ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

بھیما کوریگاوں تشدد کی جانچ این آئی اے کے سپرد ، ادھو سرکار کا الزام ، ہم سے نہیں پوچھا گیا

بھیما کوریگاوں تشدد معاملہ کی جانچ این آئی کے سپرد کئے جانے کے بعد مہاراشٹر کی وکاس اگھاڑی حکومت اور مرکزی حکومت کے درمیان ٹکراو کے امکانات بڑھ گئے ہیں ۔

  • Share this:
بھیما کوریگاوں تشدد کی جانچ این آئی اے کے سپرد ، ادھو سرکار کا الزام ، ہم سے نہیں پوچھا گیا
بھیما کوریگاوں تشدد کی جانچ این آئی اے کے سپرد ، ادھو سرکار کا الزام ، ہم سے نہیں پوچھا گیا

سال 2018 میں بھیما کوریگاوں تشدد سے متعلق سبھی کیسوں کی جانچ اب این آئی اے کے سپرد کردی گئی ہے ۔ مہاراشٹر کی ادھو حکومت نے ایک دن پہلے ہی اس کیس میں ہو رہی چھان بین کو لے کر پولیس کے ساتھ ایک جائزہ میٹنگ کی تھی ۔


معاملہ کی جانچ این آئی کے سپرد کئے جانے کے بعد مہاراشٹر کی وکاس اگھاڑی حکومت اور مرکزی حکومت کے درمیان ٹکراو کے امکانات بڑھ گئے ہیں ۔ این آئی اے کو جانچ سپرد کئے جانے کے بعد ادھو حکومت کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے الزام لگایا کہ مرکز نے ایسا کرنے سے پہلے ان سے کسی بھی طرح کی بات چیت نہیں کی ہے ۔ اس سے پہلے جائزہ میٹنگ میں کچھ کیس واپس لئے جانے اور پورے معاملہ کی ایس آئی ٹی کے ذریعہ جانچ کرائے جانے پر تبادلہ خیال ہوا تھا ۔



ریاست کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے کہا کہ بھیما کوریگاوں تشدد معاملہ کی جانچ مہاراشٹر حکومت کی رضامندی کے بغیر این آئی اے کو سونپی گئی ہے ۔ بھیما کوریگاوں معاملہ کی جانچ این آئی کو سونپنا آئین کے خلاف ہے ، میں اس کی مذمت کرتا ہوں ۔


قابل ذکر ہے کہ نائب وزیر اعلی اجیت پوار اور ریاست کے وزیر داخلہ انل دیشمکھ نے بھیما کوریگاوں تشدد کیس کا جائزہ لینے کیلئے سینئر اہلکاروں سے ملاقات کی تھی ۔ ایک افسر کے مطابق ممبئی کے ریاستی سکریٹریٹ میں ہوئی جائزہ میٹنگ ایک گھنٹے سے بھی زیادہ دیر تک چلی تھی ۔
First published: Jan 24, 2020 11:23 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading