உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    یوروپی پارلیمنٹ کے اراکین کی وزیراعظم مودی سے ملاقات،جموں وکشمیر کا بھی کرینگے دورہ

    یوروپی پارلیمنٹ کے اراکین کی وزیراعظم مودی سے ملاقات، جموں وکشمیر کا بھی کرینگے دورہ۔(تصویر:پی آئی بی)۔

    یوروپی پارلیمنٹ کے اراکین کی وزیراعظم مودی سے ملاقات، جموں وکشمیر کا بھی کرینگے دورہ۔(تصویر:پی آئی بی)۔

    یوروپی یونین کا 30 رکنی وفد ہندوستان کا دورہ کررہاہے۔ یہ اس وفد کا غیررسمی دورہ ہے اورارکان نے یہ پروگرام خود تیارکیاہے۔

    • Share this:
      وروپی یونین کا 30 رکنی وفد ہندوستان کا دورہ کررہاہے۔ یہ اس وفد کا غیررسمی دورہ ہے اورارکان نے یہ پروگرام خود تیارکیاہے۔ یوروپی یونین کا وفد جموں وکشمیر کا دورہ بھی کریگا اوروہاں ڈل جھیل میں شکارا مالکان سے ملاقات کرے گا۔اس کے علاوہ وفد وہاں کے مقامی باشندوں سے بھی ملاقات کرے گا۔

       

      یوروپی یونین کے ممبران نے پیر کو وزیراعظم نریندر مودی اورقومی سلامتی کے مشیراجیت ڈوبھال سے ملاقات کی۔ اس دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی یورپی یونین کی ٹیم سے خطاب کیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ دہشت گردوں کی حمایت کرنے والے یا ایسی سرگرمیوں اور تنظیموں کی حمایت کرنے والے یا دہشت گردی کوملک کی پالیسی کے طورپراستعمال کرنے والوں کے خلاف فوری کارروائی کی جانی چاہئے۔ دہشت گردی کے لئے صفررواداری کی پالیسی ہونی چاہئے۔وزیراعظم نے کہا کہ منصفانہ اور متوازن باہمی تجارت اور سرمایہ کاری کے معاہدے (بی ٹی آئی اے) کا جلد اختتام حکومت ہند کی ترجیح ہے ۔ وزیراعظم نے امید ظاہر کی کہ یوروپی یونین کے ممبروں کا جموں و کشمیرسمیت ہندوستان کا دورہ نتیجہ خیز رہے گا۔ پی ایم مودی نے کہا کہ یوروپی یونین کے ساتھ ہندوستان کے تعلقات مشترکہ مفادات اور جمہوری اقدا رکے تئیں مشترکہ عہد بندی پر مبنی ہیں۔  





      یوروپی یونین کے ساتھ علاقائی اور عالمی معاملات میں روابط کو مستحکم بنانے کی ضرورت پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے قریبی بین الاقوامی تعاون کی اہمیت اجاگر کی۔ انہوں نے بین الاقوامی شمسی اتحاد کی ترقی اور پذیرائی کا ذکر کیا اور کہا کہ یہ ایک طرح کی عالمی شراکت داری ہے۔وزیراعظم نے ہندوستان میں، وفد کا خیرمقدم کرتے ہوئے اس امید کااظہار کیا کہ یہ وفد ملک کے مختلف حصوں میں جائے گا جو مفید ثابت ہوگا جس میں جموں وکشمیر کا دورہ بھی شامل ہے۔ وفد کا جموں وکشمیر کا دورہ اس وفد کو جموں وکشمیراورلداخ کی ثقافتی اور مذہبی گوناگونی کی تفہیم فراہم کریگا ساتھ ہی ساتھ وفد اس خطے میں ترقیات اور حکمرانی کی ترجیحات کو بھی بہتر طور پر سمجھ سکے گا۔

       

      وزیراعظم نے آسان کاروبار درجہ بندی کے معاملے میں ہندوستان کے ذریعے حاصل کی گئی نمایاں کامیابی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان نے حال ہی میں 2014 کی 142ویں پوزیشن کے مقابلے 63واں مقام حاصل کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان جیسے بڑی آبادی والے اور متنوع ملک کے لئے ایک بڑی کامیابی ہے۔ آج کی حکمرانی کے نظام ایسے ہیں جو عوام کو توقعاتی سمت میں بڑھنے کے لائق بنارہے ہیں۔ وزیراعظم نے تمام ہندوستانیوں کیلئے زندگی بسر کرناآسان بنانے کے امر کو یقینی بنانے کے لئے حکومت کی توجہ اور کوششوں کو نمایاں کرکے پیش کیا۔  





      انہوں نے سوچھ ہندوستان اور آیوشمان بھارت جیسے سرکاری پروگراموں سمیت دیگر کلیدی پروگراموں کی کامیابی کاذکر کیا۔ 2025 تک ٹی بی کے خاتمے کے لئے حکومت کی عہد بندگی کا اعادہ کیا اور کہا کہ یہ عالمی ہدف سے پانچ سال قبل ہوگا۔ انہوں نے ماحولیات کے تحفظ کیلئے اٹھائے گئے اقدامات کا ذکر کیا جس میں قابل احیاء توانائی کے اہداف اور سنگل یوز پلاسٹک کے خلا ف چلائی گئی مہم جیسے نکات شامل تھے۔

       

      اس دورے پرردعمل ظاہر کرتے ہوئے، محبوبہ مفتی کے ٹویٹراکاؤنٹ ان کی بیٹی نے لکھا ہے کہ 'کشمیر اوردنیاکے مابین آہنی پردے اٹھ کھڑے ہوں گے'۔ اس کے ساتھ ہی ، یہ بھی لکھا گیا کہ 'جموں و کشمیر کو بدامنی میں دھکیلنے' کے لئے حکومت ہند کو جوابدہ ہونا چاہئے۔ امید ہے کہ انہیں (وفدکو) ڈاکٹروں، مقامی میڈیا اور سیول سوسائٹی کے لوگوں سے ملنے کا موقع ملے گا۔  



      First published: