உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نیشنل ہیرالڈ کیس: راہل گاندھی سے پھر پوچھ گچھ شروع، منگل کو پہلے دور میں ای ڈی نے 4 گھنٹے تک کئے سوال

    نیشنل ہیرالڈ کیس میں منی لانڈرنگ کے الزامات کو لے کر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے کانگریس رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی (Rahul Gandhi) سے آج دوسرے مرحلے کی پوچھ گچھ شروع کردی ہے۔ اس سے پہلے ای ڈی نے ان سے 4 گھنٹے سے زیادہ وقت تک سوال پوچھے۔

    نیشنل ہیرالڈ کیس میں منی لانڈرنگ کے الزامات کو لے کر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے کانگریس رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی (Rahul Gandhi) سے آج دوسرے مرحلے کی پوچھ گچھ شروع کردی ہے۔ اس سے پہلے ای ڈی نے ان سے 4 گھنٹے سے زیادہ وقت تک سوال پوچھے۔

    نیشنل ہیرالڈ کیس میں منی لانڈرنگ کے الزامات کو لے کر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے کانگریس رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی (Rahul Gandhi) سے آج دوسرے مرحلے کی پوچھ گچھ شروع کردی ہے۔ اس سے پہلے ای ڈی نے ان سے 4 گھنٹے سے زیادہ وقت تک سوال پوچھے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: نیشنل ہیرالڈ کیس میں منی لانڈرنگ کے الزامات کو لے کر انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے کانگریس رکن پارلیمنٹ راہل گاندھی (Rahul Gandhi) سے آج دوسرے مرحلے کی پوچھ گچھ شروع کردی ہے۔ اس سے پہلے ای ڈی نے ان سے 4 گھنٹے سے زیادہ وقت تک سوال پوچھے۔ اس دوران راہل گاندھی اپنے وکیلوں کے ساتھ ای ڈی دفتر پہنچے۔

      نیوز ایجنسی اے این آئی کے مطابق، منگل کی صبح 11 بجے قریب راہل گاندھی سے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) نے سوال پوچھنے شروع کئے اور یہ پوچھ گچھ دوپہر سوا تین بجے تک چلی۔ اس سے پہلے پیر کے روز بھی راہل گاندھی سے ای ڈی نے 10 گھنٹے تک پوچھ گچھ کی۔

      ذرائع نے بتایا کہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ نے راہل گاندھی سے ینگ انڈین پرائیویٹ لمیٹیڈ میں گاندھی فیملی کے مالکانہ اور ایسوسی ایٹیڈ جرنلس لمیٹیڈ میں شیئر ہولڈنگ پیٹرن سے متعلق سوال وجواب کئے۔ جانچ ایجنسی سے وابستہ ذرائع نے بتایا کہ راہل گاندھی سے تفصیل سے اس بارے میں بھی پوچھا گیا کہ کن حالات میں سال 2010 میں ینگ انڈیا لمیٹیڈ نے ایسوسی ایٹیڈ جرنلس لمیٹیڈ کو ایکوائر کیا۔

      واضح رہے کہ نیشنل ہیرالڈ پیپر کو ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو نے شروع کیا تھا اور اس کی اشاعت ایسوسی ایٹیڈ جرنل لمیٹیڈ نے کی تھی۔ سال 2010 میں اے جی ایل کو مالی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑا اور ینگ انڈین لمیٹیڈ نے اس کو ایکوائر کرلیا، جس کے مالک سمن دوبے اور سیم پترودا تھے، جو کہ گاندھی فیملی کے بے حد قریبی ہیں۔

      اس سے قبل پیر کے روز راہل گاندھی کی پیشی کے دوران کانگریس لیڈران اور کارکنان نے دہلی سمیت ملک کے کئی شہروں میں ’ستیہ گرہ‘ کیا اور مارچ نکالا۔ راہل گاندھی جب پیر کی صبح ای ڈی آفس جا رہے تھے، تب ان کے ساتھ پرینکا گاندھی، راجستھان کے وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت، چھتیس گڑھ کے وزیر اعلیٰ بھوپیش بگھیل سمیت کانگریس کے تمام بڑے لیڈران اور کارکنان موجود تھے۔ پولیس نے انہیں روکنے کی کوشش کی تو ہنگامہ ہوگیا۔ اس دھکا مکی اور تصادم میں کئی لیڈران کو چوٹیں آئیں۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: