உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ملک کے پہلے وزیرتعلیم مولانا ابوالکلام آزاد کا 133 واں یوم پیدائش، جانیے مولانا آزاد کی حیات و خدمات

    Youtube Video

    امام الہند مولانا ابوالکلام آزاد کے یوم پیدائش کی مناسبت سے آج ملک بھر میں قومی یوم تعلیم منایا جارہا ہے۔ وہیں کئی جگہ مولانا آزاد کی حیات و خدمات کے ضمن میں مختلف پروگرام، سیمینار، تحریری و تقریری مقابلہ جات اور دیگر سرگرمیاں انجام دی جارہی ہیں۔

    • Share this:
      امام الہند مولانا ابوالکلام آزاد کا یوم پیدائش ملک بھرمیں قومی یوم تعلیم کےطور پر منایا جاتا ہے۔ مولانا آزاد ملک کے پہلے وزیر تعلیم تھے۔ مولانا آزاد کا یوم پیدائش 2008 سے قومی یوم تعلیم کےطور پر منایا جاتا ہے۔ مولانا آزاد کی پیدائش 11 نومبر 1888 میں ہوئی تھی۔  وہ 15 اگست 1947 کے بعد سے یکم فروری 1958 تک پہلے وزیر تعلیم رہے تھے۔

      امام الہند مولانا ابوالکلام آزاد کے یوم پیدائش کی مناسبت سے آج ملک بھر میں قومی یوم تعلیم منایا جارہا ہے۔ وہیں کئی جگہ مولانا آزاد کی حیات و خدمات کے ضمن میں مختلف پروگرام، سیمینار، تحریری و تقریری مقابلہ جات اور دیگر سرگرمیاں انجام دی جارہی ہیں۔

      مولانا آزاد کی مختلف اہم اور نایاب و نادر تصاویر سے متعلق گیلری یہاں ملاحظہ کیجیے۔

      سنہ 1912 میں اردو ہفتہ وار ’’الہلال‘‘ جاری کیا جو انگریز مخالف اور حب الوطنی پر مبنی مواد کے لیے کافی مقبول ہوا لیکن حکومت نے اس پر 1914 میں پابندی عائد کر دی۔ اس کے بعد مولانا آزاد نے ’’البلاغ‘‘ کے نام سے دوسرا اخبار شروع کر دیا اور قومی آزادی کے اپنے مشن کو جاری رکھا۔

       

      مولانا ابو الکلام آزاد کی کتابیں:
      ترجمان القرآن
      تصورات قرآن
      قرآن کا قانون عروج و زوال
      یاجوج ماجوج
      رسول رحمت ( سیرت رسول ﷺ پر مشتمل مقالات کا مجموعہ )
      سیرت رسول ﷺ کے عملی پہلو
      صدائے حق
      حقیقت زکوٰۃ
      حقیقت حج
      حقیقت الصلوٰۃ
      جامع الشواہد فی دخول غیر المسلم فی المساجد
      تحریک آزادی
      ایمان اورعقل
      اولیا اللہ و اولیا الشیطان

      انسانیت موت کے دروازے پر
      اسلام میں آزادی کا تصور
      ارکان اسلام
      رسالہ عزیمت و دعوت
      ہجر و وصال
      ہماری آزادی
      غبار خاطر
      حیات سرمد
      آزادئ ہند (Indian wins freedom)
      تحریک نظم جماعت
      اسلام اور نیشنلزم
      عروج و زوال کے فطری اصول
      اسلام کا نظریہ جنگ
      شہادت حسین
      مسئلہ خلافت
      غضب ناک محبوبہ (ایک افسانہ کا ترجمہ)
      صدائے رفعت
      ذکرٰی
      درس وفا
      قول فیصل

      مولانا ابو الکلام آزاد کی حیات و خدمات پرچند کتابیں :

      مولانا ابو الکلام آزاد کی قرآنی خدمت از افضل حق قرشی
      مولانا ابو الکلام آزاد بحیثیت صحافی و مفسر از عبد الرشید عراقی
      نقوش ابوالکلام و مقالات آزاد ازعبد المجید سوہدروی
      تذکرہ آزاد ازعبد الرشید عراقی
      ذکر آزاد ازعبد الرزاق ملیح آبادی
      امام الہند مولانا ابوالکلام آزاد از ابوعلی اثری
      خطوط ابوالکلام آزاد ازمالک رام
      مولانا ابوالکلام آزاد کی صحافت ازڈاکٹر ابوسلمان شاہجہاں پوری
      ابو الکلام آزاد از شورش کاشمیری
      ملفوظات آزاد از محمد اجمل خان

       

      مولانا آزاد کی نثر تو دنیا ادب میں منفرد شناخت کی حامل تھی ہی، لیکن ان کی شاعری بھی بے پناہ انفردیت اور تخلیقیت کی حامل تھی۔ مولانا کی ایک غزل بہ طور نمونہ پیش ہے۔

      کوئی اسیر گیسوئے خم دار قاتل ہو گیا
      ہائے کیا بیٹھے بٹھائے تجھ کو اے دل ہو گیا
      اُس نے تلواریں لگائیں ایسے کچھ انداز سے
      دل کا ہر ارماں فدائے دستِ قاتل ہو گیا
      کوئی نالاں کوئی گرریاں کوئی بسمل ہو گیا
      اس کے اٹھتے ہی دِگر گوں رنگِ محفل ہو گیا
      قیس مجنوں کا تصور بڑھ گیا جب نجد میں
      ہر بگولہ دشتِ لیلیٰ کا محمل ہو گیا

      انتظار اُس گل کا اس درجہ کیا گُلزار میں
      نور آخر دیدۂ نرگس کازائل ہو گیا
      یہ بھی قیدی ہو گیا آخر کمندِ زلف کا
      لے اسیروں میں ترے آزادؔ
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: