باغپت تبدیلی مذہب پر بولے مولانا خالد رشید- علماء اور تنظیمیں اس معاملہ کو سنجیدگی سے لیں

باغپت میں ایک مسلم خاندان کے ذریعہ ہندو مذہب اپنائے جانے کے معاملہ پر مولانا خالد رشید کا بیان

Oct 02, 2018 04:52 PM IST | Updated on: Oct 02, 2018 05:21 PM IST
باغپت تبدیلی مذہب پر بولے مولانا خالد رشید- علماء اور تنظیمیں اس معاملہ کو سنجیدگی سے لیں

مولانا خالد رشید فرنگی محلی: فائل فوٹو۔

باغپت میں ایک مسلم خاندان کے ذریعہ ہندو مذہب اپنائے جانے کا معاملہ دھیرے- دھیرے بڑھتا نظر آرہا ہے۔ معاملہ میں آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے ممبر اور عیدگاہ کے امام مولانا خالد رشید فرنگی محلی نے کہا کہ باغپت کے علماء اور تنظیموں کو اس معاملہ کو سنجیدگی سے لینا چاہئے۔

فرنگی محلی نے کہا کہ باغپت معاملہ میں جیسا کی پتہ چلا ہے، خاندان کے لڑکے کی موت ہوئی اور اسے اس معاملہ میں انصاف نہیں ملا۔ یہ ایک سنجیدہ بات ہے علماعہ اور تنظیموں کو اس معاملہ کی نزاکت کو سمجھنا چاہئے۔ انہیں ہر ممکن کوشش کرنی چاہئے کہ اس خاندان کا ساتھ دیں اور اس کو انصاف دلانے کی کوشش کریں۔

فرنگی محلی نے کہا کہ دوسری جانب ضلع انتظامیہ کو بھی یہ دیکھنا چاہئے کہ انصاف کے لئے کوئی تنظیم تبدیلی مذہب کے لئے مجبور تو نہیں کر رہی ہے۔ ان دونوں باتوں کا خیال رکھتے ہوئے اس کیس پر محنت کرنے کی ضرورت ہے۔

Loading...

Loading...