خاندان اور پیسوں سے نہیں بی جے پی کارکنوں کے پسینے سے بنی ہے پارٹی: مودی

وزیر اعظم نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’’مجھے بتایا گیا کہ پہلی بار ملک کا کوئی وزیر اعظم سندرگڑھ آیا ہے، مگر آج بھی کوئی وزیر اعظم یہاں نہیں آیا ہے، آج تو اڑیسہ کا پردھان سیوک اپنے مالکوں کا آشیرواد لینے آیا ہے

Apr 06, 2019 05:00 PM IST | Updated on: Apr 06, 2019 05:01 PM IST
خاندان اور پیسوں سے نہیں بی جے پی کارکنوں کے پسینے سے بنی ہے پارٹی: مودی

وزیر اعظم نریندر مودی

وزیر اعظم نریندر مودی نے کنبہ پروری پر حملہ کرتے ہوئے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) خاندانوں اور پیسوں سے نہیں کارکنوں کے پسینے سے بنی پارٹی ہے۔ بی جے پی کے 39 ویں یوم تاسیس کے موقع پر ہفتہ کو یہاں لوک سبھا اور اسمبلی انتخابات کے لیے بی جے پی امیدواروں کے حق میں پرچار کرنے آئے مودی نے کنبہ پروری اور فنڈز سے بنی پارٹیوں پر حملہ کرتے ہوئے کہا ’’ہم خاندان پر مبنی نہیں ہیں اور نہ ہی ہم لوگ پیسوں پر بنے ہیں۔ بہت سی پارٹیاں پیسوں سے بنی ہیں، لیکن بی جے پی کارکنوں کے پسینے سے بنی پارٹی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی ادھار کے آدرشوں سے بنی پارٹی نہیں ہے۔ بی جےپی نے ملک کے لوگوں کے تصورات سے جنم لیا ہے۔

وزیر اعظم نے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’’مجھے بتایا گیا کہ پہلی بار ملک کا کوئی وزیر اعظم سندرگڑھ آیا ہے، مگر آج بھی کوئی وزیر اعظم یہاں نہیں آیا ہے، آج تو اڑیسہ کا پردھان سیوک اپنے مالکوں کا آشیرواد لینے آیا ہے‘‘۔ انہوں نے کیرالہ اور مغربی بنگال کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہاں بی جے پی کے کارکنوں کو ہلاک کیا گیا ہے۔ اس کے باوجود پارٹی کے کارکنوں کے حوصلے گرا نہیں پائے ہیں۔ مودی نے کہا فی الحال بی جے پی دنیا کی سب سے بڑی جمہوری پارٹی ہے۔ ملک کو کانگریس اور اس سے نکلی ہوئی پارٹیوں کے سامنے ایک مضبوط متبادل دینے کا کام بی جے پی نے کیا ہے۔ بی جے پی نوجوان ہندوستان کی پارٹی ہے۔ انہوں نے کہا اس وقت بی جے پی کا پرچم ایسے مقامات پر بھی لہرا رہا ہے جس کے بارے میں پہلے کبھی کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا تھا۔

مودی نے کہا ’’آج بی جے پی کی حکومتیں ملک کے چاروں کونوں میں ہیں۔ لوگ بی جے پی سے محبت کرتے ہیں اور وہ ان کے دلوں میں بسی ہوئی ہے۔ بی جے پی سب سے بڑی جمہوری پارٹی ہے اور سماج کے تمام طبقے کے لوگ پارٹی سے جڑ رہے ہیں‘‘۔ انہوں نے بی جے پی کے بانیوں میں ایک سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کی شاعری کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ’’اٹل جی نے کہا تھا اندھیراچھٹے گا، سورج نکلے گا ، کمل كھلےگا۔ آج جب میں اڑیسہ آیا ہوں، تو میں دیکھ رہا ہوں کہ چاہے مرکز ہو یا ریاست یہاں کمل کاکھلنا طے ہے‘‘۔

Loading...

Loading...