اناؤ ریپ معاملہ:کلدیپ سینگر پر ایف آئی آر درج کبھی بھی ہو سکتی ہے گرفتاری

اناؤ ریپ معاملے میں ملزم بی جے پی ایم ایل اے کلدیپ سینگر کے خلاف جمعرات کو ایف آئی آر درج ہوئی ہے۔یوپی پولیس ایس او راجیش سنگھ نے اس کی تصدیق کی ہے۔

Apr 12, 2018 07:50 AM IST | Updated on: Apr 12, 2018 11:16 AM IST
اناؤ ریپ معاملہ:کلدیپ سینگر پر ایف آئی آر درج کبھی بھی ہو سکتی ہے گرفتاری

ریپ کے ملزم بی جے پی ایم ایل اے کلدیپ سنگھ سینگر (فائل فوٹو)۔

اناؤ ریپ معاملے میں ملزم بی جے پی ایم ایل اے کلدیپ سینگر کے خلاف جمعرات کو ایف آئی آر درج ہوئی ہے۔یوپی پولیس ایس او راجیش سنگھ نے اس کی تصدیق کی ہے۔یوگی حکومت نے بدھ کو اس معاملے کی جانچ سی بی آئی کو سونپنے اور اور بانگر مئو ایم ایل اے کلدیپ سنگھ سینگر اور ان کے حامیوں پر ایف آئی آر درج کرنے کے احکام دئے تھے۔جس کے بعد بی جے پی ایم ایل اے کے خلاف کیس درج ہوا۔ایسا مانا جا رہا ہیکہ ایف آئی آر درج ہونے کے بعد بی جے پی ایم ایل اے کلدیپ سنگھ سینگر کو آج کبھی بھی گرفتارکیا جا سکتا ہے۔

اس کے علاوہ اناؤ جیل اسپتال کے بھی تین ڈاکٹروں پر بھی کارروائی کی بجلی گری ہے۔ان پر متاثرہ کے والد کے علاج میں لا پرواہی برتنے کا الزام لگا ہے۔اس کے علاوہ سی او سفی پور کنور سنگھ بھی لا پرواہی کے الزام میں معطل کئے گئے ہیں۔

Loading...

رپورٹ کے مطابق اناؤ ضلع اسپتال کے 2 ڈاکٹر معطل کئے  گئے ہیں اور ان کے خلاف تادیبی کارروائی کے احکام دئے گئے ہیں۔

حکومت نے متاثرہ کے اہل خانہ کو سکیورٹی مہیہ کرانے کے بھی احکام دئے ہیں۔در اصل حکومت نے ایس آئی جی اور اناؤ ضلع انتظامیہ سے معاملے میں رپورٹ طلب کی تھی۔ایک ساتھ تین رپورٹ ملنے کے بعد ہوم ڈپارٹمنٹ نے بڑا فیصلہ لیا۔

اس سے پہلے بی جے پی ایم ایل اے بدھ کی رات 11:30 بجے حامیوں کے ساتھ ایس ایس پی کی غیر موجودگی میں ایس ایس پی کیمپ آفس پہنچے۔وہاں میڈیا پر بھڑک اٹھے اور قریب 20منٹ ہنگامے کے بعد وہ لوٹ گئے۔میڈیا سے مار پیٹ کر رہے ان کے حامیوں کو حصرت گنج پولیس نے لاٹھی پھٹکار کر کے بھگایا۔۔سینگر نے سرینڈر کرنے کی بات پر کہا "آپ (میڈیا)جہاں کہو وہیں چلیں۔آپ کے چینل پر بیٹھ چل کر بیٹھیں۔میں چینل کے ساتھیوں کے کہنے سے آیا ہوں۔چینل کے ساتھی جہاں کہیں گے وہاں چلوں گا۔نمستے"۔

حالانکہ ابھی تک بی جے پی ایم  ایل اے کے خلاف کوئی کارروائی درج نہیں کی گئی ہے۔لیکن معاملے کی ایس آئی ٹی رپورٹ میں ایم ایل اے کو ملزم بتایا گیا ہے۔

معاملے میں ایس آئی ٹی کی جانچ میں بی جے پی ایم ایل اے کلدیپ سنگھ سینگر کو مارپیٹ کی سازش رچنے کا ملزم بتایا گیا ہے۔وہیں ایم ایل اے کے بھائی اتل سنگھ کو متاثرہ کے والد کے ساتھ مار پیٹ میں قصوروار پایا گیا ہے۔

اے ڈی جی جون راجیو کرشنا کی قیادت میں تشکیل اس ٹیم کی ابتدائی رپورٹمیں ایم ایل اے کے اہل خانہ کے درمیان پرانی رنجش کی بھی بات سامنے آئی ہے۔ایس آئی ٹی نے پورے معاملے کی تفصیلی تحقیقات کا سجھاؤ دیا ہے اور اناو پولیس کو بھی معاملے میں قصوروار مانا ہے۔رپورٹ میں وہاں کی ایس پی پشپانجلی کو ہٹانے کی سفارش کی بھی بات کی جا رہی ہے اور پولیس افسران پر قدم ۔قدم پر لا پرواہی برتنے کا ذکر کیا گیا ہے۔

واضح ہو کہ معاملے کو سنجیدگی سے دیکھتے ہوئے سی ایم یوگی آدتیہ ناتھ نے ڈی جی پی سے 24 گھنٹے کے اندر رپورٹ طلب کی ہے۔اس کے مد نظر ڈی جی پی نے ایس آئی ٹی تشکیل کرکے اناو بھیجا تھا۔یہ ٹیم بدھ کو اناؤ کے ماکھی تھانہ علاقہ میں واقع متاثرہ کے گھر پہنچی۔وہاں دو گھنٹے سے بھی زیادہ وقت تک متاثرہ اور اس کے اہل خانہ سے بات کی۔بی جے پی ایم ایل اے کے پانچ فریقں سے بھی پوچھ تاچھ کی گئی ۔ایس آئی ٹی نے اناو کے ڈی ایم اور ایس پی سے الگ سے میٹنگ کر کے جانکاری بھی لی ہے۔

Loading...