ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کورونابحران:تلنگانہ حکومت کی بڑی لاپرواہی،مکہ مسجد کےامام کو14ماہ سےنہیں ملی تنخواہ

میعاد کی تکمیل کے بعد توسیع کے لئے داخل کی گئی درخواست آج تک منظور نہیں کی گئی جبکہ امام صاحب اپنی خدمات جاری رکھے ہوئے ہیں اور وہ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ 14 ماہ سے تنخواہ کے بغیر امامت کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

  • Siasat
  • Last Updated: May 27, 2021 07:56 PM IST
  • Share this:
کورونابحران:تلنگانہ حکومت کی بڑی لاپرواہی،مکہ مسجد کےامام کو14ماہ سےنہیں ملی تنخواہ
میعاد کی تکمیل کے بعد توسیع کے لئے داخل کی گئی درخواست آج تک منظور نہیں کی گئی جبکہ امام صاحب اپنی خدمات جاری رکھے ہوئے ہیں اور وہ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ 14 ماہ سے تنخواہ کے بغیر امامت کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔

دنیا بھرمیں کورونا بحران کی وجہہ معاشی صورتحال بہتر نہیں ہے۔ریاستی، مرکزی حکومتوں کے ساتھ ساتھ سماجی تنظیمیں بھی غریب اور مفلس عوام کے لیے مختلف خدمات انجام دے رہے ہیں۔ تاہم تلنگانہ میں وزیراعلیٰ کے چندراشیکھرراؤ، وزیراقلیتی بہبود کے ایشور، مشیربرائے اقلیتی امور،حکومت تلنگانہ اے کے خان سمیت محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے مجرمانہ رویہ اختیار کیاگیاہے۔تاریخی مکہ مسجد کے ملازمین رمضان المبارک کی خدمات کے صلہ میں حکومت کی جانب سے ہر سال دیئے جانے والے نذرانہ کی اجرائی کے منتظر ہیں۔ رمضان کا اختتام ہوکر 10 دن گزر گئے لیکن محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے ملازمین کیلئے ایک ماہ کے تحفہ کے طور پر تنخواہ کی اجرائی عمل میں نہیں آئی ہے جبکہ گزشتہ کئی برسوں سے عید کے فوری بعد یہ رقم جاری کردی جاتی ہے۔


وزیراعلیٰ کے چندراشیکھرراؤ
وزیراعلیٰ کے چندراشیکھرراؤ


مکہ مسجد کے ملازمین کی جملہ تعداد 24 ہے جبکہ شاہی مسجد کی 6 ملازمین ہیں۔ 30 ملازمین کو ہر سال ایک ماہ کی تنخواہ بطور نذرانہ دی جاتی ہے جبکہ مکہ مسجد کے دو اور شاہی مسجد کے ایک امام کو تراویح میں قرآن کی تلاوت پر بطور تحفہ فی کس 50 ہزار روپئے دیئے جاتے ہیں۔ رمضان المبارک کے ایک ماہ کیلئے دونوں مساجد میں 15 آؤٹ سورسنگ ملازمین کی خدمات حاصل کی گئی تھی، ان کی تنخواہ محکمہ اقلیتی بہبود سے جاری کردی گئی ہے۔ محکمہ اقلیتی بہبود کی کارکردگی کی بدترین مثال یہ ہے کہ مسجد کے ایک امام گزشتہ ایک سال سے تنخواہ سے محروم ہیں۔


مکہ مسجد کے امام کو 14ماہ سے نہیں ملی تنخواہ
مکہ مسجد کے امام کو 14ماہ سے نہیں ملی تنخواہ


میعاد کی تکمیل کے بعد توسیع کے لئے داخل کی گئی درخواست آج تک منظور نہیں کی گئی جبکہ امام صاحب اپنی خدمات جاری رکھے ہوئے ہیں اور وہ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ 14 ماہ سے تنخواہ کے بغیر امامت کے فرائض انجام دے رہے ہیں۔ اسی دوران مکہ مسجد کے اندرونی حصہ میں گنبدوں کی مرمت کا کام دوبارہ شروع کیا گیا ہے۔ اندرونی حصہ کی مزید تین گنبدوں کو کنٹراکٹر کے حوالے کیا گیا جہاں تزئین نو کا کام شروع ہوچکا ہے۔ مسجد کے حوض کے تعمیری کام مکمل ہوچکے ہیں جبکہ ٹائلٹس کے کام ابھی باقی ہیں۔ لاک ڈاؤن کے نفاذ کے بعد سے مکہ مسجد میں پنچوقتہ نمازوں اور نماز جمعہ کی ادائیگی کا سلسلہ بند ہوچکا ہے۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 27, 2021 07:47 PM IST