ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

نیٹ ورک 18، فیڈرل بینک کی نئی مہم ’سنجیونی- ٹیکہ زندگی کا‘، ٹیکہ کاری سے متعلق تمام خدشات کو ختم کردے گی

وبا شروع ہونے کے بعد سے ملک میں جس دن کورونا وائرس (Coronavirus) انفیکشن کے معاملے میں ایک لاکھ کو پار کرگئے، اسی دن فلم اداکار سونو سود (Sonu Sood) نے اپنے انسٹا گرام پیج پر میسیج پوسٹ کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ سنجیونی مہم (Sanjeevani A Shot Of Life) سے جڑ گئے ہیں، جس کا ہدف ملک میں کورونا وائرس ٹیکہ کاری کو تیز کرنا ہے۔

  • Share this:
نیٹ ورک 18، فیڈرل بینک کی نئی مہم ’سنجیونی- ٹیکہ زندگی کا‘، ٹیکہ کاری سے متعلق تمام خدشات کو ختم کردے گی
نیٹ ورک 18، فیڈرل بینک کی نئی مہم ’سنجیونی- ٹیکہ زندگی کا‘، ٹیکہ کاری سے متعلق تمام خدشات کو ختم کردے گی

نئی دہلی: وبا شروع ہونے کے بعد سے ملک میں جس دن کورونا وائرس (Coronavirus) انفیکشن کے معاملے میں ایک لاکھ کو پار کرگئے، اسی دن فلم اداکار سونو سود (Sonu Sood) نے اپنے انسٹا گرام پیج پر میسیج پوسٹ کرتے ہوئے اعلان کیا کہ وہ سنجیونی مہم (Sanjeevani A Shot Of Life) سے جڑ گئے ہیں، جس کا ہدف ملک میں کورونا وائرس ٹیکہ کاری کو تیز کرنا ہے۔ سنجیونی مہم 7 اپریل کو شروع ہوگی۔ یہ دن عالمی سطح پر عالمی یوم صھت کے طور پر منایا جاتا ہے۔ آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ آج سنجیونی مہم کی ضرورت کیوں ہے اور اس مہم کے ذریعہ کس طرح ٹیکہ کاری مہم کو رفتار ملے گی۔


سنجیونی کے پیچھے کی طاقت


نیٹ ورک 18 کے اس مہم کو سنجیونی نام دیا گیا ہے، جو کہ فیڈرل بینک کا کارپوریٹ سوشل ریسپانسیبلٹی پروگرام بھی ہے۔ اس مہم میں اپولو 24/7 نے ہیلتھ ایکسپرٹ کے طور پر ہاتھ ملایا ہے۔ اس کیمپین کی قیادت نیٹ ورک 18 کرے گا اور فیڈرل بینک کے ساتھ مل کر اپولو 27/7 کورونا انفیکشن سے سب سے زیادہ متاثر اضلاع میں ویکسین سے متعلق پروگرام چلائے گا۔


مہم کے تحت فیڈرل بینک کورونا کی دوسری لہر میں سب سے زیادہ متاثر پانچ اضلاع کو گود لے گا اور ان اضلاع میں واقع گاوں میں مفت میں ٹیکہ کاری مہم چلائی جائے گی۔ فیڈرل بینک کی یہ کوشش اس بات کی نقل ہے کہ 100 کروڑ سے زیادہ کی آبادی والے ملک میں ٹیکہ کاری پروگرام صرف حکومت کے ذریعہ نہیں چلایا جانا چاہئے۔ بلکہ نیٹ ورک 18 جیسی پرائیویٹ کمپنیاں بھی ذمہ داری اٹھا سکتی ہیں اور کورونا کی دوسری لہر کو تھامنے میں مدد گار ہوسکتی ہیں۔ تاکہ زیادہ سے زیادہ جان ومال کو محفوظ کیا جاسکے۔

اس مہم میں اپولو 24/7 منتخب ہوئے پانچ اضلاع میں ویکسینیشن کیمپ لگائے گا، ساتھ ہی خصوصی ڈاکٹروں سمیت ٹیکہ کاری ماہرین بھی اپنی خدمات دیں گے، جن کی مدد سے ویکسین کو لے کر عام لوگوں میں پائی جا رہی غلط فہمی کو دور کیا جائے گا۔ تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ ویکسین لگوانے کے لئے آگے آئیں۔ اس مہم کے برانڈ ایمبیسڈر سونو سود بھی کورونا وائرس ویکسین کا ٹیکہ لگوائیں گے، تاکہ سنجیونی مہم کے تحت زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ٹیکہ لگوانے کی ترغیب ملی۔

سنجیونی کا ہدف اور حکمت عملی

سنجیونی مہم کا پہلا واضح پیغام ملک میں کورونا کی دوسری لہر کو روکنا ہے۔ ساتھ ہی کورونا کے خلاف دوہری حکمت عملی اپناتے ہوئے لوگوں کے درمیان صحیح حقائق اور اطلاع کو پھیلانا ہے تو انہیں یہ سمجھانا بھی کہ ہندوستانیوں کو کورونا ویکسین لگوانے کی ضرورت کیوں ہے۔ مہم کا مقصد ملک کے نچلے علاقوں میں لوگوں کو ویکسین لگوانے کے لئے تیار کرنا ہے، جو کنہی افواہوں کے چکر میں ہچک رہے ہیں۔

مہم کا ایک دیگر اہم مقصد ہندوستان کی ٹیکہ کاری مہم کے بارے میں بیداری پھیلانا اور کسی بھی طرح کی غلط فہمی کو دور کرنا ہے۔ ٹیکے کو لے کر عام لوگوں کے درمیان ہچک ہونے کے بعد ہیلتھ سیکٹر کے لئے ٹیکہ کاری پروگرام کو چلانا آسان ہوجائے گا۔ سنجیونی مہم کے تحت صحیح اطلاعات اور حقائق کو سمجھنے کے بعد جیسے ہی زیادہ سے زیادہ لوگ ٹیکہ لگوانے لگیں گے، ملک میں ہارڈ ایمیونٹی کے پیدا ہونے کی حالت بہتر ہوتی جائے گی۔

امرتسر میں ہونے والے پروگرام کے آغاز کے موقع پر خاص ’سنجیونی گاڑی‘ کو بھی روانہ کیا جائے گا، جو کہ فیڈرل بینک کے ذریعہ گود لئے گئے 5 اضلاع کے 1500 گاوں میں جائے گی اور لوگوں کے درمیان مختلف پروگراموں کے ذریعہ گود لئے گئے گاوں میں لوگ مفت میں ٹیکہ لگوا سکیں گے۔ ان اضلاع میں امرتسر، ناسک، اندور، گنٹور اور جنوبی کنڑ شامل ہیں۔ یہ پانچ ضلع ملک میں کورونا وائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہیں۔

مہم کا نتیجہ

ملک کی بیشتر پرائیویٹ کمپنیوں نے اپنے ملازمین کی ٹیکہ کاری کے خرچ کی ادائیگی کرنے کا اعلان کیا ہے۔ لیکن، ضرورت اس بات کی ہے کہ ملک کے نچلے علاقوں میں ٹیکہ کاری کو تیز کیا جائے اور اسے میٹرو شہروں سے نکال کر دیہی علاقوں میں لے جایا جائے۔ ایسی حالت میں ایک یقینی مہم ملک کے سب سے زیادہ متاثرہ علاقوں میں کورونا کے انفیکشن کو تھامنے میں فیصلہ کن ہوسکتا ہے۔

 

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Apr 06, 2021 09:45 PM IST