےبتایا کہ وہ لوگ دہلی اوراین سی آرمیں رہتے ہیں اورداخلہ کے وقت امتحان مرکزگروگرام کےلئےفارم بھرا تھا۔ آج امتحان کی تاریخ تین دسمبرکے 12 روزپہلے امتحانی مراکزتبدیل کرکےگروگرام سے200 کلومیٹردورحصارمیں کردیا ہے۔

دہلی اوراس کےآس پاس سینکڑوں طلباء نےاس معاملے کی اطلاع وائس چانسلر، چانسلر (گورنر)، وزیراعلیٰ منوہرلال کھٹر، مرکزی وزیرتعلیم رمیش پوکھریال نشنک کوای میل، ٹوئٹ اورفون کےذریعہ امتحانی مراکزتبدیل کرکے گروگرام میں امتحانات کرانےکی گہار لگائی ہے۔

Loading...

طلباء کے مطابق بیشترطلباء کہیں نہ کہیں میڈیا ہاؤس میں کام کررہے ہیں یا پھرکئی خاتون طالبات کے بچےدہلی اورآس پاس میں پڑھائی کررہے ہیں۔ ایسے حالات  میں دہلی سے 200 کلومیٹردورحصارامتحانی مراکز میں جاکرامتحان دینا ممکن نہیں ہوگا۔ طلباء کے مطابق یونیورسٹی کےاس منمانی کرنے کی اطلاع تھوڑی بھی ہوتی تویہاں پرداخلہ  نہیں لیتے۔ اب جبکہ فیس دے چکے ہیں توایسے میں دھوکےکا شکارہوئےہیں۔ آگے پھرکوئی طالب علم اس کا شکارنہ ہو، اس کولےکرسبھی سطح پرلوگوں کوبیدارکریں گے۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ  صحافت کےطلباء ہیں اور اپنےاستحصال کے خلاف آوازاٹھائیں گے۔

طلباء نے بتایا کہ وائس چانسلرسےلےکرکوئی بھی افسراس فیصلے کولے کربات کرنے کو تیارنہیں ہے۔ اطلاعات کے مطابق یونیورسٹی کے فاصلاتی تعلیم کےڈائریکٹرہربھجن بنسل نےکہا ہے کہ انہوں نے ابھی کل ہی یہاں پرعہدہ سنبھالا ہے۔ ہربھجن بنسل نےکہا کہ وائس چانسلرابھی ملک سے باہرہیں، اس لئےامتحانی مراکزپرکوئی اطلاع نہیں دے سکیں گے۔ متاثرہ طلباء نےبتایا کہ وہ لوگ اس معاملے کولےکردہلی میں مرکزی وزیرتعلیم سے جلد ملیں گےاوراپنی جائزمطالبات کو رکھیں گے۔

Loading...