ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

UP Panchayat Election Aarakshan list: ہائی کورٹ سے یوگی حکومت کو جھٹکا، سال 2015 کی بنیاد پرنافذ ہوگا ریزرویشن

اترپردیش (Uttar Pradesh) میں ہونے والے سہ رخی پنچایت پنچایت الیکشن (UP Panchayat Elections) میں ریزرویشن (Reservation List) کو لے کر چل رہی کشمکش کی صورتحال پر الہ آباد ہائی کورٹ (Allahabad High Court) کی لکھنو بینچ نے رخ واضح کر دیا ہے۔

  • Share this:
UP Panchayat Election Aarakshan list: ہائی کورٹ سے یوگی حکومت کو جھٹکا، سال 2015 کی بنیاد پرنافذ ہوگا ریزرویشن
ہائی کورٹ سے یوگی حکومت کو جھٹکا، سال 2015 کو بنیاد پرنافذ ہوگا ریزرویشن

لکھنو: اترپردیش (Uttar Pradesh) میں ہونے والے سہ رخی پنچایت انتخابات (UP Panchayat Elections) میں ریزرویشن (Reservation List) کو لےکر چل رہی کشمکش کی صورتحال پر الہ آباد ہائی کورٹ (Allahabad High Court) کی لکھنو بینچ نے رخ واضح کر دیا ہے۔ ہائی کورٹ کے فیصلے میں یوگی حکومت کو جھٹکا لگا ہے۔ عدالت نے سال 2015 کی بنیاد پر ہی ریزرویشن کی روٹیشن پالیسی کو نافذ کرنے کا حکم دیا ہے۔ اب ہائی کورٹ کے فیصلے کے بعد پنچایت انتخابات میں تھوڑی تاخیر ضرور ہوگی۔ ہائی کورٹ نے 25 مئی تک نئی نظم کے تحت پنچایت انتخابات کروانے کا بھی حکم دیا ہے۔ اب اس فیصلے کے بعد کئی گرام پنچایتوں کے حالات بھی بدل جائیں گے۔


واضح رہے کہ حکومت کے ایڈوکیٹ جنرل نے عدالت میں اعتراف کیا کہ ریزرویشن میں غلطی ہوئی۔ حکومت نے تسلیم کیا کہ 1995 کو ریزرویشن روٹیشن کو بنیاد بنانے سے غلطی ہوئی، جس کے بعد نئے ریزرویشن روٹیشن کے لئے حکومت نے وقت مانگا، جس پر ہائی کورٹ نے 15 مئی تک پنچایت انتخابات مکمل کرنے کا حکم دیا۔ اب انتخابی عمل مکمل کرنے کے لئے عدالت نے 10 دن مزید بڑھا دیئے ہیں۔


واضح رہے کہ ہائی کورٹ نے اجے کمار کی طرف سے داخل عرضی پر فیصلہ سناتے ہوئے کہا کہ سال 2015 کو ریزرویشن کو بنیاد تسلیم کرکے کام پورا کیا جائے۔ عدالت نے ریاستی حکومت اور ریاستی الیکشن کمیشن کو یہ حکم دیا۔ اس سے پہلے ریاستی حکومت نے عدالت میں خود کہا کہ وہ سال 2015 کو بنیاد تسلیم  کرکے سہ رخی انتخابات میں ریزرویشن نافذ کرنے کے لئے خود تیار ہے۔ یہ حقائق سامنے آنے کے بعد عدالت نے پنچایت انتخابات کو 25 مئی تک پورا کرنے کے احکامات دیئے ہیں۔ اس سے قبل ہائی کورٹ کی ایک ڈویژن بینچ نے سہ رخی پنچایت انتخابات کو 15 مئی تک پورا کرنے کے احکامات دیئے تھے۔

Published by: Nisar Ahmad
First published: Mar 15, 2021 02:14 PM IST