ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

جموں وکشمیرکولیکرمولاناآزاد نیشنل اردویونیورسٹی کابڑافیصلہ،جلدہی جاری ہونگےاحکامات

وادی کشمیر میں5 اگست کے بعد پیدا شدہ صورتحال کے پیش نظر یونیورسٹی کے بڈگام کالج میں تعینات غیر مقامی فیکلٹی ممبران کو عارضی طورپردوسرے شہروں جیسے حیدرآباد اور لکھنؤ ٹرانسفر کیا گیا تھا

  • UNI
  • Last Updated: Nov 21, 2019 08:35 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
جموں وکشمیرکولیکرمولاناآزاد نیشنل اردویونیورسٹی کابڑافیصلہ،جلدہی جاری ہونگےاحکامات
مولانا آزاد نیشنل اُردو یونیورسٹی

مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے سائنس اینڈ آرٹس کالج فار وویمن میں تعینات غیرمقامی فیکلٹی ممبران آنے والے دس دنوں کے اندرسری نگر آکرکالج ھٰذا میں 5 اگست سے معطل درس وتدریس کی سرگرمیاں بحال کریں گے۔ یونیورسٹی کے تعلقات عامہ کے افسرعابد عبدالواسع نے یو این آئی اردو سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وادی کشمیر میں5 اگست کے بعد پیدا شدہ صورتحال کے پیش نظر یونیورسٹی کے بڈگام کالج میں تعینات غیر مقامی فیکلٹی ممبران کو عارضی طورپردوسرے شہروں جیسے حیدرآباد اور لکھنؤ ٹرانسفر کیا گیا تھا لیکن، اب چونکہ وہاں صورتحال بہتر ہے، اس کے پیش نظر ان کی سری نگر واپسی کا فیصلہ لیا گیا ہے۔


 مولاناآزاد نیشنل اردویونیورسٹی کی فائل فوٹو۔(تصویر:نیوز18اردو)۔

مولاناآزاد نیشنل اردویونیورسٹی کی فائل فوٹو۔(تصویر:نیوز18اردو)۔


قبل ازیں یو این آئی اردو نے بڈگام کالج میں غیر مقامی فیکلٹی ممبران کی عدم موجودگی اور اس کے خلاف کالج میں زیر تعلیم طالبات کے احتجاج کو یونیورسٹی حکام کی نوٹس میں لایا۔ یونیورسٹی کے تعلقات عامہ کے افسرنے حیدرآباد سے فون پربتایا: 'میری وائس چانسلر صاحب (ڈاکٹر محمد اسلم پرویز) سے ابھی بات ہوئی۔ میں نے آپ کی جانب سے ہماری نوٹس میں لایا گیا غیرمقامی فیکلٹی ممبران کی واپسی کا مسئلہ ان کے ساتھ اٹھایا۔ وائس چانسلر صاحب نے کہا کہ اسی ہفتے تمام غیرمقامی فیکلٹی ممبران کی واپسی کا حکم نامہ جاری ہوگا'۔ان کا مزید کہنا تھا: 'اگر وہ فی الوقت حیدرآباد یا لکھنؤ میں ڈیوٹی انجام دے رہے ہیں لیکن انہیں جلد از جلد سری نگر واپس بھیجا جائے گا۔ انہیں سری نگر واپس جوائن کرنے میں پانچ سے دس دن لگ جائیں گے'۔

First published: Nov 21, 2019 06:51 PM IST