உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    UP: مرادآباد میں DM نے مسجد میں جا کر نمازیوں سے کی ویکسین لگوانے کی اپیل، 24 گھنٹے میں 245 نئے کورونا مریض ملے

    ۔علامتی تصویر۔

    ۔علامتی تصویر۔

    عصر کی نماز ہو جانے کے بعد ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ نائب امام سید فہد علی کے ساتھ مسجد لوگوں کو ویکسینیشن کو لے کر شعور بیدار کرنے کے لئے مسجد میں پہنچ گئے۔ مسجد میں موجود نمازیوں کو ویکسینیشن کو لے کر شعور پیدا کیا۔

    • Share this:
      مرادآباد: عالمی وبا کورونا وائرس (Coronavirus) کی تیسری لہر کی رفتار یوپی میں تیز ہوتی جارہی ہے۔ اس کا اثر مراد آباد (Muradabad) جنپد میں بھی دکھائی دے رہا ہے۔ ضلع میں کورونا وائرس کا پھیلاو تیزی سے بڑھتا ہی جارہا ہے، جس کو لے کر یہاں ویکسینیشن کو لے کر شعور بیدار کرنے کے لئے ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ نے مسجد میں جا کر لوگوں کو بیدار کرنے کا کام کیا ہے۔ ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ نے مرآباد کے نائب امام سید فہد علی کے ساتھ گل شہید علاقے میں واقع مدرسہ جامعہ ہدیٰ میں پہنچ کر ویکسینیشن کیمپ لگوایا۔

      کیمپ کے معائنے کے لئے ضلع عہدیدار پہنچے تھے، جہاں مسجد میں پہنچ کر مولانا کو ویکسین لگوانے کی اپیل ضلع عہدیدار نے کی ہے۔ ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ کی اپیل کرنے کے بعد ویکسینیشن سینٹر پر بڑی تعداد میں مدرسے میں پڑھنے والے طلبہ نے اور مسجد میں موجود لوگوں نے ویکسینیشن کیمپ پہنچ کر ویکسین لگوائی ہے۔

      دراصل، مرادآباد جنپد میں ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ نے گل شہید علاقے میں واقع جامعہ ہدیٰ مدرسے میں ویکسینیشن کیمپ کا انعقاد کیا۔ جس میں مدرسے میں پرھنے والے طلبہ نے اور علاقے کے رہنے والوں نے ویکسیشنین کرویاا۔ مدرسے میں لگے ویکسینیشن سینٹر کا معائنہ کرنے عہدیدار پہنچے تھے۔ جس وقت ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ ویکسینیشن سینٹر پر پہنچے تھے اس وقت مدرسے کے پاس مسجد میں عصر کی نماز ادا کی جارہی تھی۔

      DM نے نمازیوں کا ویکسینیشن کے لئے کیا شعور بیدار
      عصر کی نماز ہو جانے کے بعد ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ نائب امام سید فہد علی کے ساتھ مسجد لوگوں کو ویکسینیشن کو لے کر شعور بیدار کرنے کے لئے مسجد میں پہنچ گئے۔ مسجد میں موجود نمازیوں کو ویکسینیشن کو لے کر شعور پیدا کیا۔ ضلع عہدیدار شیلندر کمار سنگھ نے لوگوں کو ویکسین لگوانے کی اپیل کی ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: