زمین کے نیچے خشک ہورہا ہے پانی ، ہریانہ کے سرسا ضلع میں صورتحال تشویشناک

زمین کے نیچے پانی کی گرتی سطح ہریانہ کیلئے سنگین نتائج سامنے لا سکتی ہے ۔ بات کریں سرسا کی تو یہاں کے سات میں سے دو بلاکس رانیاں اور ایلن آباد کو بھی ڈارک زون اعلان کردیا گیا ہے ۔

Jul 12, 2019 11:37 PM IST | Updated on: Jul 16, 2019 11:59 AM IST
زمین کے نیچے خشک ہورہا ہے پانی ، ہریانہ کے سرسا ضلع میں صورتحال تشویشناک

زمین کے نیچے خشک ہورہا ہے پانی ، ہریانہ کے سرسا ضلع میں صورتحال تشویشناک

زمین کے نیچے پانی کی گرتی سطح ہریانہ کیلئے سنگین نتائج سامنے لا سکتی ہے ۔ بات کریں سرسا کی تو یہاں کے سات میں سے دو بلاکس رانیاں اور ایلن آباد کو بھی ڈارک زون اعلان کردیا گیا ہے ۔ ان علاقوں میں گزشتہ تقریبا پندرہ سالوں سے پانی کی سطح گرنے کی رفتار بڑھی ہے اور یہ سب وہاں دیکھنے کو مل رہا ہے ، جہاں تقریبا 60 ہزار سے زیادہ ٹویب ویل دن رات پانی نکال رہے ہیں ۔

زیادہ پانی والی فصلوں کی سینچائی کیلئے کسانوں کے ذریعہ کئے جارہے اندھادھند پانی کے استعمال کی وجہ سے پانی کی سطح مسلسل گرتی جارہی ہے ۔ سرسا ضلع کے حلقوں میں پانی کی سطح تیزی میں تیزی سے گراوٹ تشویش کا سبب بن گئی ہے ۔ سرسا ضلع میں زمین کے نیچے پانی کی سطح گزشتہ ڈیڑھ دہائی کے دوران تقریبا 25 میٹر نیچے چلی گئی ہے ۔

Loading...

سرسا کے رانیاں اور ایلن آباد بلاکس ڈارک زون ہیں اور یہاں ٹیوب ویل لگانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے ۔ سرسا ضلع کا رانیاں گزشتہ سال ڈارک زون اعلان کیا جاچکا ہے ۔ اس کے علاوہ اوڑھا اور چوپٹا کی صورتحال بھی تشویش کا باعث بنتی جارہی ہے ۔

کسانوں کا کہنا ہے کہ علاقہ کو ڈارک زون سے باہر نکالنے کیلئے حکومت کوئی ٹھوس قدم نہیں اٹھارہی ہے ۔ ان کے مطابق حکومت یا انتظامیہ کی طرف سے کوئی شخص نہیں آیا جو انہیں بتا سکے کہ اس پریشانی سے کیسے باہر نکلا جائے ۔ کسان نہروں میں پانی کے روٹیشن میں اضافہ کا مطالبہ کررہے ہیں ۔

ادھر دوسری طرف انتظامیہ کے افسران کا کہنا ہے کہ وہ ان علاقوں میں کیمپس لگاتے رہے ہیں اور کسانوں کو بتاتے رہے ہیں کہ دھان جیسی فصلیں نہ کرکے کم پانی والی فصلوں کی طرف رخ کریں ۔ ایک اندازہ کے مطابق سرسا ضلع میں دن رات 60 ہزار سے زیادہ ٹیوب ویل سے پانی نکالا جاتا ہے ۔ اگر اسی طرح کی صورتحال برقرار رہی تو وہ دن دور نہیں جب پورا سرسا ضلع ڈارک زون بن جائے گا اور لوگ بوند بوند پانی کیلئے ترسنے لگیں گے ۔

Loading...