اسٹالن کوبھی رہا کانگریس کا ساتھ، ملاقات میں نہیں بنی کے سی آرکی بات

ڈی ایم کے ذرائع نے بتایا کہ علاقائی جماعتوں کومتحد کرنے کی اپنی قواعد جاری رکھتے ہوئے کے سی آرنے یہاں اسٹالن کےالورپیٹ واقع رہائش گاہ پران سے ملاقات کی اورفیڈرل فرنٹ بنانے کولےکرتبادلہ خیال کیا۔

May 14, 2019 09:10 AM IST | Updated on: May 14, 2019 09:58 AM IST
اسٹالن کوبھی رہا کانگریس کا ساتھ، ملاقات میں نہیں بنی کے سی آرکی بات

ایم کے اسٹالن اورکے سی آرکی ملاقات کی فائل تصویر۔

تلنگانہ راشٹریہ سمیتی (ٹی آرایس) کے صدراورتلنگانہ کے وزیراعلیٰ کے چندرشیکھرراو (کے سی آر) نے پیرکوڈی ایم کے سربراہ ایم کے اسٹالن سے ملاقات کی۔ دونوں لیڈروں کے درمیان یہ ملاقات ایک گھنٹے سے زیادہ چلی، جس دوران انہوں نے لوک سبھا الیکشن کے بعد ایک متبادل محاذ (فیڈرل فرنٹ) بنانے پرغوروخوض کیا۔ ڈی ایم کے ذرائع نے بتایا کہ علاقائی جماعتوں کومتحد کرنے کی اپنی قواعد جاری رکھتے ہوئےکے سی آرنے یہاں اسٹالن کے الورپیٹ واقع رہائش گاہ پران سے ملاقات کی اورفیڈرل فرنٹ بنانےکولےکرتبادلہ خیال کیا۔

ذرائع نے بتایا کہ دونوں لیڈروں نے23 مئی کولوک سبھا انتخابات کےنتائج کےاعلان کے بعد قومی سطح پرپیدا ہونے والی سیاسی حالات کولےکرچرچا کی۔ وہیں اس میٹنگ کے بعد متبادل محاذ میں ڈی ایم کےکوشامل کرنے کی کوششوں کوپیرکواس وقت زبردست جھٹکا لگا، جب ڈی ایم کےصدرایم کےاسٹالن نےکےسی آرسےاپیل کی کہ وہ اپنی پارٹی کی حمایت کانگریس کودیں۔ ڈی ایم کےذرائع نے بتایا کہ علاقائی پارٹیوں کوایک ساتھ لانےکی اپنی قواعد جاری رکھتےہوئےکے سی آرنے یہاں اسٹالن کی رہائش گاہ پران سے ملاقات کی اورایک فیڈرل فرنٹ بنانے کی اپنی تجویزپران سے بحث کی۔

Loading...

ایک گھنٹے سے زیادہ چلی میٹنگ میں اسٹالن نے چندرشیکھرراو سےکہا کہ ان کی پارٹی نے کانگریس کے ساتھ الیکشن سے قبل اتحاد کیا ہے اورانہوں نے وزیراعظم عہدہ کے لئے راہل گاندھی کےنام کی وکالت بھی کی ہے۔ نیوزایجنسی پی ٹی آئی کے مطابق ڈی ایم کے کے ذرائع نے بتایا کہ 'اسٹالن نے راو سے گزارش کی کہ وہ مرکزمیں کانگریس کی قیادت والی حکومت کوٹی آرایس کی حمایت دیں'۔ چندرشیکھرراو نےکچھ دن پہلےکیرلا کے وزیراعلیٰ اور مارکسوادی کمیونسٹ پارٹی کے لیڈرپی وجین سے ملاقات کی تھی۔

اسٹالن سے چرچا کے دوران چندرشیکھرراو نے ظاہرکیا کہ لوک سبھا الیکشن میں علاقائی پارٹیاں بڑی تعداد میں سیٹوں کے ساتھ موثرطاقت کے طورپرابھریں گی اورنہ ہی کانگریس، نہ ہی بی جے پی کوحکومت بنانےکےلئےمناسب سیٹیں ملیں گی۔ چندرشیکھرراونےڈی ایم کےسربراہ سےکہا کہ ایسے حالات پیدا ہونے پرقومی پارٹیوں کی حمایت سے علاقائی پارٹیوں کےذریعہ حکومت بن سکتی ہے۔ اس پرڈی ایم کے، جس میں اسٹالن کےعلاوہ سینئر لیڈردرئی مروگن اورٹی آربالو شامل تھے، نے کہا کہ مرکزمیں صرف کانگریس کی قیادت والی حکومت کےلئےخوشگوارماحول ہے۔ ڈی ایم کےنے یہ بھی کہا کہ مرکزمیں علاقائی پارٹیوں کے ذریعہ حکومت بنانے کی سوچ کامیاب نہیں ہونے کےآثارہیں، کیونکہ الگ الگ ریاستوں کولےکرکچھ پارٹیوں کے رخ الگ الگ ہیں۔

Loading...