ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سی اے اے کو لے کر ملیشیائی وزیر اعظم کے تبصرہ پر ہندوستان ناراض ، سرکردہ سفارت کار کو کیا طلب

ہندوستان نے اپنے اندرونی معاملوں سے متعلق ملیشیا کے وزیراعظم مہاترمحمد کی رائے زنی پر آج دوسرے دن بھی احتجاج کیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 21, 2019 11:23 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سی اے اے کو لے کر ملیشیائی وزیر اعظم کے تبصرہ پر ہندوستان ناراض ، سرکردہ سفارت کار کو کیا طلب
سی اے اے کو لے کر ملیشیائی وزیر اعظم کے تبصرہ پر ہندوستان ناراض

ہندوستان نے اپنے اندرونی معاملوں سے متعلق ملیشیا کے وزیراعظم مہاترمحمد کی رائے زنی پر آج دوسرے دن بھی احتجاج کیا۔  حکومت ہند نے آج ملیشیا کے ایک سرکردہ سفارت کار کو طلب کیا اور ہندوستان میں شہریت کے نئے قانون سے متعلق وزیر اعظم مہاتر محمد کی نکتہ چینی پر سخت اعتراض کیا۔ ایک سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ملیشیا سے کہا گیا ہے کہ وہ باہمی تعلقات کے بارے میں ایک طویل المیعاد اور اسٹریٹجک نقطہ نظر سے کام لے۔


وزارت خارجہ نے ملیشیائی وزیراعظم کے تبصرے پر جو انہوں نے ایک پریس بریفننگ میں کوالالمپور میں کیا تھا ، ہندوستان کی طرف سے احتجاج درج کرنے کے لئے ملیشیا کے ناظم الامور کو طلب کیا تھا ۔ ذرائع نے بتایا کہ ہندوستان کی طرف سے یہ واضح کیا گیا کہ اس طرح کے تبصرے نہ تو ایک دوسرے کے اندرونی معاملوں میں عدم مداخلت کے تسلیم شدہ سفارتی اداب کے مطابق ہیں اور نہ ہی ہمارے باہمی تعلقات کی نوعیت سے میل کھاتے ہیں۔


خیال رہے کہ ملیشیائی وزیراعظم نے کوالالمپور میں ایک پریس کانفرنس میں شہریت ترمیمی قانون( سی اے اے )پر نکتہ چینی کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہیں ہندوستان میں اقلیتوں کو درپیش مشکلات کے بارے میں تشویش ہے۔ جمعہ کے روز بھی مہاتر محمد نے کہا تھا کہ اس قانون کی وجہ سے لوگ (ہندوستان میں) مررہے ہیں۔ ایسا کرنے کی کیا ضرورت ہے جبکہ پچھلے 70 برسوں سے لوگ کسی دقت کے بغیر شہریوں کی حیثیت سے ساتھ ساتھ رہتے آئے ہیں۔


گزشتہ روز وزارت خارجہ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ملیشیا کے وزیراعظم کا بیان حقائق کے خلاف ہے۔ ہم ملیشیا پر ہندوستان کے داخلی امور میں بالخصوص حقائق کو صحیح طور پر سمجھے بغیر تبصرہ کرنے سے گریز کرنے پر زور دیتے ہیں۔
First published: Dec 21, 2019 11:23 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading