உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مغربی بنگال بی جے پی کے نئے صدر نے کہا- ممتا بنرجی کا مسجد میں جانا اسلام کی توہین

    مغربی بنگال بی جے پی کے نئے صدر نے کہا- ممتا بنرجی کا مسجد میں جانا اسلام کی توہین

    مغربی بنگال بی جے پی کے نئے صدر نے کہا- ممتا بنرجی کا مسجد میں جانا اسلام کی توہین

    West Bengal: مغربی بنگال بی جے پی کے صدر سکانتا مجومدار (Sukanta Majumdar) نے الزام لگایا ہے کہ ٹی ایم سی ریاست میں طالبان جیسا اقتدار قائم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      کولکاتا: مغربی بنگال بی جے پی (West Bengal BJP) کے نئے صدر سکانتا مجومدار (Sukanta Majumdar) نے ترنمول کانگریس سربراہ اور وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی (Mamata Banerjee) پر منگل کو سخت تنقید کی ہے۔ انہوں نے الزام لگایا ہے کہ ٹی ایم سی ریاست میں طالبان جیسا ماحول قائم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے دلیپ گھوش کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ تاریخ میں سب سے بہتر ریاستی صدر رہے ہیں۔

      سکانتا مجومدار نے بھوانی پور اسمبلی سیٹ پر ہونے والے اسمبلی انتخابات سے متعلق ردعمل ظاہر کیا۔ انہوں نے کہا، ’بھوانی پور کے لئے پارٹی کی حکمت عملی بہتر طرح سے کام  کر رہی ہے۔ اب ٹی ایم سی کے بڑے لوگ ہماری امیدوار پرینکا ٹبروال کا نام سنتے ہی پریشان ہونے لگتے ہیں۔ ممتا بنرجی روزانہ تشہیر کر رہی ہیں۔ وہ حال ہی میں ایک میں گئی تھیں۔ اس خواتین کو مسجد میں آنے کی اجازت نہیں دیتا، میں نے دیکھا کہ یہ اسلام کی توہین ہے‘۔

      سکانتا مجومدار نے بی جے پی کا ریاستی صدر نامزد ہونے کے بعد الزام لگایا ہے کہ الیکشن کے بعد تشدد میں اقلیتی طبقے کے لوگوں کی طرف سے بی جے پی کے کئی ہندو حامیوں کو مار دیا گیا تھا۔ حالانکہ انہوں نے اقلیتی طبقے کا نام نہیں لیا۔

      سکانتا مجومدار نے بی جے پی کا ریاستی صدر نامزد ہونے کے بعد الزام لگایا ہے کہ الیکشن کے بعد تشدد میں اقلیتی طبقے کے لوگوں کی طرف سے بی جے پی کے کئی ہندو حامیوں کو مار دیا گیا تھا۔ حالانکہ انہوں نے اقلیتی طبقے کا نام نہیں لیا۔
      سکانتا مجومدار نے بی جے پی کا ریاستی صدر نامزد ہونے کے بعد الزام لگایا ہے کہ الیکشن کے بعد تشدد میں اقلیتی طبقے کے لوگوں کی طرف سے بی جے پی کے کئی ہندو حامیوں کو مار دیا گیا تھا۔ حالانکہ انہوں نے اقلیتی طبقے کا نام نہیں لیا۔


      بی جے پی کے ریاستی صدر نے کہا، ‘یہ بنگال کی تہذیب کبھی نہیں تھی، حالانکہ سیاسی جدوجہد کوئی نئی بات نہیں ہے۔ یہ بھی سچ ہے کہ بی جے پی کے اقلیتی طبقے کے لوگوں پر بھی حملے ہوئے ہیں۔ افسوس کی بات ہے کہ مغربی بنگال کے دانشوروں نے ایک لفظ بھی نہیں بولا۔ وہ شام کو شیمپین کا لطف لینا پسند کرتے ہیں‘۔

      کولکاتا میں بی جے پی کے ریاستی دفتر میں پارٹی لیڈران اور میڈیا کو خطاب کرتے ہوئے سکانتا مجومدار نے کہا، ’طالبانی نظریہ کا مطلب یہ نہیں ہے کہ کچھ لوگ لمبے کپڑوں میں بندوق لے کر گھوم رہے ہیں۔ ایک الگ نظریہ پر عمل کرنے والے یا حریف پارٹی پر عمل کرنے والے لوگوں کو مارنا حقیقی طالبانی نظریہ ہے‘۔

      انہوں نے کہا، ’ہم کسی بھی قیمت پر ممتا بنرجی کی طالبان حکومت کو اکھاڑ پھینکیں گے۔ بھلے ہی ہم ترک کے لئے غوروخوض کریں کہ ٹی ایم سی 2024 میں بنگال میں سبھی 42 لوک سیٹیں جیت سکتی ہے، پھر بھی نریندر مودی وزیر اعظم بنیں گے۔ ٹی ایم سی کا خواب کبھی پورا نہیں ہوگا۔ آج میں آئندہ انتخابات میں بی جے پی کو 18 سے زیادہ لوک سبھا سیٹیں جتانے کا وعدہ کرتا ہوں‘۔

       

       
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: