ہوم » نیوز » وسطی ہندوستان

مدھیہ پردیش میں سیاسی ہلچل :جیوترادتیہ سندھیا،آج بی جے پی میں ہونگے شامل، کانگریس نے کیا یہ دعویٰ

مدھیہ پردیش میں جاری سیاسی انتشار کے درمیان ، خبریں آرہی ہیں کہ کانگریس اپنے باقی 92 ایم ایل اے کو راجستھان کے جے پور میں منتقل کرنے کی تیاری کر رہی ہے

  • Share this:
مدھیہ پردیش میں سیاسی ہلچل :جیوترادتیہ سندھیا،آج بی جے پی میں ہونگے شامل، کانگریس نے کیا یہ دعویٰ
جیوترادتیہ سندھا کی فائل فوٹو۔(تصویر:نیوز18)۔

مدھیہ پردیش میں سیاسی ہلچل مزید تیز ہوچکی ہے۔آج جیوترادتیہ سندھیا بی جےپی میں شامل ہوسکتےہیں۔بی جےپی کے106ارکان اسمبلی کوگروگرام کےمانیسرمیں ٹہرایاگیا ہے۔آئی ٹی سی گرینڈ بھارت ہوٹل میں ارکان اسمبلی مقیم ہیں۔بتادیں کہ مدھیہ پردیش چل رہےسیاسی ڈرامےکےبیچ کانگریس کے22ارکان اسمبلی نےاستعفیٰ دےدیاہے۔جس کےبعدکمل ناتھ حکومت پرخطرات کےبادل منڈرارہےہیں۔حالانکہ کمل ناتھ مستقل اکثریت کادعویٰ کررہےہیں۔ کمل ناتھ نے دعویٰ کیا کہ ان کی حکومت پورے 5سال کی مدت کار پوری کرے گی ۔ واضح رہےکہ کانگریس ممبران اسمبلی کی میٹنگ میں چورانوے ممبران شامل ہوئے ۔


مدھیہ پردیش میں جاری سیاسی انتشار کے درمیان ، خبریں آرہی ہیں کہ کانگریس اپنے باقی 92 ایم ایل اے کو راجستھان کے جے پور میں منتقل کرنے کی تیاری کر رہی ہےدراصل ، کانگریس سے سینئر لیڈرجیوتر ادتیہ سندھیا کے استعفی دینے کے بعد ، کل 22 ارکان اسمبلی نے کانگریس سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ ایسی صورتحال میں پارٹی اپنے باقی ایم ایل اے کو بچانے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے۔ بتایا جارہا ہے کہ کانگریس نے چند مہینے پہلے مہاراشٹر کے اپنے ممبران اسمبلی کو اسی جگہ پر رکھا تھا۔



یادر ہے کہ مدھیہ پردیش میں بحران کا یہ دور اتوار کی شام سے شروع ہوا ۔جب جیوتر ادتیہ سندھیا کے حامی 19 ممبران اسمبلی نے اپنے فون بند کردیئے اور بنگلورو میں واقع ریزورٹ روانہ ہوگئے۔ اگلے ہی دن ، منگل کو ، جیوتر ادتیہ سندھیا نے کانگریس کی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا۔ کانگریس نے پارٹی مخالف سرگرمی کی وجہ سے پارٹی کے جنرل سکریٹری اور سابق گوالیار شاہی خاندان سے تعلق رکھنے والے جیوتر ادتیہ سندھیا کو پارٹی سے نکال دیا۔ جیوتر ادتیہ سندھیا کےسمیت 22 ایم ایل اے کے استعفیٰ دینے کے بعد ، کمل ناتھ حکومت کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا۔


جیوتر ادتیہ سندھیا کو ملے گا یہ تحفہ

کانگریس چھوڑنے والے 49 سالہ جیوتر ادتیہ سندھیا مرکز میں برسراقتدار بھارتیہ جنتا پارٹی میں شامل ہوسکتے ہیں۔ اس پارٹی میں ان کی دادی مرحوم وجئےارجے سندھیا شامل ہوئی تھیں۔ یہ قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں کہ جیوتر ادتیہ سندھیا کو راجیہ سبھا کا ٹکٹ دیا جاسکتا ہے اور انہیں مرکزی وزیر بنایا جاسکتا ہے۔
First published: Mar 11, 2020 10:21 AM IST