نرملا سیتارمن: سیلس گرل سے لے کر مرکزی وزیر تک کا سفر

مودی حکومت میں وزیر دفاع رہیں نرملا سیتارمن ان خواتین میں سے ایک ہیں جنہوں نے بہت ہی کم وقت میں اپنا الگ مقام حاصل کیا ہے

May 30, 2019 04:06 PM IST | Updated on: May 30, 2019 04:11 PM IST
نرملا سیتارمن: سیلس گرل سے لے کر مرکزی وزیر تک کا سفر

نرملا سیتارمن: سیلس گرل سے لے کر مرکزی وزیر تک کا سفر

نریندر مودی کی نئی حکومت میں بی جے پی کی سینئر لیڈر نرملا سیتا رمن کو پھر سے شامل کیا گیا ہے۔ 2014 کی مودی حکومت میں وزیر دفاع رہیں نرملا سیتارمن ان خواتین میں سے ایک ہیں جنہوں نے بہت ہی کم وقت میں اپنا الگ مقام حاصل کیا ہے۔ بطور وزیر دفاع انہوں نے سخت چیلنجوں کا سامنا کیا۔ 2019  کے لوک سبھا الیکشن میں اپوزیشن نے رافیل مسئلہ کو پرزور طریقہ سے اٹھایا تھا۔

کئی بار ایوان میں تو کئی بار پریس کانفرنس کر کے وزیر دفاع کو گھیرنے کی کوشش کی گئی۔ لیکن مضبوط ارادوں والی نرملا سیتارمن نے کانگریس سمیت سبھی اپوزیشن پارٹیوں کا ڈٹ کر سامنا  کیا۔ انہوں نے ہر موقع پر حکومت کی طرف سے اپوزیشن کو معقول جواب دیا۔

Loading...

سیلس گرل سے لے کر وزیر دفاع تک کا سفر

نرملا سیتارمن کے والد انڈین ریلوے میں تعینات تھے۔ جس کی وجہ سے ان کا بچپن الگ الگ شہروں میں گزرا۔ انہوں نے جے این یو سے ایم اے اکنامکس کی ڈگری حاصل کی اور پھر یہیں سے ایم فل کیا۔ ان کی شادی ڈاکٹر پراکالا پربھاکر سے ہوئی۔ دونوں کی ملاقات جے این یو میں ہی ہوئی تھی۔ ڈاکٹر پربھاکر نے لندن اسکول آف اکنامکس سے پی ایچ ڈی مکمل کی اور نرملا سیتارمن انہیں کے ساتھ لندن میں رہنے لگیں۔

ہندستان ٹائمس کی ایک خبر کے مطابق، اس دوران نرملا سیتارمن نے لندن کے ایک ہوم اسٹور میں بطور سیلس گرل بھی کام کیا۔  اس کے بعد انہوں نے

PricewaterhouseCoopers

میں ایک سینئر مینیجر کے طور پر بھی کام کیا۔ بی جے پی میں شمولیت سے پہلے وہ 2003 سے 2005 تک خواتین کے قومی کمیشن (این سی ڈبلیو) کی رکن تھیں۔ انہوں نے بی جے پی کے ترجمان کے طور پر بہت اچھا کام کیا اور اکثر ٹی وی چینلوں پر پارٹی کے لئے کھڑی نظر آئیں۔ اس کے بعد 2014 میں مودی حکومت بننے کے بعد انہیں کابینہ میں شامل کیا گیا۔پھر وہ 2016 میں راجیہ سبھا رکن پارلیمنٹ بنیں۔

Loading...