ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

کرناٹک کےایک چھوٹے سے شہر کے مسلم نوجوانوں کی انوکھی پہل،سب کررہے ہیں ستائش

بنگلورو کےقریب واقع چھوٹے سے شہر سِدلگھٹہ میں مسلم نوجوانوں نے صفائی مہم شروع کی ہے۔ صفائی آدھا ایمان ہے اس عنوان کے تحت پورے شہر کو صاف وستھرا رکھنے کا نوجوانوں نے بیڑا اٹھایاہے

  • Share this:
کرناٹک کےایک چھوٹے سے شہر کے مسلم نوجوانوں کی انوکھی پہل،سب کررہے ہیں ستائش
پورے شہر میں صفائی مہم شروع کرنے کا فیصلہ ل

بنگلورو کےقریب واقع چھوٹے سے شہر سِدلگھٹہ میں مسلم نوجوانوں نے صفائی مہم شروع کی ہے۔ صفائی آدھا ایمان ہے اس عنوان کے تحت پورے شہر کو صاف وستھرا رکھنے کا نوجوانوں نے بیڑا اٹھایاہے۔ شہر کے قدیم قبرستان سے صفائی مہم کا آغاز ہواہے۔ سِدلگھٹہ شہر ریشم کی پیدوار کیلئے ہندوستان بھر میں مشہور ہے۔ یہاں کی کل آبادی میں مسلمانوں کی آبادی 60فیصد ہے۔ شہرمیں جگہ جگہ گندگی، کچرے کے ڈھیر، بنیادی سہولیات کی کمی یہاں کے اہم مسائل ہیں۔ آل انڈیا مسلم ڈیولپمنٹ کونسل نے یہاں مسجد ون مومنٹ شروع کیاہے۔ اس مومنٹ کے تحت تعلیم، حفظان صحت، پاکی صفائی کے سلسلے میں عوام میں بیداری پیدا کی جارہی ہے۔


صفائی مہم شہر کے قدیم قبرستان سے شروع کی گئی
صفائی مہم شہر کے قدیم قبرستان سے شروع کی گئی


آل انڈیا مسلم ڈیولپمنٹ کونسل کے جنرل سکریٹری امتیاز احمد نے کہاکہ چند دنوں پہلے سِدلگھٹہ کی 25مسجدوں کے ذمہ داروں کی ایک میٹنگ منعقد کی گئی۔ اس میٹنگ میں پورے شہر میں صفائی مہم شروع کرنے کا فیصلہ لیاگیا۔ لہذا یہ صفائی مہم شہر کے قدیم قبرستان سے شروع کی گئی ہے۔ اس کے بعد محلوں، بازاروں اور سڑکوں کو بھی صاف ستھرا رکھنے کیلئے اقدامات کئے جائینگے۔ مہینہ میں ایک دن نوجوانوں کی ٹیم شہر کے کسی ایک علاقہ میں پہنچ کرصفائی ستھرائی کے کام کو انجام دےگی۔ مقامی بلدیہ کے تعاون سے یہ مہم چلائی جائے گی۔


 پورے شہر میں صفائی مہم شروع کرنے کا فیصلہ
پورے شہر میں صفائی مہم شروع کرنے کا فیصلہ


سدلگھٹہ کے سابق کونسلر الیاس بیگ نے کہاکہ نہ صرف مسلم محلوں بلکہ ہندو محلوں میں بھی نوجوان پہنچ کرصفائی کاکام انجام دینگے۔مسجد ون مومنٹ چلانے والے امتیاز احمد نے کہاکہ پاکی صفائی کو مذہب اسلام میں ایمان کا آدھا حصہ قرار دیاگیاہے۔ لیکن آج مسلمان نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے اس قول پرعمل نہیں کررہے ہیں۔ یہی وجہ ہےکہ آج مسلمانوں کی پہچان کو گندگی سے جوڑ کردیکھا جاتاہے۔ مسلمانوں کوچاہئے کہ وہ اپنی اس شبیہ کو بدلیں۔ مہم کے ایک منتظم محمد اسد نے کہاکہ تمام نوجوانوں نے رضاکارانہ طور پر صفائی مہم میں حصہ لیاہے۔ تجارت پیشہ لوگ، نجی اور سرکاری ملازمین، طلبا اور سماجی کارکن سب مل کر صفائی ستھرائی کے اس کام کو ہنسی خوشی کے ساتھ انجام دے رہے ہیں۔ مہم کےا فتتاح کے موقع پرتمام نوجوانوں نے یہ عہد کیاکہ وہ اپنے گھروں، محلوں اور پورے شہر کو پاک وصاف رکھیں گے۔
First published: Feb 29, 2020 07:35 PM IST