کشمیری آج بھی بھیک مانگ رہے ہوتے؟ کیاہے اس جملہ کی حقیقت ۔ پڑھیں پوری خبر

پی ڈی پی صدرمحبوبہ مفتی نے سوشل میڈیاپروائرل اطلاعات کو کیا مسترد

Apr 22, 2019 02:10 PM IST | Updated on: Apr 22, 2019 02:15 PM IST
کشمیری آج بھی بھیک مانگ رہے ہوتے؟ کیاہے اس جملہ کی حقیقت ۔ پڑھیں پوری خبر

جموں وکشمیر کی سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی: فائل فوٹو۔

پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی اطلاعات کو مسترد کردیاہے۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ انہوں نے کبھی بھینہیں کہا ہے کہ اگروہ پندرہ سال قبل سیاست میں شمولیت اختیارنہ کرتی توکشمیری بھیک مانگ رہے ہوتے۔

واضح رہے کہ سوشل میڈیا میں ایک میسج وائرل ہوگیاہے۔ جس میں یہ دعویٰ کیاگیاہے کہ محبوبہ مفتی نے کہا کہ ‘‘ اگر میں نے پندرہ سال پہلے سیاست میں شمولیت اختیار نہیں کی ہوتی تو کشمیری آج بھی بھیک مانگ رہے ہوتے'۔

Loading...

محبوبہ مفتی نے اپنے ایک ٹویٹ میں رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا 'واٹس ایپ، فیس بک اور دیگر سوشل میڈیا پلیٹ فارموں پر ایک بے بنیاد اور جعلی خبر کو شیئرکیاجارہاہے، یہ خبر بے بنیاد ہے اور زرد صحافت کی ایک مثال ہے، لوگ مجھے ہمیشہ باجی کے نام سے پکارتے ہیں اور میں اس اعتماد پر کبھی آنچ نہیں آنے دوں گی'۔

قابل ذکر ہے کہ محبوبہ مفتی سے منسوب یہ خبر سوشل میڈیا پر کافی زور شور کے ساتھ وائرل ہوئی ہیں اور سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے بھی اس خبر کو اپنے ٹویٹرہینڈل پر شیئر کیا جس کے جواب میں محبوبہ مفتی نے ٹویٹ کرتے ہوئے کہا 'عمر یہ بے بنیاد خبر ہے، آپ نے جس جوش وخروش کے ساتھ اس کو شیئر کیا۔اس پر حیران ہوں باوجودیہ کہ کشمیرپریس نے اس خبرکو ہٹادیا۔تاہم اب عمرعبداللہ نے بھی اپنے اس ٹویٹ کوہٹادیاہے

Loading...