ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش سیاسی بحران : اسپیکر نے کانگریس کے 6 باغی ممبران اسمبلی کے استعفے کئے منظور

کانگریس کے کل 22 ممبران اسمبلی نے استعفی دے دیا ہے ۔ ان میں سے چھ ممبران اسمبلی کے استعفے منظور ہوگئے ہیں ۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 14, 2020 10:42 PM IST
  • Share this:
مدھیہ پردیش سیاسی بحران : اسپیکر نے کانگریس کے 6 باغی ممبران اسمبلی کے استعفے کئے منظور
مدھیہ پردیش سیاسی بحران : اسپیکر نے کانگریس کے 6 باغی ممبران اسمبلی کے استعفے کئے منظور

مدھیہ پردیش میں سیاسی ہلچل کے درمیان کانگریس کے چھ ممبران اسمبلی تلسی سیوالٹ ، امرتی دیوی ، گووند سنگھ راجپوت ، پربھورام چودھری ، پردھیومن سنگھ تومر اور مہندر سنگھ سیسودیا کے استعفوں کو آج شام منظور کرلیا گیا۔ اسمبلی کے اسپیکر این پی پرجاپتی نے دیر شام میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان ارکان اسمبلی سے استعفی دینے کے بعد انہوں نے قانون کے مطابق ان کے سامنے پیش ہونے کے لئے کہا تھا ، لیکن وہ کل بھی نہیں آئے اور آج بھی نہیں پہنچے۔ اسی کے ساتھ ان کے بیانات میڈیا میں دیکھے گئے ، جو مناسب زمرے میں نہیں آتے ہیں۔ لہذا ان اراکین اسمبلی کے استعفوں کو 10 مارچ سے ہی قبول کرلیا گیا ہے۔


اسپیکر مسٹر پرجاپتی نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ ان چھ ممبروں سے استعفیٰ کے بارے میں 10 مارچ کو اطلاع موصول ہوئی ۔ یہ معلومات متعلقہ ممبروں نے ذاتی طور پر نہیں دی تھی ، لہذا اس کی تصدیق کے لئے ، تمام چھ ممبران اسمبلی ضابطہ 276 کے تحت پہلی مرتبہ ساڑھے تین بجے سے چھ بجے تک اسمبلی کے طریقہ کار اور ضابطہ عمل کے تحت دفتر میں حاضر ہونے کو کیا گیا تھا۔


جب یہ ممبران نہیں پہنچے تو آج 14 مارچ کو دوپہر بارہ بجے سے شام 3.45 تک ایک اور موقع دیا گیا ، لیکن یہ ممبران دوبارہ پیش نہیں ہوئے ۔ ان چھ ممبروں کو بھی گورنر نے وزیر کے عہدے سے برخاست کردیا ہے ۔ ممبران کی جانب سے الیکٹرانک میڈیا میں دی گئی خبروں پر بھی سوالیہ نشان نظر آرہا ہے ۔ اس طرح ممبروں کا طرز عمل حیران کن معلوم ہوتا ہے اور وہ قانون ساز اسمبلی کا رکن بننے کے اہل نہیں ہیں ۔ لہذا ان تمام چھ ممبروں کا استعفی ضابطہ 276 کے تحت قبول کیا گیا تھا۔


در حقیقت کانگریس کے کل 22 ممبران اسمبلی نے استعفی دے دیا ہے ۔ ان میں سے چھ ممبران اسمبلی کے استعفے منظور ہوگئے ہیں ۔ یہ سب کمل ناتھ حکومت میں وزیر تھے اور وزیر اعلی کی سفارش پر کل ان تمام وزرا کو برخاست کردیا گیا تھا ۔ باقی سولہ ارکان اسمبلی کے استعفی پر فیصلہ ابھی باقی ہے۔
First published: Mar 14, 2020 10:42 PM IST