ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

راکیش ٹکیٹ کے نام پر بنے کئی ٹوئٹر ہینڈل، فرضی ٹوئٹ میں پھنس گئے کیجریوال

کسان لیڈر راکیش ٹکیٹ (Rakesh Tikait) کے نام پر ٹوئٹر پر فرضی اکاونٹ کی بھرمار ہوگئی ہے۔ اس کے سبب اب راکیش ٹکیٹ کو اپنے آفیشیل اکاونٹ پر صحیح اکاونٹ بتانے پڑ رہے ہیں۔ اس فرضی اکاونٹس نے دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) کو بھی فریب دے دیا۔

  • Share this:
راکیش ٹکیٹ کے نام پر بنے کئی ٹوئٹر ہینڈل، فرضی ٹوئٹ میں پھنس گئے کیجریوال
راکیش ٹکیٹ کے نام پر بنے کئی ٹوئٹر ہینڈل، فرضی ٹوئٹ میں پھنس گئے کیجریوال

نئی دہلی: کسان آندولن (Kisan Andolan) کو لے کر کسان لیڈروں نے اپنی آواز کو پہنچانے کے لئے سوشل میڈیا کا بڑا سہارا لیا ہوا ہے۔ ایسے میں اب سوشل میڈیا کے چکر میں بڑے بڑے لیڈر بھی پھنس گئے ہیں۔ کل رات کسان لیڈر راکیش ٹکیٹ (Rakesh Tikait) کے نام سے ایک ٹوئٹ کیا گیا، جس کے صحیح یا غلط کی پہچان بھی دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) نہیں کرسکے۔ دراصل، راکیش ٹکیٹ کے فرضی اکاونٹ سے غازی پور بارڈر (Ghazipur Border) کے آندولن کے مقام پر بجلی پانی مہیا کرانے کا مطالبہ دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال (Arvind Kejriwal) سے کیا گیا تھا۔


فرضی ٹوئٹ پر بجلی - پانی کے انتظامات کرنے کا دیا حکم


راکیش ٹکیٹ کے نام کے فرضی ٹوئٹ میں دہلی کے وزیر اعلیٰ ایسے پھنس گئے کہ ان کو پتہ ہی نہیں چلا کہ آخر یہ ٹوئٹ راکیش ٹکیٹ کے اکاونٹ سے کیا گیا یا کوئی ان کے نام سے فرضی ٹوئٹ کر رہا ہے۔ دہلی کے وزیر اعلیٰ نے اس ٹوئٹ پر فوراً نوٹس لیتے ہوئے آندولن کی جگہ پر بجلی - پانی کا انتظام کرنے کے احکامات دے دیئے۔ جب اس طرح کی خبر میڈیا میں پھیلی تو بھارتیہ کسان یونین (Bhartiya Kisan Union) کے قومی ترجمان راکیش ٹکیٹ نے اب ٹوئٹ کے ذریعہ یہ بتایا ہے کہ ہمار آفیشیل ٹوئٹر ہینڈل @RakeshTikaitBKU اور @OfficialBKU ہیں۔ ساتھ ہی یہ بات بھی سامنے آرہی ہے کہ انہوں نے یہ کہا کہ وہ صرف یوپی کا پانی ہی پئیں گے۔


راکیش ٹکیٹ کے نام کے فرضی ٹوئٹ میں دہلی کے وزیر اعلیٰ ایسے پھنس گئے کہ ان کو پتہ ہی نہیں چلا کہ آخر یہ ٹوئٹ راکیش ٹکیٹ کے اکاونٹ سے کیا گیا یا کوئی ان کے نام سے فرضی ٹوئٹ کر رہا ہے۔
راکیش ٹکیٹ کے نام کے فرضی ٹوئٹ میں دہلی کے وزیر اعلیٰ ایسے پھنس گئے کہ ان کو پتہ ہی نہیں چلا کہ آخر یہ ٹوئٹ راکیش ٹکیٹ کے اکاونٹ سے کیا گیا یا کوئی ان کے نام سے فرضی ٹوئٹ کر رہا ہے۔


تشدد کے بعد راکیش ٹکیٹ کے نام سے کئی فرضی ٹوئٹر اکاونٹ

اس درمیان دیکھا جائے تو کسان آندولن سے پہلے اور 26 جنوری کے پُرتشدد سانحہ کے بعد سے راکیش ٹکیٹ کے نام سے کئی فرضی ٹوئٹر اکاونٹ بن گئے ہیں۔ ان اکاونٹس کی بھرمار کے سبب خود راکیش ٹکیٹ کو شیئر کرکے اپنے ٹوئٹر ہینڈل کو بتانا پڑا ہے۔

ہم یوپی کا پانی ہی پئیں گے: راکیش ٹکیٹ

راکیش ٹکیٹ نے پانی بجلی کو لےکرکہا کہ ہم یوپی کا پانی ہی پئیں گے، اگر انتظامیہ نے ہماری بجلی پانی بحال نہیں کی، تو ہم یہیں سب سب مسری بل کھود کر پانی نکال لیں گے۔ ہم نہیں چاہتے کہ ہمارے لئے دہلی سے پانی کے ٹینکر آئیں۔ وہ ٹینکر بارڈر کے اس طرف ہی کھڑے رہیں گے۔ ہم اپنی زمین کا ہی پانی پئیں گے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jan 29, 2021 05:15 PM IST