உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا دور میں آن لائن تعلیم: محمد مصطفی علی سروری کی نئی کتاب منظر عام پر

    کورونا کے دوران زندگی کے ہر شعبہ حیات پر منفی اثرات مرتب ہوئے اور تعلیم کے شعبہ کو بھی اس سے چھوٹ نہیں رہی۔ کورونا دور میں آن لائن تعلیم کے موضوع پر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے طلبہ کے تجربات اور تاثرات پر مبنی کتاب زیور طباعت سے آراستہ ہوکر منظر عام پر آچکی ہے۔

    کورونا کے دوران زندگی کے ہر شعبہ حیات پر منفی اثرات مرتب ہوئے اور تعلیم کے شعبہ کو بھی اس سے چھوٹ نہیں رہی۔ کورونا دور میں آن لائن تعلیم کے موضوع پر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے طلبہ کے تجربات اور تاثرات پر مبنی کتاب زیور طباعت سے آراستہ ہوکر منظر عام پر آچکی ہے۔

    کورونا کے دوران زندگی کے ہر شعبہ حیات پر منفی اثرات مرتب ہوئے اور تعلیم کے شعبہ کو بھی اس سے چھوٹ نہیں رہی۔ کورونا دور میں آن لائن تعلیم کے موضوع پر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے طلبہ کے تجربات اور تاثرات پر مبنی کتاب زیور طباعت سے آراستہ ہوکر منظر عام پر آچکی ہے۔

    • Share this:
      حیدرآباد: کورونا کے دوران زندگی کے ہر شعبہ حیات پر منفی اثرات مرتب ہوئے اور تعلیم کے شعبہ کو بھی اس سے چھوٹ نہیں رہی۔ کورونا دور میں آن لائن تعلیم کے موضوع پر مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے طلبہ کے تجربات اور تاثرات پر مبنی کتاب زیور طباعت سے آراستہ ہوکر منظر عام پر آچکی ہے۔
      مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے محمد مصطفی علی سروری ایسوسی ایٹ پروفیسر شعبہ ترسیل عامہ و صحافت کی جانب سے مرتبہ اس کتاب کو شہر حیدرآباد کے ھدیٰ پبلیکیشنز کی جانب سے شائع کیا گیا ہے۔ 155 صفحات پر مشتمل اس کتاب میں شعبہ ترسیل عامہ و صحافت کے 27 منتخب طلباء کے تجربات اور تاثرات کو شامل کیا گیا ہے۔ ان طلباء نے کورونا کے وبائی دور میں کس طرح سے اپنے آن لائن تعلیم کے سلسلے کو جاری رکھا اور اس دوران ان لوگوں کوکس طرح اور مشکلات پیش آئیں۔ اپنی نوعیت کی اس منفرد کتاب کا پیش لفظ پروفیسر محمد محمود صدیقی ڈین شعبہ تعلیمات و سابق رجسٹرار مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی نے لکھا ہے۔

      اس کے علاوہ ڈائرکٹر انسٹرکشنل میڈیا سنٹر رضوان احمد اور پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج ظہیرآباد ڈاکٹر اسلم فاروقی کے تاثرات بھی کتاب میں شامل ہیں۔ اس کتاب کی قیمت 180 روپئے ہے یہ کتاب ھدی بک ڈپو نزد سٹی سیول کورٹ پرانی حویلی چھتہ بازار سے خریدی جاسکتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      محمد زبیر پر دہلی پولیس نے کسا شکنجہ، FIR میں جوڑی 3 نئی دفعات

      کورونا وبا کے دوران روایتی طرزِ تعلیم زندگی کے دیگر شعبوں کی طرح بری طرح متاثر ہوا۔ ہندوستان جیسے ملک میں جہاں دور دراز مقامات پر انٹرنیٹ کنیکٹیوٹی ایک بڑا مسئلہ ہے، طلبہ کے لئے یہ ایک سخت آزمائشی دور تھا۔ مولانا ازاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے طلبہ بھی جو ملک کے مختلف حصوں میں رہتے ہیں، اس آزمائش سے گزرے۔

      اس کتاب کی خوبی یہ ہے کہ اس میں مصنف نے آن لائن تعلیم کے تجربات بیان کرنے کے ساتھ ساتھ طلبہ کو بھی اپنے تاثرات قلمبندکرنے کی کامیاب ترغیب دی ہے۔ کووڈ کے دوران آن لائن تعلیم پر اردو میڈیم طلبہ کے فیڈ بیک کا احاطہ کرنے والی غالباً یہ پہلی اردو تصنیف ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: