ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش : کروناوائرس سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدبیر کے ساتھ سی اے اے مخالف احتجاج جاری

بھوپال اقبال میدان میں 77 دنوں سے ستیہ گرہ جاری ہے۔ اب جبکہ چاروں جانب سے کرونا وائرس سے بچاؤ کی باتیں کی جانے لگیں ہیں ، تو ستیہ گرہ کرنے والوں نے بھی اپنے احتجاج کا طریقہ بدل دیا ہے۔

  • Share this:
مدھیہ پردیش : کروناوائرس  سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدبیر  کے ساتھ سی اے اے مخالف احتجاج جاری
مدھیہ پردیش : کروناوائرس سے بچاؤ کیلئے احتیاطی تدبیر کے ساتھ سی اے اے مخالف احتجاج جاری

بھوپال کے اقبال میدان میں سی اے اے، این آرسی اور این پی آرکے خلاف یکم جنوری سے ستیہ گرہ اور احتجاج جاری ہے ۔ احتجاج اس وقت شروع کیا گیا تھا جب ملک میں سردیوں کا موسم تھا اورسخت سردی کے موسم میں بھی حکومت کے خلاف احتجاج جاری رکھا گیا تھا ۔ حالانکہ اس بیچ ستیہ گرہ کو ختم کرنے کے لئے حکومت اور پولیس کے ذریعہ بہت سے اقدامات بھی کئے گئے ، لیکن ستیہ گرہ کرنے والے اپنے موقف پرڈؒٹے رہے۔ اب جبکہ ملک و بیرون ملک میں کورونا وائرس  سے بچاؤ کو لیکر حفاظتی انتظامات کے ساتھ احتیاطی تدابیر اختیار کی جا رہی ہیں ، ایسے میں سی اے اے، این آرسی اور این پی آر کو لیکر احتجاج جاری رکھنا کسی چیلنج سے کم نہیں ہے۔ خود مدھیہ پردیش حکومت نے اسکول، کالج ، سنیما ہال اور آنگن باڑی کے ساتھ ہاسٹل کو بند کرنے کا بھی احکام جاری کردیا ہے۔

بھوپال اقبال میدان میں 77 دنوں سے ستیہ گرہ جاری ہے۔ اب جبکہ چاروں جانب سے کرونا وائرس سے بچاؤ کی باتیں کی جانے لگیں ہیں ، تو ستیہ گرہ کرنے والوں نے بھی اپنے احتجاج کا طریقہ بدل دیا ہے۔ احتاج میں شامل ہونے والے لوگ ماسک لگا کر جہاں احتجاج کر رہے ہیں وہیں ستیہ گرہ میں بیٹھنے والوں کے ہاتھ سینی ٹائزرس سے دھلوائے جا رہے ہیں ۔ ستیہ گرہ میں پہلے دن سے شامل جاوید بیگ کہتے ہیں کہ کورونا وائرس سے بچاؤ کے لئے احتیاط ضروری ہے اور حکومت نے جو ہدایت جاری کی ہے ، اس کو سامنے رکھتے ہوئے ہی ہم لوگ احتجاج کر رہے ہیں اور یہ احتجاج تب تک جاری رہے گا جب تک حکومت اس سیاہ قانون کو واپس نہیں لیتی ہے۔

سماجی کارکن سکندر شاہ ویز کہتے ہیں کہ این پی آر کا قانون کورونا سے زیادہ خطرناک ہے۔ کورونا وائرس کی زد سے صرف متاثرہ انسان کو ہی نقصان ہوگا لیکن این پی آر کی نفاذ سے ہندوستان کی مشترکہ تہذیب اور ایک مخصوص طبقہ کا وجود ختم ہو جائے گا ۔ کورونا وائرس سے احتیاطی تدبیر کے ساتھ  اس سیاہ قانون کے خلاف ہمارا احتجاج جاری رہے گا ۔ امت شاہ نے راجیہ سبھا میں این پی آر کو لیکر جو کچھ کہا ہے ، ہمیں اس پر اعتبار نہیں ہے ۔ ہم چاہتے ہیں کہ اگر یہ کسی کے خلاف نہیں ہے تو اس کولے کر تحریری طور پر عوام کے سامنے پیش کیا جائے ۔

First published: Mar 17, 2020 11:15 PM IST