ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

لاک ڈاون ختم ہونے کےبعد بھی پابندیاں رہیں گی نافذ، کورونا وائرس کےخلاف مودی حکومت کا یہ ہے آگےکا پلان

کورونا وائرس (Coronavirus) کےانفیکشن کو روکنے کےلئے 14 اپریل تک پورے ملک میں لاک ڈاون ہے۔ بازار بند ہیں، بزنس ٹھپ ہے۔ ٹرینیں، بسیں، ہوائی جہاز کچھ بھی نہیں چل رہا۔ ایسے میں حکومت نے لاک ڈاون کھولنے کی تیاروں پر چرچا شروع کردی ہے۔ 14 اپریل کے بعد لاک ڈاون (Lockdown) ہٹنے کی صورت میں کئی پابندی برقرار رہیں گی۔

  • Share this:
لاک ڈاون ختم ہونے کےبعد بھی پابندیاں رہیں گی نافذ، کورونا وائرس کےخلاف مودی حکومت کا یہ ہے آگےکا پلان
کورونا وائرس کے انفیکشن کو روکنے کے لئے 14 اپریل تک پورے ملک میں لاک ڈاون ہے۔

نئی دہلی: چین سے پھیلے کورونا وائرس ہندوستان سمیت پوری دنیا کے ممالک کو اپنی چپیٹ میں لے چکا ہے۔ ہندوستان میں اس وائرس سے متاثر ہونے کی تعداد 4000 سے زائد ہوگئی ہے۔ کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لئے ملک میں 21 دنوں کے لاک ڈاون کا آج 13 واں دن ہے۔ بازار بند ہے، ٹرینیں، بسیں، ہوائی جہاز، ٹیکسیاں کچھ بھی نہیں چل رہی ہیں۔ ایسے میں حکومت لاک ڈاون کو 15 اپریل سے منصوبہ بند طریقے سے کھولنے پر غور کر رہی ہے۔ اس درمیان ایسی خبریں بھی ہیں کہ حکومت نے کورونا کے پھیلاو کو روکنے کے لئے پلان بی بھی تیار کرلیا ہے۔ اس کے تحت 15 مئی کے بعد دوبارہ لاک ڈاون کا اعلان کیا جاسکتا ہے۔


انڈیا ٹوڈے کی ایک رپورٹ کے مطابق، تین اپریل کو ہوئی گروپ آف منسٹرس (جی اوایم) کی میٹںگ میں اس پوائنٹ پر بھی غوروخوض ہوا۔ وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کی صدارت اور وزیر داخلہ امت شاہ کی موجودگی میں ہوئی 16 رکنی اس میٹنگ میں کووڈ -19 کے انفیکشن کو توڑنے کے لئے پلان بی پر تفصیل سے تبادلہ خیال کیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق، حکومت کا ماننا ہے کہ کورونا وائرس سے لڑنے کے لئے تقریباً 40 فیصد کریٹیکل کیئر اکوئپمنٹ کی ضرورت ہے۔ حالانکہ، جب تک ہیلتھ کیئر انفرااسٹرکچر حالات کو سنبھال رہا ہے، تب تک زیادہ فکرکی بات نہیں ہے۔


انڈیا ٹوڈے کی ایک رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ مرکزی حکومت 15 اپریل سے لاک ڈاون کو منصوبہ بند طریقے سے ہٹا سکتی ہے۔ اس دوران ضروری چیزوں کی سپلائی پہلے کی طرح ہوتی رہے گی، لیکن سوشل ڈیسٹنسنگ پرعمل ہرحال میں کیا جانا ہے۔ اگر لاک ڈاون ہٹتا ہے تو بھی ہوسکتا ہے کہ سنیما ہال، فوڈ کورٹ، ریسٹورنٹس اور مذہبی مقامات بند رکھے جائیں۔ مال میں صرف ضروری سامانوں کی دوکانیں ہی کھلی رہیں گی۔


ملک میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 4067 ہوگئی ہے جبکہ 109 افراد کے ہلاک ہو گئے ہیں۔
ملک میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 4067 ہوگئی ہے جبکہ 109 افراد کے ہلاک ہو گئے ہیں۔


حکومت کا پورا زور 15 اپریل کے بعد بھی کہیں بھی کسی طور پر بھیڑ نہ لگنے دینے پر ہے۔ موجودہ وقت کے تمام احتیاط پر بعد میں سختی برتی جائے گی۔ اس میں گروپ میں نہ نکلنے سے لےکر سینیٹائزیشن تک شامل ہے۔ مرکزی حکومت لاک ڈاون کے بعد بننے والےحالات پر نظر رکھ رہی ہے۔ اس کے علاوہ حکومت لاک ڈاون کے سبب گرتی معیشت میں سدھار لانے کےلئے ایک اور راحت پیکیج کا اعلان کرسکتی ہے۔ اس سمت میں حکومت غور کر رہی ہے۔ حالانکہ، ابھی اس پر کوئی آخری فیصلہ نہیں ہوپایا ہے۔

حالانکہ، ان میں سےکسی بھی پوائنٹ پر کوئی فیصلہ نہیں لیا گیا ہے۔ جی اویم میٹنگ میں ان پر تبادلہ خیال ہوا ہے۔ حالانکہ، ایک بات تو واضح ہےکہ حکومت اچھی طرح جانتی ہے کہ 15 اپریل کے بعد چیزیں نارمل نہیں ہوں گی۔ ایسے میں 15 مئی سے دوسرے فیز کا لاک ڈاون لگایا جائے گا یا نہیں، یہ اس بات پر منحصر کرے گا کہ اس دوران کورونا سے متاثر ہونے کے کتنے معاملات سامنے آتے ہیں۔ اس کے علاوہ جی او ایم میٹنگ میں ہوم کوارنٹائن لوگوں پرجی پی ایس ٹریکر کے ذریعہ نظر رکھنے پر بھی غور ہوا ہے۔ تاکہ اگر یہ لوگ گھر سے نکلتے ہیں، تو فوراً اسے روکا جاسکے اور اس وائرس کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکا جاسکے۔
First published: Apr 06, 2020 04:14 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading