ہوم » نیوز » جنوبی ہندوستان

نیپالی وزیر اعظم چین ۔ پاک کے ایجنٹ بن کر کام کر رہے ہیں، بنگلورو میں وی ایچ پی اور بجرنگ دل کا الزام

بھگوان رام کے سلسلے میں نیپال کے وزیر اعظم کے پی شرما اولی کے متنازعہ بیان کی بی جے پی اور سنگھ پریوار کی تنظیمیں سخت مذمت کر رہی ہیں۔ بنگلورو میں وی ایچ پی اور بجرنگ دل کے کارکنوں نے منفرد طریقہ سے اپنا احتجاج درج کیا۔

  • Share this:
نیپالی وزیر اعظم چین ۔ پاک کے ایجنٹ بن کر کام کر رہے ہیں، بنگلورو میں وی ایچ پی اور بجرنگ دل کا الزام
نیپالی وزیر اعظم چین ۔ پاک کے ایجنٹ بن کر کام کر رہے ہیں، بنگلورو میں وی ایچ پی اور بجرنگ دل کا الزام

بنگلورو : بھگوان رام کے سلسلے میں نیپال کے وزیر اعظم کے پی  شرما اولی کے متنازعہ بیان کی بی جے پی اور سنگھ پریوار کی تنظیمیں سخت مذمت کر رہی ہیں۔ بنگلورو میں وی ایچ پی اور بجرنگ دل کے کارکنوں نے منفرد طریقہ سے اپنا احتجاج درج کیا۔ کورونا وائرس کے باعث بنگلورو میں لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے۔ عوامی مقامات پر احتجاجی مظاہروں، جلسہ، جلوس کی پابندی ہے۔ لہٰذا موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے وی ایچ پی اور بجرنگ دل کے چند کارکنان، بنگلورو کے وجے نگر میں ایک نجی عمارت میں اکٹھا ہوئے۔ ان کارکنوں نے علامتی طور پر نیپالی وزیر اعظم کے پی شرما اولی کی ہندو رسم ورواج کے مطابق آخری رسومات انجام دیں۔ علامتی طور پر پی کے شرما کی چتا جلا کر اپنے غم اور غصہ کا اظہار کیا۔


وی ایچ پی لیڈر ششی کانت شرما نے کہا کہ نیپالی وزیر اعظم کے پی شرما اولی چین اور پاکستان کے ایک بڑے ایجنٹ کے طور پر کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیپال ایک ہندو راشٹر تھا اور رہے گا، ہندوستان اور نیپال کے لوگ بھائی بھائی کی طرح زندگی گزارتے ہوئے آئے ہیں، لیکن نیپالی وزیر اعظم ان رشتوں کو خراب کرنا چاہتے ہیں۔ ششی کانت شرما نے کہا کہ نیپال کے لاکھوں لوگ ہندوستان میں رہتے ہیں۔ نیپال ایک ایسا ہندو راشٹر رہا ہے، جو کبھی غلام نہیں بنا، لیکن وہاں کی موجودہ حکومت عوام مخالف ہے، خود وزیر اعظم کے پی شرما اولی کئی الزامات کا سامنا کررہے ہیں۔


وی ایچ پی لیڈر ششی کانت شرما نےکہا کہ نیپالی وزیر اعظم کے پی شرما اولی چین اور پاکستان کے ایک بڑے ایجنٹ کے طور پر کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیپال ایک ہندو راشٹر تھا اور رہے گا۔
وی ایچ پی لیڈر ششی کانت شرما نےکہا کہ نیپالی وزیر اعظم کے پی شرما اولی چین اور پاکستان کے ایک بڑے ایجنٹ کے طور پر کام کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نیپال ایک ہندو راشٹر تھا اور رہے گا۔


ششی کانت شرما نے کہا کہ کے پی شرما چین اور پاکستان کو فائدہ پہنچانے کیلئے نیپال اور ہندوستان کے لوگوں کو آپس میں لڑوانا چاہتے ہیں۔ اسی لئے انہوں نے بھگوان رام چندر کے سلسلے میں بے بنیاد اور غلط بیان دیا ہے۔ بجرنگ دل، بنگلورو کے کارکن کارتک نے کہا کہ نیپالی وزیر اعظم چین کے غلام بن کر کام کررہے ہیں، بھگوان رام کی توہین کرکے وہ اپنے مقصد میں کبھی کامیاب نہیں ہوں گے۔ وی ایچ پی اور بجرنگ دل کے کارکنوں نے سخت برہمی اور ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے نیپالی وزیر اعظم کے پی شرما اولی کی تصویر رکھتے ہوئے علامتی طور پر چتا بنائی، چتا کو جلانے کے بعد پنڈ دان کیا اور اس موقع پر برہمن بھوج یعنی تین برہمنوں کو کھانا کھلاتے ہوئے علامتی طور تمام آخری رسومات انجام دیں۔ واضح رہے کہ 13 جولائی 2020 کو نیپال کے وزیر اعظم کے پی شرما اولی نے کہا تھا کہ اصل ایودھیا نیپال میں ہے، بھگوان رام کا جنم جنوبی نیپال کے تھوری مقام میں ہوا تھا۔ اس متنازعہ بیان پر بی جے پی نے کہا کہ ہندوستان کی طرح نیپال میں بھی کمیونسٹوں کو عوام مسترد کرے گی۔ کسی کے عقیدہ کے ساتھ کھیلنے کی عوام ہرگز اجازت نہیں دے گی۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Jul 16, 2020 07:34 PM IST