உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اکھلیش یادو نے دیا کپل سبل کو انعام، راجیہ سبھا الیکشن میں بنایا امیدوار

    سپریم کورٹ کے سینئر وکیل اور کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل کو سماجوادی پارٹی نے راجیہ سبھا الیکشن کے لئے امیدوار بنایا ہے۔ سماجوادی پارٹی سربراہ اکھلیش یادو نے بدھ کو کپل سبل کے ساتھ اسمبلی احاطے میں پہنچے۔ اس دوران ان کے ساتھ پارٹی کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا رکن رام گوپال یادو بھی موجود تھے۔

    سپریم کورٹ کے سینئر وکیل اور کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل کو سماجوادی پارٹی نے راجیہ سبھا الیکشن کے لئے امیدوار بنایا ہے۔ سماجوادی پارٹی سربراہ اکھلیش یادو نے بدھ کو کپل سبل کے ساتھ اسمبلی احاطے میں پہنچے۔ اس دوران ان کے ساتھ پارٹی کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا رکن رام گوپال یادو بھی موجود تھے۔

    سپریم کورٹ کے سینئر وکیل اور کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل کو سماجوادی پارٹی نے راجیہ سبھا الیکشن کے لئے امیدوار بنایا ہے۔ سماجوادی پارٹی سربراہ اکھلیش یادو نے بدھ کو کپل سبل کے ساتھ اسمبلی احاطے میں پہنچے۔ اس دوران ان کے ساتھ پارٹی کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا رکن رام گوپال یادو بھی موجود تھے۔

    • Share this:
      لکھنو: سپریم کورٹ کے سینئر وکیل اور کانگریس کے سینئر لیڈر کپل سبل کو سماجوادی پارٹی نے راجیہ سبھا الیکشن کے لئے امیدوار بنایا ہے۔ سماجوادی پارٹی سربراہ اکھلیش یادو نے بدھ کو کپل سبل کے ساتھ اسمبلی احاطے میں پہنچے۔ اس دوران ان کے ساتھ پارٹی کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا رکن رام گوپال یادو بھی موجود تھے۔ وہاں کپل سبل نے ان دونوں کی موجودگی میں راجیہ سبھا الیکشن کے لئے نامزدگی داخل کی۔

      کپل سبل کو سماجوادی پارٹی کی طرف سے اسے بڑا انعام مانا جا رہا ہے۔ وہ سپریم کورٹ میں اعظم خان کے وکیل ہیں۔ اعظم خان نے اس سے پہلے منگل کو کہا تھا کہ اگر پارٹی انہیں راجیہ سبھا بھیجتی ہے تو سب سے زیادہ انہیں خوشی ہوگی۔

      واضح رہے کہ آئندہ راجیہ سبھا الیکشن میں سماجوادی پارٹی کے کوٹے میں تین سیٹیں آرہی ہیں۔ حالانکہ اس بارے میں جب پوچھا گیا تو اکھلیش یادو نے کہا کہ تھوڑی دیر میں معلوم چل جائے گا، کس کو کس کے ساتھ راجیہ سبھا بھیجا جا رہا ہے۔

      دراصل خبر ہے کہ کپل سبل کے ساتھ پارٹی ڈمپل یادو اور جاوید علی خان کو راجیہ سبھا امیدوار بنائے گی۔ جاوید علی خان کو پروفیسر رام گوپال یادو کا خاص مانا جاتا ہے۔ راجیہ سبھا میں ان کی یہ دوسری مدت ہوگی۔ اس سے پہلے بھی وہ راجیہ سبھا کے رکن رہے ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: