اب مودی 2.0 کی باری: نیوز18-آئی پی ایس او ایس ایگزٹ پول سروے کے مطابق، بی جے پی کر رہی ہے اکثریت کے ساتھ واپسی

سی این این نیوز 18۔ آئی پی ایس او ایس ایگزٹ پول کے مطابق، بی جے پی کی زیر قیادت این ڈی اے 2019 کے لوک سبھا الیکشن میں 336 سیٹیں جیت سکتی ہے۔

May 19, 2019 09:22 PM IST | Updated on: May 19, 2019 09:22 PM IST
اب مودی 2.0 کی باری: نیوز18-آئی پی ایس او ایس ایگزٹ پول سروے کے مطابق، بی جے پی کر رہی ہے اکثریت کے ساتھ واپسی

نریندر مودی کی فائل فوٹو

اپنے ناقدین کو خاموش کرتے ہوئے اور اپوزیشن پارٹیوں کو سکتے میں ڈالتے ہوئے نریندر مودی اکثریت کے ساتھ اقتدار میں واپسی کر رہے ہیں۔ سی این این نیوز 18۔ آئی پی ایس او ایس ایگزٹ پول کے مطابق، بی جے پی کی زیر قیادت این ڈی اے 2019 کے لوک سبھا الیکشن میں 336 سیٹیں جیت سکتی ہے۔

مودی کی اس دھماکیدار جیت میں اکیلے بی جے پی کا نصف نشستیں جیتنا ہندوستانی سیاست کے نئے دور کے آغاز کا اشارہ ہے۔ ایسا دور جس میں راشٹر واد نے ذات پات اور علاقائیت کے سارے حساب کتاب کو منہدم کر دیا۔  اس کے علاوہ یہ پہلا موقع ہوگا جب کانگریس سے الگ کسی اور پارٹی کی قیادت میں بنا سیاسی اتحاد مکمل اکثریت کے ساتھ اقتدار میں واپسی کر رہا ہے۔

Loading...

وزیر اعظم مودی کی قیادت میں این ڈی اے راجستھان، مدھیہ پردیش ، گجرات اور جھارکھنڈ میں کلین سویپ کرتا دکھائی دے رہا ہے۔

اس کے ساتھ ہی مہاراشٹر اور کرناٹک میں این ڈی اے کے نمبر اور بہتر ہوتے نظر آ رہے ہیں۔ اترپردیش میں جہاں ایس پی۔ بی ایس پی کے ساتھ زوردار مقابلہ دکھائی دے رہا تھا، وہاں بی جے پی کو کچھ ہی سیٹوں کا نقصان ہوتا نظر آ رہا ہے۔ لیکن سروے کے مطابق، اسے اڈیشہ اور مغربی بنگال میں اچھا خاصا فائدہ ہو رہا ہے۔

این ڈی اے نے حکومت کی کامیابیاں گناتے ہوئے اس الیکشن میں اترنے کا فیصلہ کیا تھا۔ خود مودی بھی اپنے منصوبوں کو برقرار رکھنے اور انہیں آگے بڑھانے کے نام پر ووٹ مانگ رہے تھے۔ بی جے پی اس الیکشن میں سب سے بڑی پارٹی بن کر ابھر رہی ہے۔ سروے کے مطابق، بی جے پی کو 276 سیٹیں مل رہی ہیں۔ یہ 2014 سے صرف چھ سیٹیں کم ہے۔ اس کے بعد کانگریس ہے۔ کانگریس کے ہی آس پاس بنگال  میں ٹی ایم سی اور تمل ناڈو میں ڈی ایم کے نظر آ رہی ہیں۔

ایگزٹ پول ایسی سیاسی تصویر سامنے لا رہا ہے جو ماہرین کو سکتے میں ڈالنے والی ہے۔ بی جے پی، این ڈی اے محض ہندی زبان بولی جانے والی ریاستوں میں اپنا اب تک سب سے بہتر مظاہرہ ہی نہیں کر رہی بلکہ وہ نئی ریاستوں میں بھی اپنے پیر پسار رہی ہے۔ جیسے شمال مشرقی ریاستوں میں شاندار مظاہرہ کے ساتھ بنگال اور اڈیشہ میں بھی۔

اگر ایگزٹ پول کی پیشین گوئی صحیح ثابت ہوتی ہے تو یہ نتائج وزیر اعظم کے ہاتھوں کو اور مضبوط کریں گے۔ بغیر باہری حمایت کے وہ اپنی حکومت بنا سکتے ہیں۔  تیکھے پن کے ساتھ لڑے گئے اس الیکشن میں ہر کوئی انتظار کر رہا تھا کہ حکومت کس طرح کی بنے گی۔ یہاں تک کہ این ڈی اے سے باہر کی پارٹیاں بھی مان رہی تھیں کہ اگرچہ مودی آگے ہوں، لیکن انہیں اکثریت کے لئے کچھ نئی پارٹیوں کی ضرورت ہو گی۔ اس کی دلیل یہ دی جا رہی تھی کہ این ڈی اے نے 2014 میں اپنی چوٹی چھو لی ہے۔  ایسے میں وہ وہاں سے نیچے ہی ہی آئے گی۔ لیکن ایسا لگتا ہے کہ مودی نے ان سب نظریات کو مسترد کر دیا ہے۔

Loading...