ہوم » نیوز » مشرقی ہندوستان

بنگال میں ممتا بنرجی نے ہی اسدالدین اویسی کا کھیل بگاڑا، مجلس اتحادالمسلمین کے بڑے لیڈران سمیت کئی عہدیداران ترنمول کانگریس میں شامل

West Bengal Assembly Elections 2021: بہار میں پانچ سیٹیں جیتنے کے بعد مغربی بنگال کے انتخابی میدان میں اترنے کی تیاری میں لگی اسد الدین اویسی کی پارٹی اے آئی ایم آئی ایم کو بڑا جھٹکا لگا ہے۔

  • Share this:
بنگال میں ممتا بنرجی نے ہی اسدالدین اویسی کا کھیل بگاڑا، مجلس اتحادالمسلمین کے بڑے لیڈران سمیت کئی عہدیداران ترنمول کانگریس میں شامل
بنگال میں ممتا بنرجی نے ہی اسدالدین اویسی کا کھیل بگاڑا، مجلس اتحادالمسلمین کے بڑے لیڈران سمیت کئی عہدیداران ترنمول کانگریس میں شامل

کولکاتا: حیدرآباد کی پارٹی سے بنگال کے لوگوں کو دور رہنے کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے اپیل کی تھی اب اسی حیدرآباد کی جماعت کے لیڈران کو ترنمول کانگریس میں شامل کرکے ترنمول کانگریس نے حیدرآباد کے بھائی جان کو مغربی بنگال سے دور رہنے کا مشورہ دیا ہے۔ بنگال کی سیاست میں حیدرآباد کے بھائی جان کے جادو کو روکنے کے لئے پارٹی کی سیاسی سرگرمیاں تیز ہے، لیڈران سر جوڑ کر بیٹھے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ آج پہلی بار آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) پارٹی کے لیڈران کو ترنمول کانگریس میں شامل کرایا گیا۔


بہار الیکشن کے نتائج کے بعد مغربی بنگال میں اسمبلی الیکشن کی تیاریاں زوروں پر ہے۔ ہر پارٹی جیت حاصل کرنے کے لئے ہر سیاسی پہلو پر غور کررہی ہے۔ آئندہ سال ہونے والے الیکشن کی تیاریوں میں پارٹیاں مصروف ہیں۔ بہار الیکشن کے نتائج کے بعد ایم آئی ایم بھی بنگال میں سياسی اِنٹری کرنا چاہتی ہے۔ وہیں بی جے پی مخالف جماعتیں بنگال کی سیاست میں ایم آئی ایم کو اپنے لئے خطرہ محسوس کر رہی ہیں۔ مغربی بنگال میں 294 اسمبلی سیٹوں میں 105 اسمبلی حلقے ایسے ہیں، جہاں مسلم ووٹر فیصلہ کن ووٹر کی حثیت رکھتے ہیں۔


اِن اسمبلی حلقوں سے کانگریس، لیفٹ اور ترنمول کانگریس کو جیت ملتی رہی ہے، لیکن اب ایم آئی ایم بھی انہی حلقوں سے اپنی مقبولیت و حمایت کا دعویٰ کر رہی ہے، ایسے میں بنگال میں ایم آئی ایم کو کامیابی ملے یا نہ ملے، لیکن دیگر جماعتیں ایم آئی ایم کی موجودگی کو اپنی اپنی جیت کی راہ میں رکاوٹ محسوس کر رہی ہیں۔ کانگریس نے پہلے ہی ایم آئی ایم کو مغربی بنگال میں سیاسی مقبولیت نہ ملنے کا دعویٰ کیا ہے۔ وہیں آج ترنمول کانگریس نے ایم آئی ایم لیڈران کو پارٹی میں شامل کرتے ہوئے یہ پیغام دینے کی کوشش کی ہے کہ بنگال میں دیدی کا جادو برقرار ہے۔  ایسے میں بنگال میں دادا اور دیدی کی سیاست میں بھائی جان کی جادوگری کیا کمال دکھاتی ہے یہ دیکھنا اہم ہے۔


اویسی نے کہا بنگال الیکشن پر لیڈروں سے کریں گے بات

آل انڈیا مجلس اتحادالمسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) سربراہ اسدالدین اویسی (AIMIM Chief Asaduddin Owaisi) نے اتوار کو کہا تھا کہ ان کی پارٹی مغربی بنگال میں الیکشن لڑنے کے موضوع پر وہاں کے اپنے لیڈروں کے ساتھ تبادلہ خیال کرے گی۔ مغربی بنگال میں اے آئی ایم آئی ایم کے اگلا اسمبلی انتخابات لڑنے کے سوال پر حیدرآباد کے رکن پارلیمنٹ نے نامہ نگاروں سے کہا کہ پارٹی اپنی مغربی بنگال یونٹ کے ساتھ میٹنگ کر رہی ہے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Nov 23, 2020 09:41 PM IST