உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    لکھنؤ: رمضان المبارک کا آخری عشرہ ۔ مختلف مساجد میں عبادتوں کا سلسلہ جاری

    شب قدر کو آخری عشرے کی طاق راتوں میں تلاش کیاجاتاہے اسی عشرے میں اعتکاف کرنے والے لوگوں کی تعددا بھی خاصی ہوتی ہے اور ایک معتکف کی کیا اہمیت اور اس کے لئے کیااجر ہے اس کا حساب لگانا مشکل ہے اعتکاف ایک ایسا عمل ہے جو انسان کو زمان ومکان کے رشتوں سے بے نیاز کرکے صرف اور صرف اللہ کے قریب کردیتاہے

    شب قدر کو آخری عشرے کی طاق راتوں میں تلاش کیاجاتاہے اسی عشرے میں اعتکاف کرنے والے لوگوں کی تعددا بھی خاصی ہوتی ہے اور ایک معتکف کی کیا اہمیت اور اس کے لئے کیااجر ہے اس کا حساب لگانا مشکل ہے اعتکاف ایک ایسا عمل ہے جو انسان کو زمان ومکان کے رشتوں سے بے نیاز کرکے صرف اور صرف اللہ کے قریب کردیتاہے

    شب قدر کو آخری عشرے کی طاق راتوں میں تلاش کیاجاتاہے اسی عشرے میں اعتکاف کرنے والے لوگوں کی تعددا بھی خاصی ہوتی ہے اور ایک معتکف کی کیا اہمیت اور اس کے لئے کیااجر ہے اس کا حساب لگانا مشکل ہے اعتکاف ایک ایسا عمل ہے جو انسان کو زمان ومکان کے رشتوں سے بے نیاز کرکے صرف اور صرف اللہ کے قریب کردیتاہے

    • Share this:
      رمضان کا آخری عشرہ چل رہاہے۔ قرآن واحادیث میں اس عشرے کی خاص اہمیت ہے۔ایک مومن اگر شریعت کی مکمل پابندی کے ساتھ روزہ رکھے تو اس کا ہر عمل عبادت ہے۔رحمت ک انتہا تو یہ ہے کہ ایک روزہ دار کا سونا بھی عبادت ہےاور جب بات رمضان کے آخری عشرے کی ہو تو اس کا کہنا ہی کیا۔شب قدر کے تعلق سے قرآن واحادیث میں کی روشنی میں علماء کرام اس رات کی اہمیت بیان کیں۔

      شب قدر کو آخری عشرے کی طاق راتوں میں تلاش کیاجاتاہے اسی عشرے میں اعتکاف کرنے والے لوگوں کی تعددا بھی خاصی ہوتی ہے اور ایک معتکف کی کیا اہمیت اور اس کے لئے کیااجر ہے اس کا حساب لگانا مشکل ہے اعتکاف ایک ایسا عمل ہے جو انسان کو زمان ومکان کے رشتوں سے بے نیاز کرکے صرف اور صرف اللہ کے قریب کردیتاہے

      مختلف مساجد میں عبادتوں کا سلسلہ جاری ہے اور ساتھ ہی لوگ ملک کے امن وامان سلامتی ،ترقی اور تحفظ کی دعائیں بھی کررہے ہیں ۔اس موقع پر یہ اپیل بھی کی جارہی ہے کہ عید کی خوشیوں اور تیاریوں کا اہتمام کرتے وقت ان غریبوں کو بھی نظر میں رکھا جائےجنہیں آپ کی زکوٰۃ، فطرے اور امداد کی ضرورت ہے۔
      نیوز18 اردو کے لئے لکھنؤ سے طارق قمر کی رپورٹ
      First published: