شہری ترمیمی بل 2019 کو مرکزی کابینہ نے دی منظوری ، پرکاش جاوڑیکر نے بل کو لے کہی یہ بڑی بات

پرکاش جاوڑیکر نے بتایا کہ میٹنگ میں شہری ترمیمی بل اور درج ذیل ذات وقبائل کے ریزرویشن کو دس سال بڑھانے سے متعلق بل کو منظوری دے دی گئی ہے۔

Dec 04, 2019 04:54 PM IST | Updated on: Dec 04, 2019 04:54 PM IST
شہری ترمیمی بل 2019 کو مرکزی کابینہ نے دی منظوری ، پرکاش جاوڑیکر نے بل کو لے کہی یہ بڑی بات

وزیر اعظم مودی اپنے کابینی رفقا کے ساتھ ۔ تصویر : پی ٹی آئی / نیوز 18 ڈاٹ کام ۔

مرکز نے شہری ترمیمی بل 2019 سمیت چھ اہم بلوں کو آج منظوری دے دی۔ وزیراعظم کی صدارت میں کابینہ کی میٹنگ میں یہ فیصلہ کیا گیا۔ وزیر اطلاعات پرکاش جاوڑیکر نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ میٹنگ میں شہری ترمیمی بل اور درج ذیل ذات وقبائل کے ریزرویشن کو دس سال بڑھانے سے متعلق بل کو منظوری دے دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ سنسکرت کے تین ڈیمڈ یونیورسٹیوں کو ملا کر ایک مرکزی یونیورسٹی قائم کرنے سے متعلق بل ، نجی ڈاٹا کی سلامتی یقینی بنانے والے بل ، سینئر شہریوں کی دیکھ بھال ، صحت وغیرہ کی فکر کرنے والے بل اورمزدوروں کی بہتری سے متعلق بل اور جموں وکشمیر ریزرویشن بل کو واپس لینے کوبھی منظوری دی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ نجی ڈاٹا کی سلامتی کا بل ہندوستان کی سلامتی کو دھیان میں رکھتے ہوئے لایا گیا ہے۔ یہ سوال کئے جانے پر کہ شہری بل میں کیا نئے التزامات اور ترمیم شامل کئے گئے ہیں، مسٹر جاوڑیکر نے کہاکہ بل کو پارلیمنٹ میں پیش کرنے کے بعد ہی اس کے بارے میں کچھ بتایا جاسکتا ہے۔ انہوں نےکہا کہ اس بل میں سبھی شہریوں کے مفادات کا خیال رکھا گیا ہے ، ایسے التزامات کئے گئے ہیں جن کا سبھی لوگ خیر مقدم کریں گے۔

Loading...

یہ پوچھے جانے پر اس بل کو پارلیمنٹ میں کب پیش کیا جائے گا ، وزیر اطلاعات نے کہا کہ بل کو ایوان میں جمعرات یا جمعہ کو پیش کیا جاسکتا ہے ۔ لیکن اس کا فیصلہ پارلیمنٹ کرے گی ۔ یہ کہے جانے پر کہ اس بل کی آسام میں مخالفت شروع ہوگئی ہے ، جاوڑیکر نے کہا کہ بل کو پارلیمنٹ میں آنے دیجئے۔ لوگ اس کے التزامات جان کر اس کا خیر مقدم کریں گے۔

نامہ نگاروں نے جب دیگر بلوں کے بارے میں پوچھا تو انہوں نے یہ کہہ کر اس کے التزامات کو بتانے سے انکار کیا کہ پارلیمنٹ میں پیش کئے جانے کےبعد اطلاع مل جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ریزرویشن کو دس سال کے لئے نافذ کیا جاتا ہے اور سماجی انصاف کی سمت میں اس کا جائزہ لینے کے بعد اس کی مدت بڑھائی جاتی ہے۔ اب ریزرویشن کی مدت کو 2020 سے 2030 تک کے لئے بڑھایا جارہا ہے ۔ اس کے لئے کابینہ نے منظوری دے دی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ مزدوروں سے متعلق معاملوں میں مجموعی طور سے 44 قوانین تھے اور مزدوروں سے متعلق معاملوں میں سدھار کرکے چار کردیا گیا تھا ۔ ان میں سے ایک بل کو اسٹینڈنگ کمیٹی کو بھیجا گیا ہے اور ایک پاس ہوچکا ہے۔ ایک بل زیر التوا ہے اور چوتھے کو پیش کیا جانا ہے ۔ مزدوروں کو انصاف دلانے کے لئے مودی حکومت پرعزم ہے۔

Loading...