உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Amroha News: والد نےنابالغ بیٹی کو کیا حاملہ، عدالت نے 14 دن میں سنائی عمر قید کی سزا

    پولیس نے ملزم والد کے خلاف رپورٹ درج کرکے اسے گرفتار کرکے 15 جون کو جیل بھیج دیا تھا۔ مقدمے کی تفتیش ایس ایس آئی سکرم پال رانا کر رہے تھے۔ صرف پانچ دن میں انہوں نے ٹھوس مثبت کرکے 20 جون کو عدالت میں چارج شیٹ داخل کردی۔ 23 جون کو عدالت میں سماعت شروع ہوگئی۔ منگل کو چھٹے دن خصوصی جج POCSO ایکٹ اودھیش کمار سنگھ نے والد کو قصور وار قرار دیتے ہوئے عمرقید کی سزا سنائی ہے۔

    پولیس نے ملزم والد کے خلاف رپورٹ درج کرکے اسے گرفتار کرکے 15 جون کو جیل بھیج دیا تھا۔ مقدمے کی تفتیش ایس ایس آئی سکرم پال رانا کر رہے تھے۔ صرف پانچ دن میں انہوں نے ٹھوس مثبت کرکے 20 جون کو عدالت میں چارج شیٹ داخل کردی۔ 23 جون کو عدالت میں سماعت شروع ہوگئی۔ منگل کو چھٹے دن خصوصی جج POCSO ایکٹ اودھیش کمار سنگھ نے والد کو قصور وار قرار دیتے ہوئے عمرقید کی سزا سنائی ہے۔

    پولیس نے ملزم والد کے خلاف رپورٹ درج کرکے اسے گرفتار کرکے 15 جون کو جیل بھیج دیا تھا۔ مقدمے کی تفتیش ایس ایس آئی سکرم پال رانا کر رہے تھے۔ صرف پانچ دن میں انہوں نے ٹھوس مثبت کرکے 20 جون کو عدالت میں چارج شیٹ داخل کردی۔ 23 جون کو عدالت میں سماعت شروع ہوگئی۔ منگل کو چھٹے دن خصوصی جج POCSO ایکٹ اودھیش کمار سنگھ نے والد کو قصور وار قرار دیتے ہوئے عمرقید کی سزا سنائی ہے۔

    • Share this:
      امروہہ: اترپردیش کے امروہہ میں آبروریزی کے ملزم والد کو عدالت نے محض  14 دن کے اندر ہی عمر قید کی سزا سنا دی۔ ساتھ ہی ملزم والد پر 53 ہزار روپئے کا جرمانہ بھی لگایا ہے۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج سپیشل (پاکسو ایکٹ) اودھیش کمار کی عدالت نے تاریخی فیصلہ سنایا ہے۔ عدالت میں چارج شیٹ فائل ہونے کے 6 دن کے اندر سزا سنائے جانے کا ریاست میں یہ پہلا معاملہ ہے۔

      اترپردیش کے امروہہ ضلع میں ڈیڈولی کوتوالہ علاقہ کے گاوں کے رہنے والے نوجوان نے 14 جون کی رات ڈیڈولی کوتوالی میں والد کے خلاف رپورٹ درج کرائی تھی۔ الزام تھا کہ والد نے اپنی نابالغ بیٹی کے ساتھ ڈرا دھمکاکر آبروریزی کی تھی۔ سات ماہ سے وہ مسلسل آبروریزی کرتا آرہا تھا۔ بیٹی کے حاملہ ہونے پر اس کی جانکاری فیملی کو ہوئی تھی۔ الٹرا ساونڈ کرانے پر سات ماہ کے حمل کی تصدیق ہوئی تھی۔ ملزم والد 50 سالہ شخص اینٹ بھٹہ پر مزدوری کرتا تھا۔

      متاثرہ کے ذریعہ تھانے میں شکایت کے بعد اسے گرفتار کرلیا گیا تھا۔ متاثرہ نے پولیس کو اپنی شکایت میں بتایا تھا کہ جب بھی اہل خانہ گھر سے باہر ہوتے تھے، تبھی وہ اپنی نابالغ بیٹی کے ساتھ آبروریزی کرتا تھا۔ کسی کو بتانے پر اسے جان سے مارنے کی دھمکی دیتا تھا۔ اسی درمیان لڑکی حاملہ ہوگئی۔

      5 دن میں عدالت میں داخل کی چارج شیٹ

      پولیس نے ملزم والد کے خلاف رپورٹ درج کرکے اسے گرفتار کرکے 15 جون کو جیل بھیج دیا تھا۔ مقدمے کی تفتیش ایس ایس آئی سکرم پال رانا کر رہے تھے۔ صرف پانچ دن میں انہوں نے ٹھوس مثبت کرکے 20 جون کو عدالت میں چارج شیٹ داخل کردی۔ 23 جون کو عدالت میں سماعت شروع ہوگئی۔ منگل کو چھٹے دن خصوصی جج POCSO ایکٹ اودھیش کمار سنگھ نے والد کو قصور وار قرار دیتے ہوئے عمرقید کی سزا سنائی ہے۔ اس پر 53 ہزار روپئے کا جرمانہ بھی لگایا ہے۔ استغاثہ فریق کی طرف سے پیروی کرنے والے خصوصی پبلک پراسیکیوٹر بسنت سنگھ سینی نے بتایا کہ چارج شیٹ داخل ہونے کے بعد چھ دن کے اندر قصوروار کو سزا سنائے جانے کا ریاست کا یہ پہلا معاملہ ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: