உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اترپردیش: وزیراعلیٰ Yogi Adityanath نے وزرا میں قلمدان تقسیم کئے، خود کے پاس رکھے 34 محکمے، دیکھیں پوری فہرست

    اترپردیش: وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے وزرا میں قلمدان تقسیم کئے

    اترپردیش: وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے وزرا میں قلمدان تقسیم کئے

    Yogi Cabinet 2.0: اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ (Yogi Adityanath) کی قیادت والی نئی حکومت میں وزرا کے درمیان قلمدان تقسیم کردیا گیا ہے۔ آدتیہ ناتھ یوگی نے اپنے پاس 34 اہم محکمے رکھے ہیں۔ جبکہ نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کو چھ محکموں کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ وہیں  دوسرے نائب وزیر اعلیٰ برجیش پاٹھک کے پاس تین اہم شعبے ہیں۔

    • Share this:
      لکھنو: اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی قیادت والی نئی حکومت میں وزرا کے درمیان قلمدان تقسیم کردیا گیا ہے۔ آدتیہ ناتھ یوگی نے اپنے پاس 34 اہم محکمے رکھے ہیں، جن میں داخلہ، ہاؤسنگ اور اربن پلاننگ، بھرتی، عملہ اور ریونیو شامل ہیں۔ اس کے علاوہ نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کو چھ محکموں کی ذمہ داری دی گئی ہے، جن میں دیہی ترقی اور مجموعی دیہی ترقی، دیہی انجینئرنگ، فوڈ پروسیسنگ، انٹرٹینمنٹ ٹیکس اور پبلک انٹرپرائزز اور نیشنل انٹیگریشن ڈپارٹمنٹ شامل ہیں۔

      وہیں ریاست کے دوسرے نائب وزیر اعلیٰ برجیش پاٹھک کو میڈیکل ایجوکیشن، میڈیکل اینڈ ہیلتھ، فیملی ویلفیئر اور مدر اینڈ چائلڈ ویلفیئر ڈیارٹمنٹ کی ذمہ داری دی گئی ہے۔ برجیش پاٹھک کے پاس تین اہم شعبے ہیں۔ اگر ہم کابینی وزیر کی بات کریں تو بی جے پی کے ریاستی صدر سوتنتر دیو سنگھ کے پاس سب سے زیادہ سات محکموں کا چارج ہے۔





      یوگی آدتیہ ناتھ نے 34 محکمے اپنے پاس رکھے

      وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کے پاس تقرری، پرسنل، ہوم، ویجیلنس، ہاؤسنگ اور اربن پلاننگ، ریوینیو، فوڈ سیکورٹی اینڈ ڈرگس، ایڈمنسٹریشن، جیولوجی اور کان کنی، ارتھ اینڈ نمبر اسٹیٹ ٹیکس اور رجسٹریشن، انکرپشن، انفارمیشن، الیکشن، انسٹیٹیوشنل فنانس، پلاننگ، ریاستی پراپرٹی، یوپی کی تنظیم نو کو آرڈینیشن، اسٹیبلشمنٹ، زبان، پبلک سروس مینجمنٹ، رینٹ کنٹرول، پروٹوکول، سینک ویلفیئر اور پراونشل گارڈ دل، شہری ہوا بازی اور انصاف اور قانون ساز محکمہ رکھے ہیں۔ ان کی تعداد 34 ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      اسدالدین اویسی کا ساتھ چھوڑ کر گڈو جمالی نے کی BSP میں گھر واپسی

      یوگی آدتیہ ناتھ کی کابینہ میں اس بار 52 وزیر بنے ہیں۔ اس میں برہمن (8)، او بی سی (20)، شیڈول کاسٹ (8)، جاٹ (5) اور (6) ٹھاکر وزیر شامل ہیں۔ اس کے علاوہ بھومیہار، ویشیہ، سکھ، کایستھ، پنجابی اور مسلم طبقے کو بھی نمائندگی دی گئی ہے۔ ویسے اس بار یوگی کے ساتھ دو نائب وزرائے اعلیٰ، 16 کابینی وزیر، 14 ریاستی وزیر (آزادانہ چارج) اور 20 ریاستی وزرا نے حلف اٹھایا ہے۔ حالانکہ اس کابینہ کی ایک خاص بات یہ رہی کہ ریاستی وزیرحج محسن رضا کی چھٹی کر دی گئی ہے اور ان کی جگہ پر دانش آزاد انصاری کو موقع دیا گیا ہے۔



       کابینی وزیر: سوریہ پرتاپ شاہی، سریش کمار کھنہ، سوتنتر دیو سنگھ، بیبی رانی موریہ، لکشمی نارائن چودھری، جے ویر سنگھ، دھرمپال سنگھ، نند گوپال گپتا نندی، بھوپیندر سنگھ چودھری، انل راج بھر، جتن پرساد، راکیش سچان، اروند کمار شرما، یوگیندر اپادھیائے، آشیش پٹیل اور سنجے نشاد۔


       ریاستی وزیر: (آزادانہ چارج): کپل دیو اگروال، رویندر جیسوال، نتن اگروال، سندیپ سنگھ، گلاب دیوی، گریش چندر یادو، دھرم ویر پرجاپتی، اسیم ارون، جے پی ایس راٹھور، دیا شنکر سنگھ، نریندر کشیپ، دنیش پرتاپ سنگھ، ارون کمار سکسینہ اور دیاشنکر مشرا دیالو۔


      ریاستی وزیر: دنیش کھٹک، سنجیو گوڑ، مینکیشور سنگھ، بلدیو سنگھ اولکھ، اجیت پال، جسونت سینی، رامکیش نشاد، منوہر لال منو کوری، سنجے گنگوار، برجیش سنگھ، کے پی ملک، سریش راہی، سومیندر تومر، انوپ پردھان، پرتیبھا شکلا، راکیش راٹھور، رجنی تیواری، ستیش شرما، وجے لکشمی گوتم اور دانش آزاد انصاری۔

      Published by:Nisar Ahmad
      First published: