ہوم » نیوز » مغربی ہندوستان

آکولہ: کرونا پازیٹیو مسلم مہلوک کو مسلمانوں نے ہی قبرستان میں جگہ دینے سےکیا انکار

آکولہ دارالقضاء کے قاضی مفتی محمد اشفاق قاسمی نےکہا کہ یہ نہایت ہی شرم کی بات ہےکہ جہاں ایک طرف اقلیتی طبقے کو اس وباء میں مورد الزام ٹھرانےکی کوشش کی جارہی ہے۔ وہیں ملت کےکچھ نا سمجھ لوگ کرونا پازیٹیو مہلوک کو مسلم قبرستانوں میں جگہ دینے سے انکارکررہے ہیں۔

  • Share this:
آکولہ: کرونا پازیٹیو مسلم مہلوک کو مسلمانوں نے ہی قبرستان میں جگہ دینے سےکیا انکار
آکولہ: کرونا پازیٹیو مسلم مہلوک کو مسلمانوں نے ہی قبرستان میں جگہ دینے سےکیا انکار

آکولہ: آسام سے تعلق رکھنے والےکرونا پازیٹیو مریض کی خودکشی کےبعد ان کی پوری اسلامی طور طریقے سے تدفین عمل میں آئی۔ تاہم انتظامیہ اور سماجی کارکنان کو تدفین کو لےکر مقامی لوگوں کی مخالفت کا بھی سامنا کرنا پڑا۔ آکولہ  دارالقضاء کے قاضی مفتی محمد اشفاق قاسمی نے نیوز 18 اردو سے بات کرتےہوئےکہا کہ یہ نہایت ہی شرم کی بات ہے کہ جہاں ایک طرف  اقلیتی طبقےکو اس وباء میں مورد الزام ٹھرانے کی کوشش کی جارہی ہے، وہیں ملت کےکچھ نا سمجھ لوگ کرونا پازیٹیو مہلوک کو مسلم قبرستانوں میں جگہ دینے سے انکارکررہے ہیں۔


ان کےمطابق جب مہلک محمد ظہر السلام کے اہل خانہ نے آسام سے اس بات کی اجازت دےدی کہ ان کی تدفین آکولہ میں کی جائے تو ضلع انتظامیہ نے مقامی مسلم تنظیموں اورسماجی کارکنوں کی اپیل پر مہلوک کی شرعی اعتبار سے تدفین کی اجازت دی۔ تاہم معصوم شاہ نامی قبرستان میں جب قبر کھو دی گئی تو قبرستان کے اطراف میں موجود مسلمانوں نے ہی اس کی مخالفت کی۔ کافی دیر تک ان لوگوں کو سمجھانےکی کوشش کی گئی، لیکن معاملہ سنگین ہوتا دیکھ لاش کو آکوٹ فیل قبرستان لےجانےکا فیصلہ کیا گیا۔


آسام سے تعلق رکھنے والےکرونا پازیٹیو مریض کی خودکشی کےبعد ان کی پوری اسلامی طور طریقے سے تدفین عمل میں آئی۔
آسام سے تعلق رکھنے والےکرونا پازیٹیو مریض کی خودکشی کےبعد ان کی پوری اسلامی طور طریقے سے تدفین عمل میں آئی۔


آکوٹ فیل علاقے میں سرگرم سماجی کارکن آصف خان اورجاوید ذکریہ کے ساتھ دیگر لوگوں نے پہلے مقامی لوگوں کو اعتماد میں لیا۔ اس کے بعد پورے احتیاطی تدابیر کے ساتھ مہلوک کو سپرد خاک کیا گیا۔واضح رہےکہ آکولہ ضلع میں تیرہ کرونا پازیٹیو مریضوں میں محمد ظہرالسلام کا بھی نام شامل تھا۔ ضلع کلیکٹر جیتندر پاپلکرکے مطابق انھوں نے مشتبہ طور پراپنا گلا کاٹ کرخودکشی کرلی تھی۔ بتایا جارہا ہےکہ وہ آسام سے چندہ اکھٹا کرنےکیلئے صفیرکی حیثیت سے یہاں آئے تھے۔
First published: Apr 13, 2020 10:09 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading