ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

’’جسم مرجاتاہے۔ روح نہیں مرتی،روح لازوال ہے‘‘انتقال سے ایک دن پہلے ممبئی کی ڈاکٹرکاآخری فیس بک پوسٹ

ممبئی کے سیویری ٹی بی اسپتال (Sewri TB hospital) کی 51 سالہ سینئر میڈیکل افسر ڈاکٹر منیشا جدھاو (Manisha Jadhav) نے اپنے انتقال سے قبل لکھا تھا کہ ’’ہوسکتا ہے کہ یہ آخری گڈ مارننگ ہو۔ میں آپ کو اس پلیٹ فارم پر اب سے نہیں ملوں گی‘‘۔

  • Share this:
’’جسم مرجاتاہے۔ روح نہیں مرتی،روح لازوال ہے‘‘انتقال سے ایک دن پہلے ممبئی کی ڈاکٹرکاآخری فیس بک پوسٹ
ڈاکٹر منیشا جادھو کی فائل فوٹو۔ (تصویر، فیس بک ڈ اکٹرمنیشا جادھو)۔

ممبئی کے ڈاکٹر کا فیس بک پر الوداع کہنے کے ایک دن بعد عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ۔19) سے متاثر ہونے کی وجہہ انتقال ہوگیا ہے۔ممبئی کے سیویری ٹی بی اسپتال (Sewri TB hospital) کی 51 سالہ سینئر میڈیکل افسر ڈاکٹر منیشا جادھو (Manisha Jadhav) نے اپنے انتقال سے قبل لکھا تھا کہ ’’ہوسکتا ہے کہ یہ آخری گڈ مارننگ ہو۔ میں آپ کو اس پلیٹ فارم پر اب سے نہیں ملوں گی‘‘۔


سیویری ٹی بی اسپتال کی 51 سالہ سینئر میڈیکل افسر ڈاکٹر منیشا جادھو کے یہ آخری الفاظ ثابت ہوئے، کیونکہ اس کے اگلے ہی دن ان کی کورونا سے موت ہوگئی۔اتوار کے روز انہوں نے فیس بک پر پوسٹ کیا کہ ’’ہوسکتا ہے کہ یہ آخری گڈ مارننگ ہو۔ میں آپ کو اس پلیٹ فارم پر اب سے نہیں ملوں گی۔ سب کا خیال رکھئیے۔ جسم مر جاتا ہے۔ روح نہیں مرتی۔ روح لازوال ہے‘‘۔


ڈاکٹر منیشا جادھو کلینیکل اور انتظامی دونوں کرداروں میں تیزی سے نمٹنے کے لئے جانی جاتی تھی۔ ٹائمز آف انڈیا نے بتایا کہ وہ مہاراشٹر کے سرکاری اسپتال میں خدمات انجام دینے والی پہلی ڈاکٹر بن گئی ہیں جو کورونا انفیکشن فوت ہوئی ہے۔انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن (Indian Medical Association) کے مطابق مہاراشٹر میں 18,000 کے قریب ڈاکٹروں کو کورونا کا انفکشن ہوا ہے اور 168 ڈاکٹرس فوت ہوگئے ہیں۔


ڈاکٹر منیشا جادھو کے لواحقین میں ان کے شوہر اور بیٹے رہ گئے ہیں۔ ان کے شوہر ، ڈاکٹر ہیں جو کانڈیولی باباصاحب امبیڈکر اسپتال میں ایچ او ڈی کے عہدہ پر فائزہے۔ہفتے کے روز ، ڈاکٹر منیشا جادھو کی فیس بک پوسٹ کو پڑھنے کے بعد ، ان کے دوستوں نے بھی نہیں حوصلہ دیاتھا۔ دوستوں نے کمنٹ کرکے لکھا کہ "فکر نہ کرو ، آپ جلد ہی واپس آجائیں گے ، ہم آپ کے ساتھ ہیں ، کچھ نہیں ہوگا ،" تبصرے تھے۔ لیکن پیر کو منیشا نے دنیا کو الوداع کہہ دیا۔

منیشا کی موت پر میئر نے بھی کیا اظہارتعزیت

ادھر ، ڈاکٹر منیشا جادھوٹی بی اسپتال کی سربراہ تھیں۔ وہ شتابدی اسپتال میں زیرعلاج تھیں۔ میئر کشوری پیڈنیکر نے کہا کہ ہمیں معلوم ہے کہ ان کے اہل خانہ پر غم کا پہاڑ گر گیا ہے۔ میئر نے کہا ، خطرہ اب بڑھتا جارہا ہے ، یہ بلدیہ کے لئے المیہ ہے ، ہم نے ایک اچھا ڈاکٹر کھو دیا ہے۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 21, 2021 01:15 PM IST