உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    16 سال کی نابالغ کو 4 منچلوں نے کیا اغوا، نشے کا انجکشن دے کر پوری رات کرتے رہے اجتماعی آبروریزی

    بہار کے مدھوبنی میں 16 سالہ نابالغ لڑکی کو اغوا کرکے اس کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Madhubani Gang Rape) کرنے کا سنسنی خیز معاملہ آیا ہے۔ متاثرہ کی درخواست پر گاوں کے ہی 4 لڑکوں کے خلاف نامزد معاملہ (FIR)  درج کرکے پولیس پورے معاملے کی تفتیش میں مصروف ہے۔

    بہار کے مدھوبنی میں 16 سالہ نابالغ لڑکی کو اغوا کرکے اس کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Madhubani Gang Rape) کرنے کا سنسنی خیز معاملہ آیا ہے۔ متاثرہ کی درخواست پر گاوں کے ہی 4 لڑکوں کے خلاف نامزد معاملہ (FIR) درج کرکے پولیس پورے معاملے کی تفتیش میں مصروف ہے۔

    بہار کے مدھوبنی میں 16 سالہ نابالغ لڑکی کو اغوا کرکے اس کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Madhubani Gang Rape) کرنے کا سنسنی خیز معاملہ آیا ہے۔ متاثرہ کی درخواست پر گاوں کے ہی 4 لڑکوں کے خلاف نامزد معاملہ (FIR) درج کرکے پولیس پورے معاملے کی تفتیش میں مصروف ہے۔

    • Share this:
      مدھوبنی: بہار کے مدھوبنی میں 16 سالہ نابالغ لڑکی کو اغوا کرکے اس کے ساتھ اجتماعی آبروریزی (Madhubani Gang Rape) کرنے کا سنسنی خیز معاملہ آیا ہے۔ متاثرہ کی درخواست پر گاوں کے ہی 4 لڑکوں کے خلاف نامزد معاملہ (FIR)  درج کرکے پولیس پورے معاملے کی تفتیش میں مصروف ہے۔ متاثرہ پوری رات گھر سے لاپتہ تھی اور صبح گھر کے پاس بے ہوشی کی حالت میں ملی۔ ہوش میں آنے پر اہل خانہ کو جب اس نے اپنے ساتھ ہوئی حیوانیت کی کہانی سنائی تو پوری فیملی کے پیر تلے زمین کھسک گئی۔ متاثرہ کی شکایت پر معاملہ درج کیا گیا ہے۔

      اجتماعی آبروریزی کے چاروں ملزمین کی تلاش میں چھاپہ ماری کی جا رہی ہے۔ اجتماعی آبروریزی کا یہ معاملہ مدھوبنی ضلع کے جھنجھار پور تھانہ علاقے کا ہے۔ متاثرہ فیملی کے مطابق، 13 اگست کی رات ان کی 16 سالہ بیٹی اپنے گھر کے پاس ہی چاپاکل پر تھالی دھونے گئی تھی۔ اسی دوران گھات لگا کر بیٹھے چار نوجوانوں نے اسے جبراً اغوا کرلیا اور نشیلی دوا کا انجکشن لگاکر اسے بے ہوش کردیا۔ اہل خانہ کا کہنا ہے کہ پوری رات ان کی بیٹی غائب رہی اور اگلے دن صبح گھر کے پاس ہی حالت میں ملی۔ اس کے بعد اسے جھنجھار پور انو منڈل اسپتال لایا گیا۔

      بتایا جا رہا ہے کہ ہوش میں آنے کے بعد متاثرہ نے پوری آپ بیتی اہل خانہ کو سنائی۔ فی الحال متاثرہ فیملی کی شکایت پر جھنجھار پور تھانے میں 4 نوجوانوں پر نابالغ کو اغوا کرنے اور اس کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کے الزام میں نامزد معاملہ درج کیا گیا ہے۔ اس معاملے میں ابھی پولیس میڈیکل رپورٹ آنے کا انتظار کر رہی ہے۔ جھنجھارپور کے ایس ڈی پی او آشیش آنند کا کہنا ہے کہ متاثرہ کو انصاف ضرور ملے گا۔ پولیس ہر پہلو کی باریکی سے جانچ کر رہی ہے۔ فی الحال متاثرہ کی شکایت پر نامزد ملزمین کے خلاف 376 ڈی، 366 اور پوکسو ایکٹ سمیت کئی دیگر دفعات کے تحت ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

      جھنجھار پور تھانہ انچارج معاون ٹرینی ڈی ایس پی نیہا کماری نے بتایا کہ متاثرہ کے والد نے 16 اگست کو تھانے میں درخواست دی تھی، جس کی بنیاد پر 25 سالہ سنل بھنڈاری، 25 سالہ سشیل بھنڈاری، 26 سالہ پردیپ کمار کامت اور 21 سالہ سریندر کمار بھنڈاری کے خلاف نامزد معاملہ درج کرکے پولیس پورے معاملے کی تفتیش میں مصروف ہے۔ ملزمین کی گرفتاری کے لئے مسلسل چھاپہ ماری بھی جاری ہے۔ پولیس کے مطابق، ملزم سشیل بھنڈاری متاثرہ کے بھائی کا دوست بتایا جا رہا ہے۔ یہ بھی اطلاع ملی ہے کہ گزشتہ اپریل مہینے میں بھی سشیل بھنڈاری متاثرہ لڑکی کو اپنے ساتھ کہیں لے گیا تھا اور کسی ہوٹؒ میں چھوڑ کر فرار ہوگیا تھا۔ اس کے بعد گاوں میں پنچایت بھی بلائی گئی تھی۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: