உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

     ملیکا ارجن کھڑگے راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے ہٹے، سونیا گاندھی کو سونپا استعفیٰ

    Mallikarjun kharge news: کانگریس صدر عہدے کے امیدوار ملیکا ارجن کھڑگے اب راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر نہیں ہوں گے۔ ملیکا ارجن کھڑگے نے راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے استعفیٰ  سونپ دیا ہے۔ کانگریس صدر عہدے کے لئے انتخابی میدان میں اترنے کی وجہ سے کھڑگے نے یہ فیصلہ لیا ہے۔

    Mallikarjun kharge news: کانگریس صدر عہدے کے امیدوار ملیکا ارجن کھڑگے اب راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر نہیں ہوں گے۔ ملیکا ارجن کھڑگے نے راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے استعفیٰ  سونپ دیا ہے۔ کانگریس صدر عہدے کے لئے انتخابی میدان میں اترنے کی وجہ سے کھڑگے نے یہ فیصلہ لیا ہے۔

    Mallikarjun kharge news: کانگریس صدر عہدے کے امیدوار ملیکا ارجن کھڑگے اب راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر نہیں ہوں گے۔ ملیکا ارجن کھڑگے نے راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے استعفیٰ  سونپ دیا ہے۔ کانگریس صدر عہدے کے لئے انتخابی میدان میں اترنے کی وجہ سے کھڑگے نے یہ فیصلہ لیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Delhi, India
    • Share this:
      نئی دہلی: کانگریس صدر عہدے کے امیدوار ملیکا ارجن کھڑگے اب راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر نہیں رہیں گے۔ ملیکا ارجن کھڑگے نے راجیہ سبھا میں لیڈر اپوزیشن کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ انہوں نے اپنا استعفیٰ کانگریس صدر سونیا گاندھی کو سونپ دیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ کانگریس میں ‘ایک شخص ایک عہدہ‘ کے اصولوں کے تحت ملیکا ارجن کھڑگے نے یہ استعفیٰ دیا ہے۔ کھڑگے کانگریس صدر کے الیکشن میں ابھی سے سب سے مضبوط دعویدار مانے جا رہے ہیں۔ ان کا سیدھا مقابلہ ششی تھرور سے ہوگا۔

      وہیں، راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے ملیکا ارجن کھڑگے کے استعفیٰ کے بعد پی چدمبرم اور دگوجے سنگھ کا نام دوڑ میں آگے مانا جا رہا ہے۔ ذرائع کی مانیں تو کانگریس کے لئے چیلنج یہ ہے کہ کانگریس صدر عہدہ اور راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر دونوں جنوب سے ہونے پر کانگریس کے لئے شمال اور جنوب میں توازن برقرار رکھنا مشکل ہوگا۔ اس لئے اپوزیشن لیڈر کا عہدہ شمالی ہندوستان کے لیڈر کو دیا جاسکتا ہے اور ایسے میں دگوجے سنگھ اپوزیشن کا لیڈر بن سکتے ہیں۔

      ملیکا ارجن کھڑگے نے راجیہ سبھا اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔
      ملیکا ارجن کھڑگے نے راجیہ سبھا اپوزیشن لیڈر کے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔


      دراصل، کانگریس صدر عہدے کی دوڑ میں ملیکا ارجن کھڑگے اور ششی تھرور کے علاوہ کے این ترپاٹھی بھی ہیں۔ تینوں لیڈران نے جمعہ کے روز پرچہ نامزدگی کے آخری دن اپنی اپنی نامزدگی داخل کی اور کرناٹک سے تعلق رکھنے والے سینئر لیڈر ملیکا ارجن کھڑگے واضح طور پر پسندیدہ امیدوار کے طور پر ابھرے ہیں۔ وہیں، میدان میں اترے تیسرے امیدوار کے این ترپاٹھی جھارکھنڈ کے سابق وزیر ہیں۔

      80 سالہ ملیکا ارجن کھڑگے نے کانگریس کے اعلیٰ لیڈران کے ساتھ پرچہ نامزدگی کے 14 سیٹ جمع کئے۔ ان کی تائید کرنے والوں میں اشوک گہلوت، دگوجے سنگھ، اے کے انٹونی، امبیکا سونی، مکل واسنک شامل ہیں۔ اس کے علاوہ ان کی تائید کرنے والوں میں آنند شرما، پرتھوی راج چوہان، منیش تیواری اور بھوپیندر سنگھ ہڈا جیسے لیڈران شامل ہیں، جو پارٹی میں تبدیلی کا مطالبہ کرنے والے لیڈران کے گروپ جی-23 میں شامل ہیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: