உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Maharashtra Political Crisis: 'کوئی بھی بالا صاحب ٹھاکرے اور پارٹی کے نام کا استعمال نہیں کرسکتا'، شیوسینا میں تین بڑی قراردادیں پاس

    Maharashtra Political Crisis: 'کوئی بھی بالا صاحب ٹھاکرے اور پارٹی کے نام کا استعمال نہیں کرسکتا'، شیوسینا میں تین بڑی قراردادیں پاس ۔ فائل فوٹو ۔

    Maharashtra Political Crisis: 'کوئی بھی بالا صاحب ٹھاکرے اور پارٹی کے نام کا استعمال نہیں کرسکتا'، شیوسینا میں تین بڑی قراردادیں پاس ۔ فائل فوٹو ۔

    Maharashtra Political Crisis : مہاراشٹر میں جاری سیاسی بحران کے درمیان ہفتہ کو یہاں شیوسینا ہیڈکوارٹر میں نیشنل ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ ہوئی، جس میں تین اہم قراردادیں منظور کی گئیں۔

    • Share this:
      ممبئی : مہاراشٹر میں جاری سیاسی بحران کے درمیان ہفتہ کو یہاں شیوسینا ہیڈکوارٹر میں نیشنل ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ ہوئی، جس میں تین اہم قراردادیں منظور کی گئیں۔ ذرائع کے مطابق پہلی قرارداد میں کہا گیا ہے کہ شیو سینا میں فیصلہ سازی کرنے والے تمام افسران پارٹی سربراہ ادھو ٹھاکرے کے ساتھ ہوں گے جب کہ دوسری قرارداد میں کسی کے بھی ذریعہ بالا صاحب ٹھاکرے اور شیوسینا کے نام کا استعمال کرنے پر روک لگائی گئی ہے ۔ اسی طرح تیسری قرارداد میں کہا گیا ہے کہ پارٹی سربراہ کو پارٹی میں موجود غداروں کے خلاف کارروائی کا حق بھی حاصل ہوگا۔ ان تمام تجاویز کو متفقہ طور پر منظور کر لیا گیا ہے۔

      ورکنگ کمیٹی کی میٹنگ کے دوران ادھو ٹھاکرے نے کہا کہ شیوسینا، کانگریس، این سی پی کا اتحاد ہے اور چل رہا ہے۔ اس کے ساتھ انہوں نے واضح کیا کہ بی جے پی سے ہاتھ ملانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

       

      یہ بھی پڑھئے: باغی ارکان اسمبلی کے دفتر میں توڑ۔پھوڑ، Shivsena workers نے کیا زبردست احتجاج


      میٹنگ کے بارے میں تفصیلات بتاتے ہوئے شیو سینا کے ترجمان آنند دوبے نے ایکناتھ شندے پر بالاصاحب ٹھاکرے کا نام استعمال کرنے پر تنقید کی اور پوچھا کہ وہ کسی اور کے والد کا نام کیسے استعمال کر سکتے ہیں۔ انہوں نے اسے بے شرمی قرار دیتے ہوئے شندے سے کہا کہ یہ کیسا کردار ہے کہ آپ دوسرے کے والد کا نام لے لیں گے، اپنے والد کا نام لیجئے نا ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: ہندوستان کی پہلی اینیمل کووڈ ویکسین ہوگی Ancovax! کیاجانورکوبھی ہے کووڈکاخطرہ؟


      ترجمان نے مزید کہا کہ شیو سینا کے سپاہیوں کا غصہ بھڑکنا فطری ہے، ان کا غصہ جائز ہے۔ ہم چار دنوں تک خاموش رہے، لیکن اب سینک جذباتی طور پر وابستہ ہیں ، ان کا غصہ بڑھ رہا ہے، لیکن ہم امن و امان بھی برقرار رکھیں گے، کیونکہ یہ بھی ہماری حکومت کی ذمہ داری ہے ۔

      وہیں شیو سینا کے لیڈر سنجے راوت نے بتایا کہ میٹنگ میں 6 قراردادیں منظور کی گئی ہیں اور یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ شیو سینا بالا صاحب ٹھاکرے کے ہندوتوا نظریہ پر عمل کرے گی اور متحدہ مہاراشٹر کے نظریہ سے سمجھوتہ نہیں کرے گی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: