مہاراشٹر میں سیاسی ہلچل: صدر راج کی تجویز کو کابینہ کی ہری جھنڈی، شیوسینا پہنچی سپریم کورٹ

مہاراشٹر میں جاری سیاسی اٹھا پٹخ کے درمیان گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کی طرف سے صدر راج کی سفارش کے بعد مرکزی کابینہ نے بھی تجویز کو منظوری دے دی ہے۔

Nov 12, 2019 03:03 PM IST | Updated on: Nov 12, 2019 05:27 PM IST
مہاراشٹر میں سیاسی ہلچل: صدر راج کی تجویز کو کابینہ کی ہری جھنڈی، شیوسینا پہنچی سپریم کورٹ

ادھو ٹھاکرے: فائل فوٹو

مہاراشٹر میں جاری سیاسی اٹھا پٹخ کے درمیان گورنر بھگت سنگھ کوشیاری کی طرف سے صدر راج کی سفارش کے بعد مرکزی کابینہ نے بھی تجویز کو منظوری دے دی ہے۔ اب ریاست میں صدر راج محض ایک قدم دور رہ گیا ہے۔ صدر کی منظوری ملتے ہی ریاست میں صدر راج نافذ ہو جائے گا۔ ریاست میں صدر راج نافذ کرنے کی سفارش کے درمیان اب شیوسینا نے بڑا قدم اٹھایا ہے۔ شیوسینا نے گورنر کے فیصلہ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے۔ عرضی میں شیوسینا نے کہا ہے کہ اسے حمایتی مکتوب پیش کرنے کے لئے گورنر نے 72 گھنٹے کا وقت نہیں دیا۔ صرف 24 گھنٹے کا وقت دیا گیا۔

شیوسینا نے عدالت سے معاملے کی جلد سماعت کے لئے بھی درخواست کی ہے۔ درخواست میں مہاراشٹر حکومت کے علاوہ کانگریس اور نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔ شیوسینا نے مطالبہ کیا کہ کانگریس کی حمایت کا خط حاصل کرنے کے لئے انہیں مزید تین دن کی مہلت دی جائے۔

درخواست میں الزام لگایا گیا ہے کہ گورنر بھگت سنگھ کوشیاری بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ایما پر عمل پیرا ہیں۔ این سی پی نے الزام لگایا ہے کہ اسے حکومت بنانے کے لئے ضروری وقت نہیں دیا گیا ۔ جبکہ گورنر نے بی جے پی کو جہاں حمایت حاصل کرنے کے لئے 48 گھنٹے دیا، شیوسینا کو صرف 24 گھنٹے ملے۔

Loading...

دریں اثنا سپریم کورٹ رجسٹری نے چیف جسٹس سے پوچھا ہے کہ درخواست کی سماعت کے لئے کب فہرست بند کی جائے۔

کانگریس لیڈر سنجے جھا نے اس پر ٹویٹ کر کہا کہ ’ ہوشیاری نہیں! گورنر کے فیصلے کو عدالت میں چیلنج کیا جائے گا‘۔ وہیں، شیوسینا لیڈر پرینکا چترویدی نے صدر راج نافذ کئے جانے کی خبروں پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ’ جب این سی پی کو دیا گیا وقت ختم نہیں ہوا ہے تو ایسے میں عزت مآب گورنر صدر راج کی سفارش کیسے کر سکتے ہیں‘‘؟

اس سے پہلے پیر کے روز کانگریس کی جانب سے شیوسینا کو حمایت دینے کے معاملہ پر ٹال مٹول کے سبب شیو سینا لیڈر ادتیہ ٹھاکرے کانگریس اور این سی پی کےاراکین اسمبلی کی حمایت کا خط گورنر کو پیش کرنے میں ناکام رہے جس کی وجہ سےمہاراشٹر کے گورنر بھگت سنگھ کوشیاری نے شیوسینا کی جانب سے حکومت سازی کے لئے2؍ دنوں کی مہلت دینے سے انکار کر دیا تھا ۔ اس فیصلے کے بعد گورنر نے ریاست میں تیسری سب سے بڑی سیاسی جماعت راشٹروادی کانگریس پارٹی کے اراکین اسمبلی کو گورنر ہاؤس میں مدعو کر لیا۔ کانگریس نے پہلے کہا تھا کہ وہ شیو سینا کی باہر سے حمایت کرے گی لیکن بعد میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ کانگریس کے مرکزی نمائندے کھڑگے آج این سی پی کے سربراہ شرد پوار کے ساتھ ملاقات کرنے کے بعد کو ئی فیصلہ کریں گے ۔

یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ

Loading...