உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اسدالدین اویسی کا ساتھ چھوڑ کر گڈو جمالی نے کی BSP میں گھر واپسی، اعظم گڑھ سے لڑیں گے لوک سبھا کا ضمنی الیکشن

    اسدالدین اویسی کا ساتھ چھوڑ کر گڈو جمالی نے کی BSP میں گھر واپسی

    اسدالدین اویسی کا ساتھ چھوڑ کر گڈو جمالی نے کی BSP میں گھر واپسی

    UP Politics: آپ کو بتادیں کہ شاہ عالم عرف گڈو جمالی اعظم گڑھ سے تعلق رکھتے ہیں اور اعظم گڑھ سماجوادی پارٹی کا گڑھ کہا جاتا ہے۔ پہلی بار سال 2012 میں وہ مبارکپور سیٹ سے رکن اسمبلی بنے اور پھر 2017 میں بھی الیکشن جیتے۔ حالانکہ دونوں ہی الیکشن میں بی ایس پی کی حالت خراب نظر آئی، لیکن گڈو جمالی دونوں ہی بار اپنی سیٹ بچانے میں کامیاب رہے۔

    • Share this:
      لکھنو: اترپردیش (Uttar Pradesh) میں آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (AIMIM) کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔ اعظم گڑھ ضلع کے قدآور لیڈر اور یوپی کے اسدالدین اویسی کی لاج رکھنے والے شاہ عالم عرف گڈو جمالی (Guddu Jamali) نے بہوجن سماج پارٹی (BSP) میں گھر واپسی کرلی ہے۔ مایاوتی نے انہیں اعظم گڑھ لوک سبھا سے ضمنی انتخابات کے لئے امیدوار بنایا ہے۔ یہ سیٹ اپوزیشن لیڈر اور سابق وزیر اعلیٰ اکھلیش یادو کے استعفیٰ کے بعد خالی ہوئی ہے۔ دراصل، اسدالدین اویسی کی پارٹی کے ٹکٹ پر تقریباً 100 سے زیادہ لیڈر یوپی میں الیکشن لڑے تھے، ان سب کی ضمانت ضبط ہوگئی تھی۔ ایک گڈو جمالی ہی تھے، جنہوں نے اعظم گڑھ کی مبارکپور لوک سبھا سیٹ سے اپنی ضمانت بچالی۔

      واضح رہے کہ اعظم گڑھ ضلع کی سبھی دس سیٹوں پر سماجوادی پارٹی کا پرچم لہرا رہا ہے۔ رکن پارلیمنٹ اکھلیش یادو نے یہ سیٹ چھوڑ دی ہے۔ وہ کرہل سیٹ سے رکن اسمبلی بنے رہیں گے اور یوپی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کا کردار نبھائیں گے۔ اب اکھلیش یادو کے اعظم گڑھ سیٹ چھوڑنے کے بعد مقامی سیاست میں سرگرمی تیز ہوگئی ہے۔ گڈو جمالی واپس بی ایس پی کا دامن تھام کر لوک سبھا ضمنی انتخابات میں اتر گئے ہیں۔ ضلع کی سیاست میں ان کی پکڑ مضبوط مانی جا رہی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      Bihar: نتیش کابینہ سے مکیش سہنی برخاست، وزیر اعلیٰ کی سفارش پر گورنر نے ہٹایا

      جانئے کون ہیں گڈو جمالی؟

      آپ کو بتادیں کہ گڈو جمالی اعظم گڑھ سے تعلق رکھتے ہیں اور اعظم گڑھ سماجوادی پارٹی کا گڑھ کہا جاتا ہے۔ پہلی بار سال 2012 میں وہ مبارکپور سیٹ سے رکن اسمبلی بنے اور پھر 2017 میں بھی الیکشن جیتے۔ حالانکہ دونوں ہی الیکشن میں بی ایس پی کی حالت خراب نظر آئی، لیکن گڈو جمالی دونوں ہی بار اپنی سیٹ بچانے میں کامیاب ہوئے۔ ایسے میں صرف مبارکپور ہی نہیں، بلکہ پورے اعظم گڑھ میں ہی گڈو جمالی نے پکڑ بنالی۔ بہر حال گڈو جمالی بی ایس پی کے لئے کتنے کارگر ثابت ہوں گے یہ آنے والا وقت بتائے گا۔

      وہیں لکھنو میں مایاوتی نے بی ایس پی لیڈرون کے ساتھ میٹنگ کی، جس میں پورے ریاست کے عہدیداران شامل ہوئے۔ اس میٹنگ میں شکست کا جائزہ لیا گیا۔ خاص طور پر اس وجہ کو تلاش کیا گیا کہ دلت ووٹ بینک کا بڑا حصہ پارٹی سے کیوں الگ ہوگیا؟
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: