ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

این آر سی سے صرف مسلمانوں کو ہی نہیں بلکہ عام ہندؤوں کو بھی ہوگی پریشانی :وزیراعلیٰ ادھوٹھاکرے

علماء اکرام اور آئمہ مساجد نے وزیراعلیٰ مہاراشٹر ادھوٹھاکرے سے ملاقات کرتے ہوئے این آر سی پر تشویش کا اظہار کیا اور حکومتِ مہاراشٹر سے پنجاب اور کیرل کی طرز پر مہاراشٹر اسمبلی میں بھی این آر سی کے خلاف قرار دادمنظور کرنے کا پرزور مطالبہ کیا۔

  • Share this:
این آر سی  سے صرف مسلمانوں کو ہی نہیں بلکہ عام ہندؤوں کو بھی ہوگی پریشانی :وزیراعلیٰ ادھوٹھاکرے
علماء اکرام اور آئمہ مساجد نے وزیراعلیٰ مہاراشٹر ادھوٹھاکرے سے ملاقات کرتے ہوئے این آر سی پر تشویش کا اظہار کیا اور حکومتِ مہاراشٹر سے پنجاب اور کیرل کی طرز پر مہاراشٹر اسمبلی میں بھی این آر سی کے خلاف قرار دادمنظور کرنے کا پرزور مطالبہ کیا۔

سپریم کورٹ کے ذریعے شہریت ترمیمی قانون کے نفاذ پر روک نہ لگانے اور مرکزی حکومت کو جواب داخل کرنے کی چار ہفتوں مہلت فراہم کرنے کے بعد مسلم طبقے میں بے چینی دیکھی جارہی ہے۔ ممبئی میں ممبئی پولیس صدر دفتر میں200سے زائد علماء اکرام اور آئمہ مساجد نے وزیراعلیٰ مہاراشٹر ادھوٹھاکرے سے ملاقات کرتے ہوئے این آر سی پر تشویش کا اظہار کیا اور حکومتِ مہاراشٹر سے پنجاب اور کیرل کی طرز پر مہاراشٹر اسمبلی میں بھی این آر سی کے خلاف قرار دادمنظور کرنے کا پرزور مطالبہ کیا۔


 کسی بھی شہری کو این آر سی کے تحت ملک بدر نہیں کیا جائیگا۔ ادھوٹھاکرے۔(تصویر:محی الدین لطیف)۔
کسی بھی شہری کو این آر سی کے تحت ملک بدر نہیں کیا جائیگا۔ ادھوٹھاکرے۔(تصویر:محی الدین لطیف)۔


ادھو ٹھاکرنے علماء اکرام سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مسلمانوں کو این آر سی سے خوف ذدہ نہ ہونے پر زور دیتے ہوئے کہاکہ این آر سی سے مہاراشٹر کے کسی شہری کے حقوق کی پامالی نہیں ہوگی۔ کسی بھی شہری کو این آر سی کے تحت ملک بدر نہیں کیا جائیگا۔ ادھوٹھاکرے نے پنجاب اور کیرل کی طرز پر مہاراشٹر اسمبلی میں این آر سی اور شہریت ترمیمی قانون کے خلاف قرارداد منظور کرنے کے علماء اکرام کے مطالبے کو نامنظور کرتے ہوئے کہاکہ این آر سی صرف مسلمانوں کو ہی نہیں بلکہ عام ہندؤوں کو بھی پریشانی ہوگی۔ ادھو ٹھاکرے نے کہاکہ این آر سی ملک کے کسی باشندے کے حق نہیں ہے۔ البتہ ادھوٹھاکرے شہریت ترمیمی قانون اور این پی آر کی دبے سر میں حمایت کی۔


ادھو ٹھاکرے نے کہاکہ این آر سی ملک کے کسی باشندے کے حق نہیں ہے۔(تصویر:محی الدین لطیف)۔
ادھو ٹھاکرے نے کہاکہ این آر سی ملک کے کسی باشندے کے حق نہیں ہے۔(تصویر:محی الدین لطیف)۔


ادھوٹھاکرے نے ہند ؤوں اورمسلمانوں کے درمیان رشتوں کو مزید بہتر بنانے کی بھی بات کہی۔ ادھو نے کہا کہ ملک پر کوئی مصیبت آتی ہے تو اس کا اثرصرف ہندو یا مسلمان پر نہیں پڑتا سب پر پڑتا ہے۔علماء اکرام کے وفد نے ریاست میں امن و امان کی صورت حال کو برقرار رکھنے کیلئے ادھوٹھاکرے اور ممبئی پولیس کی کوشیشوں کو قابل تعریف قراردیتے ہوئے۔ این آر سی کے خلاف اسمبلی میں قراداد منظور نہ کرنے پر علماء اکرام نے ناراضگی کا اظہار کیا ۔ ممبئی پولیس کمشنر سنجئے بروے نے این آر سی اور شہریت ترمیمی قانون کے خلاف احتجاج کو محدود کرنے کی صلاح دی ۔ پولیس کمشنر نے کہا پولیس بندوبست کی وجہ سے پولیس افسران کو چھٹی نہیں مل پارہی ہے۔

 این آر سی کے خلاف اسمبلی میں قراداد منظور نہ کرنے پر علماء اکرام نے ناراضگی کا اظہار کیا ۔ (تصویر:محی الدین لطیف)۔
این آر سی کے خلاف اسمبلی میں قراداد منظور نہ کرنے پر علماء اکرام نے ناراضگی کا اظہار کیا ۔ (تصویر:محی الدین لطیف)۔


واضح رہے کہ ممبئی کے معروف عالم دین مولانا معین الدین اشرف عرف معین میاں اور رضا اکیڈمی کے سیکریٹری سعید نوری کی قیادت میں دو سے زائد علماء اکرام اور ائمہ ء مساجد نے پولیس کمشنر آفیس پر وزیر اعلیٰ ادھو ٹھاکرے سے ملاقات کی تھی ۔ مولانا معین الدین اشرف نے نیوز18 اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ این آر سی کی وجہ سے ممبئی اور مہاراشٹر کے مسلمان تشویش کا شکار ہیں اور ایک قسم کے خوف و ہراس میں بھی ہیں. وزیراعلیٰ ادھوٹھاکرے سے ملاقات کا مقصد مسلمانوں میں پیدا ہونے والی تشویس سے انہیں آگاہ کروانا تھا ۔ وزیر اعلیٰ نے مہاراشٹر میں این آر سی کو نافذ نہ کرنے کا یقین دلاکر ملاقات علماء کو اعتماد میں لینے کی اچھی کوشیش کی ہے۔ واضح رہے کہ معروف عالم دین معین الدین اشرف اور رضا اکیڈمی کے سیکریٹری سعید نوری کی قیادت میں علماء اکرام نے وزیراعلیٰ مہاراشٹر سے ملاقات کی تھی ۔ ملاقات کے بعد وزیراعلیٰ کو ایک مطالباتی میمورنڈم بھی دیا گیا۔
First published: Jan 22, 2020 07:34 PM IST