உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Mother’s Day 2022:ہندوستان میں کس دن منایا جاتا ہے یوم مادر؟ جانیے تفصیل

    Mothers Day آج۔ جانیے کیوں منایا جاتا ہے مدرس ڈے .

    Mothers Day آج۔ جانیے کیوں منایا جاتا ہے مدرس ڈے .

    Mother’s Day 2022: اس سال یوم مادر صرف اتوار یعنی 8 مئی کو منایا جائے گا۔ اس دن ہم اپنی ماؤں کا شکریہ ادا کرتے ہیں، اور ان کے لیے اپنی محبت اور شکر گزاری کا اظہار کرتے ہیں، حالانکہ مختلف جگہوں پر یہ دن مختلف تاریخوں پر منایا جاتا ہے۔

    • Share this:
      Mother’s Day 2022: ہندوستان میں مئی کے دوسرے اتوار کو مدرز ڈے منایا جاتا ہے۔ اس سال یوم مادر صرف اتوار یعنی 8 مئی کو منایا جائے گا۔ اس دن ہم اپنی ماؤں کا شکریہ ادا کرتے ہیں، اور ان کے لیے اپنی محبت اور شکر گزاری کا اظہار کرتے ہیں، حالانکہ مختلف جگہوں پر یہ دن مختلف تاریخوں پر منایا جاتا ہے۔

      ماں کی جگہ کوئی نہیں لے سکتا۔ ماں کی کاوشوں کو ہر روز تسلیم کیا جانا چاہیے، خواہ وہ مدرز ڈے ہو یا نہ ہو۔

      پہلی مرتبہ کب منایا گیا تھا Mother’s Day 2022:
      مدرس ڈے سب سے پہلے 1908 میں اینا جارویس نے مغربی ورجینیا میں اپنی والدہ کی یادگار پر منایاتھا، جہاں اب انٹرنینشل مدرس ڈے شرائن ہے۔ اس لیے مدرز ڈے ایک ایسا موقع ہے جو دنیا کے مختلف حصوں میں ماؤں کے لیے احترام، مہمان نوازی اور محبت کے اظہار کے لیے منایا جاتا ہے۔

      کیسے منایا جاتا ہے یہ دن؟
      اس دن ہم اپنی ماؤں کا شکریہ ادا کرتے ہیں، اور ان کے لیے اپنی محبت اور شکر گزاری کا اظہار کرتے ہیں۔ اس دن کو ان کے لیے خاص بنانے کے لیے خصوصی منصوبہ بندی کی جاتی ہے۔ تاہم یہ دن مختلف جگہوں پر مختلف تاریخوں پر منایا جاتا ہے۔

      برطانیہ میں، کرسچن مدرنگ سنڈے کو مدر چرچ کی یاد میں مدرس ڈے مارچ کے چوتھے ہفتہ کو منایا جاتا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      ملک میں شرح پیدائش 2.2 سے کم ہو کر 2.0 ہوگئی،UPاور بہار میں شرح پیدائش قومی اوسط سے زیادہ

      یہ بھی پڑھیں:
      مدھیہ پردیش: اسلام میں مردوخواتین کو یکساں حقوق، مساجد میں خواتین کی امامت دی جائے

      یونان میں، ماؤں کا دن 2 فروری کو منایا جاتا ہے، جو مشرقی آرتھوڈوکس کے چرچ میں یسوع مسیح کی پیشکشی کے جشن کے موافق ہے۔دنیا بھر میں لوگ اس دن کو مناتے ہیں۔ اپنی ماں کو تحائف دے کر حیران کریں یا انہیں کسی خوبصورت سفر پر لے جائیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: