ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ہنگامے کے سبب پارلیمنٹ میں نئے وزرا کا تعارف نہیں کرا پائے وزیر اعظم مودی، پیوش گوئل اور راجناتھ سنگھ نے اپوزیشن کی مذمت کی

Monsoon Session: مانسون سیشن کے دوران راجیہ سبھا اور لوک سبھا میں ہنگامے کے سبب وزیر اعظم نریندر مودی کابینہ کے نئے اراکین کا تعارف نہیں کرا سکے اور انہوں نے وزرا کے تعارف کی فہرست ایوان میں رکھ دی۔

  • Share this:
ہنگامے کے سبب پارلیمنٹ میں نئے وزرا کا تعارف نہیں کرا پائے وزیر اعظم مودی، پیوش گوئل اور راجناتھ سنگھ نے اپوزیشن کی مذمت کی
ہنگامے کے سبب پارلیمنٹ میں نئے وزرا کا تعارف نہیں کرا پائے وزیر اعظم مودی

نئی دہلی: پارلیمنٹ کے مانسون اجلاس کے پہلے دن لوک سبھا (ایوان زیریں) میں ہنگامہ آرائی کی وجہ سے، وزیر اعظم نریندر مودی ایوان میں اپنی کابینہ میں شامل وزرا کا باضابطہ طور پر متعارف نہیں کرا سکے اور انہیں ایوان کے ٹیبل پر وزرا کے تعارف کی دستاویزات رکھنے پڑے۔ جیسے ہی ایوان کی کارروائی 11 بجے شروع ہوئی، پہلے قومی ترانہ بجایا گیا اور پھر نومنتخب ممبروں کو حلف دلایا گیا۔


اس کے بعد اسپیکر اوم بریلا نے وزیر اعظم سے نئے وزراء کو ایوان میں متعارف کرانے کی درخواست کی، لیکن اپوزیشن کے ارکان نے ہنگامہ آرائی شروع کردی۔ تین زرعی قوانین واپس لینے کے مطالبے پر ہنگاموں کے درمیان اسپیکر نے حزب اختلاف کے ممبروں پر زور دیا کہ ایوان کے وقار اور روایات سب سے اوپر ہے۔ اسے نہ توڑیں، روایات کے وقار کو ٹھیس نہ پہنچائیں۔پارلیمانی امور کے وزیر پرہلاد جوشی نے بھی کہا کہ وزیر اعظم نئے وزراء کا تعارف کروانا چاہتے ہیں۔


راجیہ سبھا کے چیئرمین ایم وینکیا نائیڈو اور لوک سبھا اسپیکر اوم برلا نے اپوزیشن اراکین سے خاموش رہنے اور وزرا کا تعارف ہونے دینے کی اپیل کی، لیکن ان کی اپیل کا اپوزیشن کے اراکین پر کوئی اثر نہیں ہوا اور ایوان میں ہنگامہ جاری رہا۔


اوم برلا نے کہا، روایات کو نہ توڑیں۔ آپ لمبے وقت تک اقتدار میں رہے ہیں۔ آپ روایت کو توڑ کر ایوان کے وقار کو مجروح نہ کریں۔ اس ایوان کے وقار کو بنائے رکھیں۔ وزیر اعظم ایوان کے لیڈر ہیں اور ردوبدل کے بعد تشکیل دی گئی کابینہ کا تعارف کرا رہے ہیں۔ آپ ایوان کے وقار کو بنائے رکھیں‘۔ لوک سبھا میں پارلیمانی امور کے وزیر پرہلاد جوشی نے بھی ہنگامہ کر رہے اپوزیشن کے اراکین سے امن وامان بنائے رکھنے سے نئے وزرا کا تعارف ہونے دینے کی اپیل کی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 19, 2021 03:14 PM IST