உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Nupur Sharma Row:نوپور شرما کی حمایت میں کیا کمنٹ، پاکستان سے آنے لگے دھمکی بھرے پیغام

     نوپور شرما کی حمایت کرنے پر پاکستان سے مل رہی ہیں دھمکیاں۔

    نوپور شرما کی حمایت کرنے پر پاکستان سے مل رہی ہیں دھمکیاں۔

    کھنڈوا کے ایس پی وویک سنگھ نے کہا ہے کہ فی الحال پولیس نے نامعلوم شخص کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے اور تفتیش جاری ہے۔ ایس پی نے کہا ہے کہ نوجوان کو پاکستان کے نمبر سے دھمکی آمیز پیغامات اور صوتی وائس کالس ہوئے تھے، جو کہ ناشائستہ ہیں۔

    • Share this:
      Nupur Sharma Row:بی جے پی کی سابق لیڈر نوپور شرما(Nupur Sharma) کا تنازع تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ تازہ ترین معاملہ مدھیہ پردیش(Madhya Pradesh) کے کھنڈوا ضلع کا ہے جہاں سوشل میڈیا(Social Media Post) پر نوپور شرما کی پوسٹ کی حمایت میں کیے گئے تبصروں کے بعد پاکستان(Pakistan) کے نمبروں سے فون کالز اور وائس کالز(Phone Calls Voice Calls) کی گئیں۔کالز اور وائس کالز پر دھمکی آمیز پیغامات (Threatening Message)آنے لگے۔ پولیس نے اس معاملے میں نامعلوم شخص کے خلاف مقدمہ (FIR) درج کر لیا ہے۔

      پاکستان کے فون نمبر سے مل رہی ہے دھمکی
      کھنڈوا کی کوتوالی پولیس کے مطابق نکوڈا نگر کے رہنے والے اسٹوڈنٹ آرمی آرگنائزیشن کے صدر مادھو جھا اپنے کچھ ارکان کے ساتھ تھانے پہنچے۔ انہوں نے پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کروائی کہ 26 جولائی کی رات سے اسے مسلسل بین الاقوامی کالوں کے ذریعے دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ بین الاقوامی نمبر (+923232247201) سے واٹس ایپ پر وائلس میسیج آئے۔ جس میں میسج کرنے والا اسے گالیاں دینے کے ساتھ جان سے مارنے کی دھمکیاں دے رہا تھا۔

      دراصل، اس دھمکی کے پیچھے یہ قیاس لگایا جا رہا ہے کہ مادھو جھا اور ان کے کچھ ساتھیوں نے نوپور شرما کے حق میں سوشل میڈیا پر تبصرہ کیا تھا۔ کھنڈوا کے ایس پی نے پورے معاملے کی جانچ کرنے اور اعلیٰ سطحی کارروائی کرنے کو کہا ہے۔ سی ایس پی پونم چندر یادو نے مقدمہ درج کر لیا ہے۔

      ہندو تنظیم کے لیڈر نے کہا-پاکستانی سلیپر سیل ہوگئے سرگرم
      ہندو تنظیم سے وابستہ رہنما اشوک پالیوال نے اس معاملے پر سخت اعتراض ظاہر کیا ہے اور دھمکیاں دینے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ اشوک پالیوال کا کہنا ہے کہ اگر پاکستان سے کسی چھوٹے شہر میں خطرہ ہے تو اس کا مطلب ہے کہ پاکستان کا سلیپر سیل چھوٹے شہروں میں بھی اپنا کام کر رہا ہے۔ اس کی مکمل چھان بین ہونی چاہیے۔

      یہ بھی پڑھیں:

      مرکزی وزیر داخلہ کی موجودگی میں NCB نے جلایا 30 ہزار کلو ڈرگس، امت شاہ نے کہی یہ بڑی بات

      یہ بھی پڑھیں:
      ہندوستان کی ترقی میں رخنہ اندازی کرنے والوں کو NSA اجیت ڈوبھال نے دی وارننگ

      ایس پی نے کہا- معاملے کی پوری جانچ کی جارہی ہے
      کھنڈوا کے ایس پی وویک سنگھ نے کہا ہے کہ فی الحال پولیس نے نامعلوم شخص کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے اور تفتیش جاری ہے۔ ایس پی نے کہا ہے کہ نوجوان کو پاکستان کے نمبر سے دھمکی آمیز پیغامات اور صوتی وائس کالس ہوئے تھے، جو کہ ناشائستہ ہیں۔ اسے جان سے مارنے کی دھمکیاں دی گئیں۔ نامعلوم موبائل ہولڈر کے خلاف مقدمہ درج کر کے ٹیلی فون ایجنسی کو آگاہ کر دیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ پولیس سیکورٹی کے حوالے سے نوجوانوں سے مسلسل رابطے میں ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: