உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Monsoon Rain Incident: ملک کی کئی ریاستوں میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈ میں 31 افراد کی موت

    Monsoon Rain Incident: ملک کی کئی ریاستوں میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈ میں 31 افراد کی موت

    Monsoon Rain Incident: ملک کی کئی ریاستوں میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈ میں 31 افراد کی موت

    Monsoon Rain Incident: مانسون کی بارش سے اچانک آئے سیلاب، لینڈ سلائیڈ اور مکانات کے منہدم ہونے کے واقعات میں شمال کے پہاڑی علاقوں اور مشرق کے میدانی علاقوں میں کم از کم 31 افراد کی موت ہوگئی ، جس کے بعد ملک کے ایک بڑے حصے میں زندگی ٹھپ ہو گئی ہے ۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Himachal Pradesh | Jharkhand | Uttarakhand (Uttaranchal) | Odisha (Orissa)
    • Share this:
      شملہ/دہرا دون: مانسون کی بارش  سے اچانک آئے سیلاب، لینڈ سلائیڈ اور مکانات کے منہدم ہونے کے واقعات میں شمال کے پہاڑی علاقوں اور مشرق کے میدانی علاقوں میں کم از کم 31 افراد کی موت ہوگئی ، جس کے بعد ملک کے ایک بڑے حصے میں زندگی ٹھپ ہو گئی ہے ۔ مرنے والوں میں 22 افراد کا تعلق صرف ہماچل پردیش سے ہے۔ وہیں اتراکھنڈ اور اڈیشہ میں چار، چار اور جھارکھنڈ میں ایک شخص کی موت ہوئی ہے۔ ہماچل پردیش میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران شدید بارش کی وجہ سے لینڈ سلائیڈ، سیلاب اور بادل پھٹنے کے واقعات میں کم از کم 22 لوگوں کی موت ہو گئی ہے ۔ مرنے والوں میں سے آٹھ کا تعلق ایک ہی خاندان سے ہے۔ ریاست میں ان حادثات میں دس افراد زخمی ہوئے ہیں ۔

       

      یہ بھی پڑھئے: بھوپال کے عالمی تبلیغی اجتماع کے انعقاد کی راہیں ہموار، انتظامیہ نے دی اجازت


      ریاستی ڈیزاسٹر مینجمنٹ ڈپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر سدیش کمار موکھتا نے کہا کہ شدید بارش سے سب سے زیادہ نقصان منڈی، کانگڑا اور چمبا اضلاع میں ہوا ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ریاست میں موسم سے متعلق 36 واقعات درج کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ منڈی میں منالی ۔ چنڈی گڑھ قومی شاہراہ اور شودھی میں شملہ ۔ چنڈی گڑھ شاہراہ سمیت 743 سڑکوں کو پانی جمع ہوجانے کی وجہ سے ٹریفک کیلئے بند کردیا گیا ہے ۔

      منڈی ضلع کے ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ صرف منڈی ضلع میں سیلاب اور لینڈ سلائیڈ کی وجہ سے 13 افراد کی موت ہوگئی اور چھ لوگ لاپتہ ہوگئے ہیں ۔ ریاست کے کانگڑا ضلع میں چکی پل کے تیز بارش کی وجہ سے ڈھہہ جانے کے بعد جوگیندر نگر اور پٹھان کوٹ روٹ کے درمیان ریل سروس میں خلل پڑا ہے ۔

       

      یہ بھی پڑھئے:  آسام اور جھارکھنڈ کے سابق گورنر سید سبط رضی کا لکھنو میں انتقال


      اتراکھنڈ میں ہفتہ کو صبح بادل پھٹنے کے مختلف واقعات میں کم از کم چار لوگوں کی موت ہوگئی جبکہ دس لوگ لاپتہ ہوگئے ہیں ، کیونکہ بارش کی وجہ سے باندھ ٹوٹ گئے ، پل بہہ گئے اور گھروں کے اندر کیچڑ اور پانی جمع ہوگیا ۔

      بارش نے مشرقی ہندوستان کے کچھ حصوں کو بھی متاثر کیا ہے ۔ اوڈیشہ میں پہلے سے ہی مہاندی کا علاقہ سیلاب کی زد میں ہے اور پانچ سو گاوں میں تقریبا چار لاکھ لوگ پھنسے ہوئے ہیں ۔ یہاں بھی چار لوگوں کی موت ہوئی ہے جبکہ پڑوسی جھارکھنڈ میں ایک شخص کی موت ہوئی ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: