உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Indian China Tension:سرحد پر چینی تعمیرات کو لے کر وزارت خارجہ نے کہا،ڈریگن کے ہر قدم پر حکومت کی گہری نظر

    وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باغچی ۔ فائل فوٹو ۔

    وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باغچی ۔ فائل فوٹو ۔

    Indian China Tension: ہندوستان نے یہ بھی کہا ہے کہ چین کے ساتھ موجودہ کشیدگی کے حوالے سے بات چیت کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک کی بات چیت کے مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ جس کی وجہ سے دونوں ممالک نے کشیدگی کے بعض حصوں سے اپنی افواج کو ہٹا لیا ہے۔

    • Share this:
      Indian China Tension:نئی دہلی: چین کی طرف سے مشرقی لداخ میں سڑکوں اور پلوں کی تعمیر سے متعلق امریکی فوج کے ایک سینئر افسر کے بیان پر ہندوستان نے کوئی ردعمل ظاہر نہیں کیا ہے۔ تاہم ہندوستان نے یہ ضرور کہا ہے کہ وہ مشرقی لداخ کے علاقے میں چین کی ہر سرگرمی پر نظر رکھے ہوئے ہے اور اپنی علاقائی سالمیت اور خودمختاری کا ہر طرح سے تحفظ کرے گا۔

      ہندوستان نے یہ بھی کہا ہے کہ چین کے ساتھ موجودہ کشیدگی کے حوالے سے بات چیت کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک کی بات چیت کے مثبت نتائج برآمد ہوئے ہیں۔ جس کی وجہ سے دونوں ممالک نے کشیدگی کے بعض حصوں سے اپنی افواج کو ہٹا لیا ہے۔ ہندوستان اور چین کے درمیان یہ معاہدہ بھی ہے کہ یہ بات چیت جاری رہنی چاہیے کیونکہ موجودہ کشیدگی کو طول دینا دونوں ممالک کے تعلقات کے مفاد میں نہیں ہے۔ ہندوستانی وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باغچی نے ہندوستان، چین اور امریکہ کے تعلقات پر تفصیلی بیان دیا ہے۔

      باغچی نے یہ بھی نشاندہی کی کہ ہندوستان نے حالیہ برسوں میں سرحدی علاقے کو مزید محفوظ بنانے اور ان کی اقتصادی ترقی کو آسان بنانے کے لیے کئی اقدامات کیے ہیں۔ چین کے ساتھ سفارتی اور فوجی مذاکرات برقرار رکھنے پر باغچی نے کہا کہ ہماری سفارتی اور فوجی بات چیت جاری ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان وزارت خارجہ کی سطح پر مذاکرات کے 10 دور اور فوجی کمانڈر کی سطح پر 15 دور ہو چکے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Chinaکے دبدبے روکنے کے لئے اس پلان پر کام کررہے ہیں ہندوستان اور ویتنام

      یہ بھی پڑھیں:
      Assam Violence:زمین تنازعہ کولیکر دوگروہوں کے درمیان راڈاورتیزدھارہتھیارسے حملہ،2 کی موت

      وزارت خارجہ کی سطح پر حال ہی میں بات چیت ہوئی ہے اور جلد ہی فوجی کمانڈر کی سطح پر دوبارہ مذاکرات ہوں گے۔ اس میں کافی پیش رفت بھی ہوئی ہے۔ مشرقی لداخ کے کئی علاقوں سے دونوں فریق کامیابی کے ساتھ پیچھے ہٹ چکے ہیں۔ ہمیں امید ہے کہ چینی فریق ہندوستان کے ساتھ بات چیت کے ذریعے ایک فعال حل تک پہنچنے کے لیے کام کرے گا۔ فریقین کے درمیان اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا ہے کہ موجودہ کشیدگی کو طول دینا باہمی تعلقات کے مفاد میں نہیں ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: