உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اجمیرساہتیہ مہوتسومیں نہیں ہوگا نصیرالدین شاہ کا پروگرام، مخالفت اوراحتجاج کی وجہ سے منسوخ

    مہوتسو کے آرگنائزرراس بہاری گوڑنے کہا "شاہ کو پروگرام کا افتتاح کرنا تھا، لیکن ان کے بیان کے بعد کچھ مقامی لوگوں کی مخالفت کے سبب وہ نہیں آسکے"۔ شاہ ابتدائی سیشن میں اپنی کتاب کا اجرا بھی کرنے والے تھے، لیکن مخالفت کے سبب اسے منسوخ کردیا گیا۔

    مہوتسو کے آرگنائزرراس بہاری گوڑنے کہا "شاہ کو پروگرام کا افتتاح کرنا تھا، لیکن ان کے بیان کے بعد کچھ مقامی لوگوں کی مخالفت کے سبب وہ نہیں آسکے"۔ شاہ ابتدائی سیشن میں اپنی کتاب کا اجرا بھی کرنے والے تھے، لیکن مخالفت کے سبب اسے منسوخ کردیا گیا۔

    مہوتسو کے آرگنائزرراس بہاری گوڑنے کہا "شاہ کو پروگرام کا افتتاح کرنا تھا، لیکن ان کے بیان کے بعد کچھ مقامی لوگوں کی مخالفت کے سبب وہ نہیں آسکے"۔ شاہ ابتدائی سیشن میں اپنی کتاب کا اجرا بھی کرنے والے تھے، لیکن مخالفت کے سبب اسے منسوخ کردیا گیا۔

    • Share this:
      ادا کارہ نصیرالدین شاہ کے حالیہ بیان کے دائیں بازوکی مخالفت کے بعد اجمیرساہتیہ مہوتسو کے آرگنائزروں نے ایک پروگرام کومنسوخ کردیا ہے، جسے ادا کارخطاب کرنے والے تھے۔ ادا کارکوتین دن تک چلنے والے مہوتسو کے پانچویں سیشن میں ایک پروگرام کو خطاب کرنا تھا۔ پروگرام سے قبل دیگردائیں بازو کے کارکنان نے پروگرام کی جگہ پراحتجاج کیا۔ مظاہرہ کرنے والے ایک شخص نے نصیرالدین شاہ کے پوسٹرپرسیاہی بھی پھینک دی۔

      مہوتسو کے آرگنائزرراس بہاری گوڑنے کہا "شاہ کو پروگرام کا افتتاح کرنا تھا، لیکن ان کے بیان کے بعد کچھ مقامی لوگوں کی مخالفت کے سبب وہ نہیں آسکے"۔ شاہ ابتدائی سیشن میں اپنی کتاب کا اجرا بھی کرنے والے تھے، لیکن مخالفت کے سبب اسے منسوخ کردیا گیا۔

      پروگرام جمعہ کو شروع اوراتوارکوختم ہوگا۔ اس سے قبل دن میں شاہ سینٹ انسیلمس سینئرسیکنڈری اسکول پہنچے، جہاں ان سے نامہ نگاروں نے ان کے بیان کے بعد ہورہی تنقید کے بارے میں سوال پوچھا۔ اس پرشاہ نے کہا  "جو میں نے پہلے کہا وہ ایک فکرمند ہندوستانی کے طورپرکہا تھا۔ میں پہلے بھی کہہ چکا ہوں، اس بارمیں نے ایسا کیا کہا کہ مجھے غدارکہا جارہا ہے۔ یہ بے حد عجیب ہے"۔
      First published: